ارجنٹائن کا کوچ پانی پانی

Image caption خاص برانڈ کا جانگیہ دکھا کر نیمار نے ماركیٹنگ کے قوانین کی خلاف ورزی تو نہیں کی؟

اس بار فٹبال ورلڈ کپ کے دوران صحافیوں کو کہانیوں کی کمی نہیں ہے اور انہیں بہت سا مواد ہاتھ لگ رہا ہے۔ انہیں کھیل کے علاوہ بھی بہت کچھ لکھنے کا موقع مل رہا ہے۔ تو آئیے جانتے ہیں کہ آج فٹ بال ڈائری میں خاص کیا ہے۔

زیادہ نصیحت کرنے کی ضرورت نہیں

بدھ کو ارجنٹائن کی ٹیم نے نائیجیریا کو دو کے مقابلے میں تین گول سے شکست دی لیکن اس کے باوجود میچ کے دوران ارجنٹائن کے کوچ الیہاندرو سبیلا اپنے کھلاڑیوں کو نصیحت کرنے کا کوئی موقع ہاتھ سے جانے نہیں دے رہے تھے۔ وقفے کے دوران وہ اپنے ایک کھلاڑی لاویسي کو ایک کونے میں لے جا کر کچھ سمجھانے لگے۔

صاف دکھائی دے رہا تھا کہ لاویسي کوچ کی باتوں سے زیادہ خوش نہیں ہیں۔ اور شاید یہی وجہ ہے کہ بات چیت کے دوران لاویسی جو پانی پی رہے تھے وہ انھوں نے کوچ کے منہ پر پھینک دیا۔

پانی کوچ سبیلا کی آنکھوں میں چلاگیا اور انھیں سمجھ نہیں آیا کہ وہ اس پر کیا کریں۔ ظاہر ہے وہ اپنے ہی کھلاڑی کے خلاف ریڈ کارڈ کا مطالبہ تو کر نہیں سکتے تھے۔

برازیلی بچی کی ڈائری

Image caption ارجنٹینا کی ٹیم نے نائیجیریا کو دو کے مقابلے میں تین گول سے شکست دی

برازیل کی لوئسا نام کی نو برس کی ایک بچی ہے جو اپنے ملک کے فٹ بال کھلاڑیوں سے ملنا چاہتی ہے۔ لیکن وہ ساؤ پاؤلو میں رہتی ہے جہاں سے اس کے لیے ٹیرے سوپولس جانا مشکل ہے جہاں برازیل کی ٹیم قیام پذیر ہے۔

اس کا حل لوئسا نے یہ نکالا کہ اس نے ایک ڈائری لکھنا شروع کر دی جس میں برازیل کے تمام کھلاڑیوں کے لیے پیغام ہے۔

وہ کھلاڑیوں کو ہر روز ایک نئے نام سے خطاب کرتی ہے۔ لوئسا کو امید ہے کہ ایک دن وہ خود یہ تمام خط برازیل کے کھلاڑیوں کے ہاتھ میں دے گی۔ کیا لوئسا ایسا کر پائے گی؟

لوئسا کا خیال ہے کہ اگر وہ خود کھلاڑیوں سے نہ مِل پائی تو وہ اپنی ڈائری کو بلاگ کی شکل میں لکھنا شروع کر دے گی۔ اچھی بات یہ ہے کہ کچھ صحافی کہہ رہے ہیں کہ وہ کوشش کریں گے کہ لوئسا کھلاڑیوں سے ملاقات کر سکے۔

نیمار کا جانگیہ

اس بارے میں افواہیں بہت گرم ہیں کہ فيفا کے افسران برازیل اور کیمرون کے درمیان ہونے والے میچ کے دوران برازیل کے سٹار کھلاڑی نیمار کا انڈرویئر نظر آنے کی تحقیقات کر رہے ہیں۔

اس تفتیش کی وجہ یہ نہیں کہ نیمار نے کوئی بے شرمی کی حرکت کی، بلکہ مسئلہ یہ ہے کہ کسی خاص برانڈ کا جانگیہ دکھا کر نیمار نے کہیں عالمی کپ کے دوران ماركیٹنگ کے قوانین کی خلاف ورزی تو نہیں کی ہے؟

کہا جا رہا ہے کہ نیمار ایک ایسے برانڈ کا انڈرویئر دکھا رہے تھے جو ٹیم کی سرکاری سپانسر کمپنی کا نہیں تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption لگتا ہے کہ ژزیل اپنی صدر کے نقش قدم پر چل رہی ہیں

عالمی کپ کے اصولوں کے مطابق کوئی بھی کھلاڑی کسی بھی طرح کا مذہبی یا سیاسی پیغام نہیں دے سکتا اور نہ ہی ذاتی حیثیت میں کسی تشہیر کا حصہ بن سکتا ہے۔

فيفا کے قوانین سے متعلق دستاویزات صرف کھلاڑیوں اور فٹ بال ایسوسی ایشن کے پاس ہیں اس لیے یہ کہنا بہت مشکل ہے کہ نیمار نے فيفا کے قوانین کو توڑا ہے یا نہیں۔

ژزیل کی جگہ پیلے؟

کچھ روز پہلے یہ خبر آئی تھی کہ 13 جولائی کو ہونے والے فائنل مقابلے کے بعد عالمی کپ کی فاتح ٹیم کو برازیل کی سپرماڈل ژزیل بندشین ٹرافی دیں گی۔ لیکن اب کہا جا رہا ہے کہ ژزیل نے اس دعوت کو ٹھکرا دیا ہے۔

برازیل کی صدر جیلما روسیف نے بھی اس طرح کی دعوت کو مسترد کر دیا تھا اور افتتاحی تقریب کے دوران بھی صدر روسیف بہت ’لو پروفائل‘ میں نظر آئی تھیں۔

لگتا ہے کہ ژزیل اپنی صدر کے نقش قدم پر چل رہی ہیں۔ اب اس بارے میں لوگ قیاس آرائیاں کر رہے ہیں کہ عالمی کپ کی فاتح ٹیم کو ٹرافی کون دے گا؟ کوئی سابق صدر لولا کی وکالت کر رہا ہے تو کوئی برازیل کے سابق کھلاڑی پیلے کا نام لے رہا ہے۔

اسی بارے میں