شکیری کی ہیٹ ٹرک، سوئٹزرلینڈ فرانس کے ہمراہ اگلے مرحلے میں

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ہردان شکیری نے ان ورلڈ کپ مقابلوں کی دوسری ہیٹ ٹرک مکمل کی

ورلڈ کپ 2014 کےگروپ ای سے فرانس اور سوئٹزرلینڈ کی ٹیموں نے پری کوارٹر فائنل مرحلے میں جگہ بنا لی ہے جبکہ ہونڈاروس اور ایکواڈور کی ٹیمیں مقابلے سے باہر ہوگئی ہیں۔

بدھ کو کھیلے جانے والے میچوں میں جہاں سوئٹزرلینڈ نے ہونڈاروس کو صفر کے مقابلے میں دو گول سے ہرایا وہیں فرانس اور ایکواڈور کا میچ بغیر کسی گول کے برابر رہا۔

فرانس برابری کے نتیجے میں ملنے والے ایک پوائنٹ کی بدولت گروپ میں پہلی پوزیشن کے ساتھ دوسرے مرحلے میں پہنچا ہے جہاں اس کا مقابلہ نائجیریا سے ہوگا۔

سوئٹزرلینڈ نے گروپ میں دوسری پوزیشن لی ہے اور وہ کوارٹر فائنل میں ارجنٹائن کے مدِمقابل ہوگی۔

فرانس اور ایکواڈور کا میچ ریو ڈی جنیرو کے ماراکانا سٹیڈیم میں کھیلا گیا جہاں شائقین کی بہت بڑی تعداد اپنی پسندیدہ ٹیموں کا حوصلہ بڑھانے کے لیے موجود تھی۔

فرانس کی ٹیم نے اس میچ میں زیادہ جارحانہ انداز نہیں اپنایا تاہم اسے گول کرنے کے کئی اچھے مواقع ملے جو ایکواڈور کے کیپر کے عمدہ کھیل اور کچھ کمزور فنشنگ کی وجہ سے ضائع گئے۔

ایکواڈور کے لیے یہ میچ جیتنا لازم تھا لیکن فرانس جیسی مضبوط ٹیم کے خلاف اس ٹیم کے کھیل سے یوں لگ رہا تھا کہ وہ میچ جیتنے کی صلاحیت نہیں رکھتی۔

دوسرے ہاف میں ایکواڈور کے کپتان انتونیو ولنسیا کو خطرناک فاؤل کرنے پر ریفری کی جانب سے ریڈ کارڈ دکھا کر میدان بدر کیے جانے کے بعد لگ رہا تھا ایکواڈور کی ٹیم ہمت ہار جائے گی۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption ولینشیا کو ملنے والا ریڈ کارڈ ایکواڈور کے لیے تباہ کن ثابت ہوا

تاہم میدان میں دس کھلاڑی رہ جانے کے باوجود ایکواڈور نے دوسرے ہاف میں عمدہ کھیل پیش کیا اور فرانسیسی گول پر کئی حملے کیے لیکن وہ گول نہ کر سکے اور یوں میچ برابر رہا۔

سوئس ٹیم کی فتح

اس بے نتیجہ میچ کے برعکس مناس میں گروپ ای کے دوسرے میچ میں سوئٹزرلینڈ اور ہونڈاروس کے مابین پرجوش اور اچھا کھیل دیکھنے کو ملا۔

سوئس ٹیم کو میچ کے چھٹے منٹ میں ہی اس وقت برتری ملی جب ’الپائن میسی‘ کی عرفیت رکھنے والے ہردان شکیری نے 25 گز کے فاصلے سے شاندار کک لگا کر گیند ہونڈاروس کے گول میں پہنچا دی۔

برتری حاصل کرنے کے بعد سوئس ٹیم میں ایک نیا جوش دیکھنے کو ملا اور اس نے مخالف گول پر بڑھ چڑھ کر حملے کیے۔

اس جارحانہ کھیل کا نتیجہ 31ویں منٹ میں دوسرے گول کی صورت میں نکلا۔ اس مرتبہ بھی گول کرنے والے شکیری ہی تھے۔

پہلے ہاف کے اختتام پر سکور سوئس ٹیم کے حق میں دو صفر تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption کریم بینزیما اس میچ میں فرانس کے لیے فتح گر ثابت نہ ہو سکے

دوسرے ہاف میں ہونڈاروس کی ٹیم نے بہتر کھیل کا مظاہرہ کیا اور کئی اچھی مووز بنائیں۔

61 ویں منٹ میں ہونڈاروس کے فارورڈ جیری پلاسیوس کو سوئس ڈی میں گرایا گیا لیکن ریفری نے پنلٹی نہیں دی جس پر وہ شدید مایوس دکھائی دیے۔

مبصرین نے بھی ریفری کے اس فیصلے پر تنقید کی اور اسے ایک غلط فیصلہ قرار دیا۔

تاہم ہونڈاروس کی اس میچ میں واپس آنے کی تمام امیدیں اس وقت دم توڑ گئیں جب سوئٹزرلینڈ کے شکیری نے 71ویں منٹ میں ہیٹ ٹرک مکمل کرتے ہوئے اپنی ٹیم کو تین گول کی برتری دلوا دی۔

یہ اس ورلڈ کپ کی دوسری ہیٹ ٹرک تھی۔ اس سے قبل جرمنی کے تھامس ملر نے پرتگال کے خلاف ہیٹ ٹرک کی تھی۔

سوئٹزرلینڈ کی تین گول کی برتری میچ کے آخر تک قائم رہی اور وہ چھ پوائنٹس کے ساتھ دوسرے راؤنڈ میں پہنچ گئی۔

اسی بارے میں