کوارٹر فائنلز میں یورپ اور وسطی و جنوبی امریکہ کی جنگ

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption میسی اب تک اس ورلڈ کپ میں ارجنٹائن کے ٹاپ سکورر ہیں

برازیل میں جاری 2014 کے فٹبال ورلڈ کپ میں سنیچر کو یہ فیصلہ ہونے والا ہے کہ ارجنٹائن، بیلجیئم، ہالینڈ اور کورسٹاریکا میں سے کون سی دو ٹیمیں عالمی مقابلوں کا دوسرا سیمی فائنل کھیلیں گی۔

دن کے پہلے اور ٹورنامنٹ کے تیسرے کوارٹر فائنل میں برازیلیا میں ارجنٹائن کا مقابلہ بیلجیئم سے ہوگا جس کے بعد سیلواڈور میں ہالینڈ اور کوسٹاریکا کی ٹیمیں آخری کوارٹر فائنل میں ٹکرائیں گی۔

ارجنٹائن اور بیلجیئم کی ٹیمیں 1986 کے بعد پہلی بار ورلڈ کپ کے کسی میچ میں مدِمقابل ہیں۔

ماضی میں یہ 1986 اور 1982 میں آمنے سامنے آ چکی ہیں اور دونوں نے ایک ایک بار فتح حاصل کی۔

ارجنٹائن گذشتہ تین ورلڈ کپ مقابلوں میں کوارٹر فائنل مرحلے میں ہی ٹورنامنٹ سے باہر ہوا ہے اور اس مرتبہ وہ آگے جانے کے لیے پرعزم ہے۔

ارجنٹائن کی ٹیم اس میچ میں ایک مرتبہ پھر اپنے سٹار سٹرائیکر لیونیل میسی کا ’جادو‘ چلنے کی منتظر ہوگی۔

میسی اب تک اس ورلڈ کپ میں ارجنٹائن کے ٹاپ سکورر ہیں اور کوارٹر فائنل سے قبل کھیلے گئے چار میچوں میں جہاں تین میں انھوں نے خود گول کیے وہیں پری کوارٹر فائنل میں سوئس ٹیم کے خلاف ڈی ماریا کا فیصلہ کن گول انھی کے پاس کا مرہونِ منت تھا۔

بیلجیئم کے دفاعی کھلاڑی جان ورتونغن کا کہنا ہے کہ ان کی ٹیم کو میسی کو روکنے کے لیے ایک مسلسل دیوار کی طرح کھڑا ہونا ہوگا: ’ہمیں بطور ٹیم مل کر انھیں روکنا ہوگا۔ اگر میسی ہم میں سے کسی ایک سے آگے نکلتا ہے تو پھر اسے روکنے کے لیے دوسرے اور پھر تیسرے کھلاڑی کو تیار رہنا ہوگا۔‘

بیلجیئن مڈفیلڈر ایکسل وٹسل پرامید ہیں کہ ان کی ٹیم کو میچ میں گول کرنے کے مواقع ملیں گے۔

ان کا کہنا ہے کہ ’مجھے امید ہے کہ ارجنٹائن کھیل کو اپنی مرضی سے چلانے کی کوشش کرے گا۔ اس سے ہمیں ان کی صفوں میں گھسنے کا موقع ملے گا اور ہمارے کھلاڑی ان خالی جگہوں سے فائدہ اٹھا سکیں گے جو انھیں میدان پر ملیں گی۔‘

کوسٹاریکا کا سامنا ہالینڈ سے

کوسٹاریکا کی ٹیم اس ورلڈ کپ کا ’سرپرائز پیکج‘ ثابت ہوئی ہے اور اب تک ٹورنامنٹ میں اس کی کارکردگی قابلِ تعریف رہی ہے۔

ادھر ہالینڈ کی ٹیم ٹورنامنٹ کے آغاز میں دفاعی چیمپیئن سپین کو پانچ گولوں سے ہرانے کے بعد سے ہر میچ میں اپنی مخالف ٹیم پر حاوی رہی ہے۔

یہ ورلڈ کپ کی تاریخ میں پہلا موقع ہوگا کہ یہ دونوں ٹیمیں پہلے مرتبہ ورلڈ کپ کے کسی میچ میں آمنے سامنے آئیں گی۔

گذشتہ ٹورنامنٹ میں رنر اپ رہنے والی ولندیزی ٹیم اس مرتبہ یقیناً عالمی چیمپیئن کا تاج اپنے سر پر سجانے کے لیے بےچین دکھائی دیتی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption ہالینڈ کے آئن روبن نے اس ٹورنامنٹ میں عمدہ کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے۔

ہالینڈ کے لیے آئن روبن اور روبن وین پرسی نے اب تک ٹورنامنٹ میں عمدہ کھیل کا مظاہرہ کیا ہے اور کوچ لوئس وین گال یہی چاہیں گے کہ ان کی یہ کارکردگی ٹیم کو فائنل تک لے جائے۔

ہالینڈ نے اب تک اس ٹورنامنٹ میں 12 گول کیے ہیں جو اس کی فارورڈ لائن کی عمدہ کارکردگی کا منہ بولتا ثبوت ہیں۔

اگر کوسٹاریکا ہالینڈ جیسی مضبوط ٹیم کو ہرا کر سیمی فائنل میں جاتی ہے تو یہ 1930 کے بعد پہلا موقع ہوگا کہ شمالی و وسطی امریکہ سے کوئی ٹیم اس مرحلے میں پہنچے گی۔

کوسٹاریکا کی ٹیم پری کوارٹر فائنل میں یونان کو پنلٹیز پر ہرا کر کوارٹر فائنل کھیلنے آئی ہے تو ہالینڈ نے میکسیکو کو اس اہم میچ کے آخری دو منٹ میں دو گول کر کے ہرایا تھا۔

کوسٹاریکا کے اچھے دفاع کا انداز اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ اس ٹورنامنٹ میں اس کے خلاف سب سے کم یعنی دو گول ہوئے ہیں۔

اسی بارے میں