فائنل کون کھیلے گا؟ برازیل یا جرمنی، فیصلہ آج

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption برازیل کی ٹیم اپنے ہوم گراؤنڈ پر 42 میچوں سے ناقابلِ شکست ہے

برازیل میں کھیلا جانے والا 2014 کا فٹبال ورلڈ کپ اپنے آخری مراحل میں داخل ہو چکا ہے اور منگل کو میزبان برازیل اور جرمنی کی ٹیمیں اس ٹورنامنٹ کے فائنل میں پہنچنے والی پہلی ٹیم بننے کی کوشش کریں گی۔

بیلو ہوریزونٹے میں کھیلے جانے والے اس میچ میں برازیل کو اپنے سٹار سٹرائیکر نیمار اور کپتان تیاگو سلوا کی خدمات حاصل نہیں۔

نیمار کولمبیا کے خلاف کوارٹر فائنل میں زخمی ہونے کی وجہ سے ان مقابلوں سے باہر ہو چکے ہیں جبکہ تیاگو سلوا کو ایک میچ کی معطلی کا سامنا ہے۔

سلوا کی جگہ دیوڈ لوئیس برازیلی ٹیم کی قیادت کریں گے اور برازیلی کوچ لوئس فلیپ سکولاری کا کہنا ہے کہ ان کی ٹیم نیمار کے بغیر بھی سیمی فائنل میں جرمنی کا سامنا کرنے کے لیے تیار ہے۔ تھیاگو سلوا کی ٹیم کی بائرن میونخ کلب کے ساتھ کھیلنے والے دانتے ٹیم میں شامل کیا جا رہے ہیں۔

ان کا کہنا ہے کہ ’نیمار نے اپنا کردار ادا کر دیا ہے اور اب وقت ہے کہ ہم اپنا کردار ادا کریں۔‘

برازیل کے سابق سٹار کھلاڑی زیکو نے بھی کہا ہے کہ ’برازیلی کھلاڑیوں کے لیے موقع ہے کہ وہ نیمار کی قربانی سے مثبت احساسات حاصل کریں۔ انھیں نیمار کو خراجِ تحسین پیش کرنے کے لیے دل و جان سے کھیلنا ہوگا۔‘

اس ٹورنامنٹ میں برازیل کے کھیلنے کا جارحانہ انداز زیرِ بحث آیا ہے۔ کوارٹر فائنل میں برازیل نے کولمبیا کے خلاف 31 فاؤل کیے جو ٹورنامنٹ کی تاریخ میں کسی ایک میچ میں سب سے زیادہ فاؤل ہیں۔

برازیل کی ٹیم اپنے ہوم گراؤنڈ پر 42 میچوں سے ناقابلِ شکست ہے اور انھیں آخری بار اگست 2002 میں پیراگوائے نے ہرایا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption جرمنی کی ٹیم منگل کو ورلڈ کپ مقابلوں میں اپنا 12واں سیمی فائنل کھیل رہی ہے

برازیل آٹھویں مرتبہ ورلڈ کپ کے سیمی فائنل میں پہنچا ہے اور ان میں سے صرف ایک میں اسے شکست ہوئی ہے۔

برازیل کی ٹیم 2002 کے بعد پہلی بار فٹبال ورلڈ کپ کا سیمی فائنل کھیل رہی ہے اور 12 برس قبل سیمی فائنل میں اس نے جرمنی ہی کو شکست دی تھی۔

جرمنی اور برازیل کی ٹیموں نے اگرچہ ورلڈ کپ میں سب سے زیادہ میچ کھیلے ہیں لیکن عالمی مقابلوں کے دوران آپس میں وہ صرف ایک بار ہی سامنے آئی ہیں اور یہ میچ 2002 کا سیمی فائنل تھا جس میں برازیل نے دو صفر سے فتح حاصل کی تھی۔

جرمنی کی ٹیم منگل کو ورلڈ کپ مقابلوں میں اپنا 12واں سیمی فائنل کھیل رہی ہے۔ گذشتہ 11 سیمی فائنلز میں سے اس نے چھ جیتے جبکہ پانچ میں اسے شکست ہوئی۔

جرمنی کی ٹیم لگاتار چار مرتبہ سیمی فائنل میں پہنچنے والی پہلی ٹیم بنی ہے اور اس مرتبہ وہ فائنل میں جا کر ٹورنامنٹ جیتنے کے لیے پرعزم دکھائی دیتی ہے۔

جرمنی کے موجودہ کوچ یوآخیم لوو 2006 کے ورلڈ کپ میں بطور اسسٹنٹ کوچ جرمنی کو سیمی فائنل میں شکست کھاتا دیکھ چکے ہیں اور اس مرتبہ وہ مختلف نتیجے کی توقع رکھتے ہیں۔

ان کا کہنا ہے کہ ’سب جرمنوں کے لیے ایک بات یقینی ہے کہ ہم ماراکانا میں فائنل کھیلنے کے لیے بےچین ہیں۔ ہمارا سفر ابھی تمام نہیں ہوا ہے۔‘

اسی بارے میں