پاکستانی خاتون فٹبالر مالدیپ کی لیگ میں

Image caption پاکستان میں خواتین کے لیے فٹبال کھیلنا آسان نہیں ہے:ہاجرہ خان

مالدیپ کے ایس ایچ آر فٹبال کلب نے پاکستانی خواتین کی فٹبال ٹیم کی نائب کپتان ہاجرہ خان سے معاہدہ کیا ہے جس کے تحت وہ مالدیپ کی قومی ویمنز فٹبال لیگ میں کلب کی نمائندگی کریں گی۔

یہ پہلا موقع ہے کہ پاکستان کی کوئی خاتون فٹبالر ملک سے باہر لیگ کھیلیں گی۔

ہاجرہ خان نے مالدیپ روانگی سے قبل بی بی سی کو دیے گئے انٹرویو میں کہا کہ دو سال قبل سری لنکا میں ہونے والی ساؤتھ ایشین کپ میں انھیں مالدیپ کے منیجر نے کھیلتے ہوئے دیکھا تھا جس کے بعد دو مختلف کلبوں نے ان سے معاہدے میں دلچسپی ظاہر کی تھی تاہم صف اول کے کلب ایس ایچ آر نے ان سے معاہدہ کیا ہے۔

ہاجرہ خان کا کہنا ہے کہ یہ ان کی محنت کا صلہ ہے جو وہ چھ سات سال سے پاکستان میں کھیلتے ہوئے کرتی آئی ہیں۔

ہاجرہ نے پہلی بار سنہ 2008 میں ٹرائلز دیے تھے اور قومی چیمپئن شپ کھیلی جس میں وہ سب سے زیادہ گول کرنے والی کھلاڑی بھی بنیں۔

وہ تین بار سب سے زیادہ گول کرنے کے ساتھ ساتھ قومی چیمپیئن شپ کی بہترین کھلاڑی بھی رہ چکی ہیں۔

ہاجرہ خان نے کہا کہ پاکستان میں خواتین فٹبال کی عمر صرف نو برس ہے لیکن اس مختصر سے عرصے میں بھی ٹیلنٹ بھرپور انداز میں سامنے آیا ہے اور انہیں یقین ہے کہ ان کی طرح کئی دوسری کھلاڑیوں کو بھی ملک سے باہر کھیلنے کے مواقع میسر آئیں گے۔

ہاجرہ کا کہنا ہے کہ خواتین کے لیے فٹبال کھیلنا آسان نہیں ہے اور انھیں سماجی مسائل کا سامنا ہوتا ہے لیکن ان کے خاندان نے ان کی ہر مرحلے پر حوصلہ افزائی کی اور اب دوسرے والدین بھی انہیں دیکھ کر اپنی لڑکیوں کی یقیناً حوصلہ افزائی کرینگے۔

برازیل کے عظیم فٹبالر پیلے ہاجرہ خان کے آئیڈیل ہیں جبکہ خواتین کھلاڑیوں میں وہ برازیل کی مارٹا کی مداح ہیں۔

اسی بارے میں