برازیل کا آخری گروپ میچ، جیتے یا برابر کرے مگر ہارے نہیں

نیمار تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption برازیل کا میکسیکو کے خلاف دوسرا گروپ میچ بغیر کسی گول کے برابر ہوگیا تھا

برازیل میں جاری 20ویں فٹبال ورلڈ کپ کے دوران پیر کو چار میچ کھیلے جائیں گے جن میں گروپ اے اور گروپ بی کی تمام ٹیمیں مدِمقابل ہوں گی۔

گروپ اے: برازیل بمقابلہ کیمرون (برطانوی وقت کے مطابق 2000 بجے)

برازیل اپنا آخری گروپ میچ کیمرون کے خلاف کھیلے گا۔

برازیل کےاخباروں میں میکسیکو کے خلاف بغیر کسی گول کے میچ برابر کرنے پر میزبان ٹیم پر تنقید کی جا رہی ہے اور اسے برازیل کے لیے ’1978 کے بعد ورلڈ کپ کا بدترین آغاز‘ قرار دیا جا رہا ہے۔

اگر برازیل گروپ مرحلے سے نہ نکل سکا تو ایسا 1966 کے بعد پہلی مرتبہ ہوگا۔

اگر برازیل یہ میچ برابر بھی کرتا ہے تو اس کا دوسرے مرحلے میں جانا یقینی ہے اور ہار کی صورت میں دوسرے مرحلے میں پہنچنے کا انحصار اس بات پر ہوگا کہ گروپ اے کے دوسرے میچ میں میکسیکو کروئیشیا کو شکست دے۔

کیمرون کے خلاف میچ میں اگر نیمار، تیاگو سلوا، رامیریس یا لوئس گوستاوو میں سے کسی کو بھی یلو کارڈ دکھایا گیا تو ان پر ایک میچ کی پابندی لگ سکتی ہے۔

کیمرون پہلے ہی دو میچ ہار کر ورلڈ کپ سے باہر ہو چکا ہے۔

گروپ اے: میکسیکو بمقابلہ کروئیشیا (برطانوی وقت کے مطابق 2000 بجے)

میکسیکو نے اپنا پہلا میچ کیمرون سے جیتا تھا جبکہ برازیل کے خلاف میچ برابر ہوگیا تھا جس کے بعد انھیں دوسرے مرحلے میں پہنچنے کے لیے صرف ایک پوائنٹ کی ضرورت ہے۔

تاہم میکسیکو کے کوچ میگل ہریرا کا کہنا ہے کہ ہم جیتنے کے لیے کھیلیں گے۔

ان کا کہنا تھا: ’اگر آپ میدان میں یہ سوچ کر جائیں کہ آپ نے میچ برابر کرنا ہے تو آپ آسانی سے ہار سکتے ہیں۔‘

کروئیشیا کو اگلے مرحلے میں جانے کے لیے میکسیکو کو ہر صورت ہرانا ہوگا۔

کروئیشیا کے کوچ نِکو کواچ کا کہنا تھا کہ ’میکسیکو کے خلاف میچ کسی فائنل سے کم نہیں ہوگا۔‘

گروپ بی: نیدرلینڈز بمقابلہ چلی (برطانوی وقت کے مطابق 1700 بجے)

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption دفاعی چیمپیئن سپین اپنے دونوں گروپ میچ ہار کر ورلڈ کپ سے باہر ہو چکا ہے

اس میچ سے گروپ بی میں پہلی اور دوسری پوزیشن کا فیصلہ ہوگا کیوں کہ دونوں ٹیموں نے اپنے دونوں میچ جیت لیے ہیں۔

روبن فان پرسی کو دو یلو کارڈ مل چکے ہیں اس لیے وہ ایک میچ کی پابندی کی وجہ سے اس میچ میں حصہ نہیں لے سکیں گے۔

ڈچ میڈیا کے مطابق روبن فان پرسی کی غیر موجودگی میں 1996 میں چین کے خلاف کھیلے جانے والے دوستانہ میچ اور 221 میچوں کے بعد ایسا پہلی مرتبہ ہو گا کہ نیدرلینڈز کی ٹیم میں ایسا کوئی کھلاڑی نہ ہو جس کے نام میں ’فان‘ آتا ہو۔

نیدرلینڈ نے دفاعی چیمپیئن سپین کو پہلے گروپ میچ میں 5 – 1 سے ہرایا تھا جبکہ چلی نے سپین کو 2 – 0 سے شکست دے کر سب کو حیران کر دیا تھا۔

گروپ بی: سپین بمقابلہ آسٹریلیا (برطانوی وقت کے مطابق 1700 بجے)

گروپ بی میں دوسرا میچ سپین اور آسٹریلیا کے درمیان ہوگا۔ یہ دونوں ٹیمیں پہلے ہی ورلڈ کپ سے باہر ہو چکی ہیں۔

دفاعی چیمپیئن سپین کے خلاف صرف دو گروپ میچوں میں سات گول ہو چکے ہیں جب کہ ان کے خلاف یورو 2008، ورلڈ کپ 2010 اور یورو 2012 میں ہونے والے کل گولوں سے ایک گول زیادہ ہیں۔

جہاں تک آسٹریلیا کی بات ہے تو اپنے دونوں گروپ میچ ہارنے کے باوجود اس نے چلی اور نیدرلینڈز کے خلاف اچھا کھیل پیش کیا اور نیدرلینڈز کے خلاف دو گول بھی کیے۔

اسی بارے میں