ایک ہی دن میں ولیمز بہنیں فرنچ اوپن سے باہر

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption یہ پہلا موقع ہے جب سرینا ٹاپ سیڈ ہونے کے باوجود کسی گرانڈ سلیم کے صرف چوتھے دن ٹورنامنٹ سے باہر ہوئی ہیں

ٹینس کی عالمی نمبر ایک اور فرنچ اوپن ٹینس ٹورنامنٹ کی دفاعی چیمپیئن امریکہ کی سرينا ولیمز کو فرنچ اوپن کے دوسرے دور میں سنسنی خیز طور پر شکست کا سامنا کرنا پڑا ہے۔

یہ پہلا موقع ہے جب سرینا ٹاپ سیڈ ہونے کے باوجود کسی ٹورنامنٹ کے دوسرے ہفتے میں داخل نہ ہو سکیں اور وہ ٹورنامنٹ کے چوتھے دن ہی باہر ہو گئیں۔

سرینا کی بہن وینس ویلمز بھی اپنا میچ ہار کر ٹورنامنٹ سے باہر ہو گئی ہیں۔ انھیں سلوواکیا کی آنا شمیدلووا نے رولاں گیروز پر 6-2، 3-6، 4-6 سے تین سیٹوں میں ہرایا۔

اس سے قبل سنہ 2011 میں ایک ہی دن دونوں بہنیں ومبلڈن کے مقابلوں سے باہر ہوئی تھیں۔

ٹاپ سيڈ سرينا کو بدھ کو سپین کی ایک غیر معروف کھلاڑی گاربائن موگوروزا نے سیدھے سیٹوں میں 2-6 ، 2-6 سے شکست دے کر ٹورنامنٹ سے باہر کر دیا ہے۔

گذشتہ 16 سال کے ان کے کریئر میں یہ ان کی سب سے خراب شسکت ہے۔

64 منٹ تک چلنے والے اس میچ میں 32 سالہ امریکی کھلاڑی سرينا نے مقابلے کے دوران 29 غلطیاں کیں جس کا 20 سالہ موگوروزا نے بھرپور فائدہ اٹھایا۔

اس شکست کے ساتھ سرينا کا 18 واں گرینڈ سلیم جیتنے کا خواب شرمندۂ تعبیر ہونے سے رہ گیا۔

موروگوزا کا یہ صرف چھٹا گرینڈ سلیم ٹورنا منٹ تھا اور اس سے قبل 35 نمبر کی کھلاڑی آسٹریلین اوپن کے چوتھے راؤنڈ میں پنچی تھیں جو کہ ان کی اب تک کی بہترین کار کردگي ہے۔

واضح رہے کہ سرینا ولیمز سنہ 2002 اور 2013 میں فرنچ اوپن میں خواتین کے سنگلز کی فاتح رہ چکی ہیں۔

شکست کے بعد سرينا نے کہا: ’یہ ان دنوں میں سے تھا جو آپ کا نہیں ہوتا۔ ہر دن آپ کا نہیں ہو سکتا۔ میں گرینڈ سلیم کے دوران اپنا خراب دن بالکل نہیں چاہتی۔ لیکن ایسا ہو جاتا ہے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption سپین کی موگوروزا کے چہرے پر جیت کے بعد خوشی اور اطمینان کا ملا جلا احساس دیکھا جا سکتا ہے یہ سرینا کے سولہ سالہ کریئر کی سب سے خراب شکست بھی ہے

سرينا نے اپنی حریف کھلاڑی کی تعریف کرتے ہوئے کہا: ’میرے خیال میں اس نے واقعی میں بہت اچھے کھیل کا مظاہرہ کیا۔ واقعی اس نے سمارٹ گیم کھیلا۔‘

انھوں نے اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا: ’اچھی بات یہ ہے کہ میں گھر واپس لوٹ رہی ہوں اور وہاں جا کر پانچ گنا زیادہ محنت کروں گی تاکہ یہ یقینی بناؤں کہ میں دوبارہ کبھی شکست سے دو چار نہ ہو سکوں۔‘

اپنی اس غیر متوقع جیت کے بعد بارسیلونا کی موگوروزا نے کہا: ’میرے دل میں یہ خیال آ رہا تھا کہ میرے پاس جیتنے کا موقع ہے لیکن مجھے جیتنے کے لیے بہتر کھیل پیش کرنا ہوگا۔‘

انھوں نے مزید کہا: ’آخری گیم میں ایک بار یہ خیال آیا، میرے خدا میں جیت رہی ہوں۔۔۔ پھر میں نروس ہو گئی لیکن میں نے خود کو پرسکون کرنے کی کوشش کی کہ وہ بھی تو نروس ہے۔ میرے لیے موقع ہے اور مجھے اسی طرح کے کھیل کا مظاہرہ کرتے ہوئے جیت حاصل کرنی چاہیے۔‘

اسی بارے میں