گرینڈ سلیم فائنل میں پہلی کینیڈیئن کھلاڑی

یوجینا بوشارڈ تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption یہ پہلی بار ہے کہ گینیڈا کا کوئی کھلاڑی کسی گرینڈ سلیم سنگل کے فائنل میں پہنچا ہے

ومبلڈن میں خواتین کے سنگل مقابلوں کے سیمی فائنل میں کینیڈا کی یوجینا بوشارڈ عالمی نمبر تین سیمونا ہالیپ کو ہرا کر فائنل میں پہنچ گئی ہیں۔

یہ پہلا موقع ہے کہ کینیڈا کی کوئی کھلاڑی کسی گرینڈ سلیم سنگل کے فائنل میں پہنچا ہے۔

مونٹریال سے تعلق رکھنے والی بیس سالہ یوجینا بوشارڈ نے ہالیپ کو 7 - 6 (7 - 5) اور 6 - 2 سے ہرایا۔

فائنل میں ان کا مقابلہ 2011 کی ومبلڈن چیمپیئن پیٹرا کویٹوا سے ہوگا۔

جمعرات کو ہی کھیلے جانے والے دوسرے سیمی فائنل میں کویٹوا نے جمہوریہ چیک سے تعلق رکھنے والی اپنی ہم وطن لوسی سیفاروا کو 7 - 5 (8 - 6) اور 6 - 1 سے شکست دے دی۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption بوشارڈ کا مقابلہ 2011 کی ومبلڈن چیمپیئن کویٹوا سے ہوگا۔

بوشارڈ عالمی رینکنگ میں 13 ویں نمبر پر ہیں۔ انھوں نے 2012 میں جونیئر ٹائٹل جیتا تھا اور اس سال آسٹریلیا اور فرینچ گرینڈ سلیم کے سیمی فائنل تک پہنچی تھیں۔

عالمی نمبر تین ہالیپ کا پاؤں کھیل کے دوران زخمی ہوگیا تھا جس کے بعد وہ کھیل میں واپس نہیں آ سکیں۔

اس کامیابی کے نتیجے میں ومبلڈن کے اختتام پر بوشارڈ عالمی ریکنگ میں پہلی 10 کھلاڑیوں میں شامل ہو جائیں گی۔

میچ کے بعد بوشارڈ نے بی بی سی سپورٹس سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ’میں یہ نہیں کہوں گی کہ میں اس جیت پر حیران ہوں کیونکہ میں نے سخت محنت کی تھی۔‘

اسی بارے میں