فیفا نے سواریز کی اپیل مسترد کر دی

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption فیفا نے سواریز پر ایک لاکھ سوئس فرانک جرمانہ بھی عائد کیا تھا جو تقریباً 65 ہزار برطانوی پاؤنڈ کے مساوی بنتا ہے

فٹبال کی عالمی تنظیم (فیفا) نے یوراگوئے اور لیور پول کے کھلاڑی لوئس سواریز کو ورلڈ کپ کے ایک میچ کے دوران اطالوی کھلاڑی کو دانتوں سے کاٹنے پر 9 انٹرنیشنل میچوں کی پابندی، جرمانے اور چار ماہ تک فٹبال سرگرمیوں سے دور رہنے کی سزا کے خلاف اپیل مسترد کر دی ہے۔

خیال رہے کہ فیفا نے برازیل میں جاری فٹبال کے عالمی کپ کے ایک میچ میں اطالوی کھلاڑی جیورجیو چیلینی کو کاٹنے پر لوئس سواریز کو یہ سزا سنائی تھی۔

ادھر یوراگوئے کی فٹبال ایسوسی ایشن نے فیفا کی جانب سے دی جانے والی سزا کو ’حد سے زیادہ فیصلہ‘ قرار دیا تھا۔

یوراگوئے کی فٹبال ایسوسی ایشن کا کہنا ہے کہ سواریز کو سنائی جانے والی سزا کا فیفا کے پاس ناکافی ثبوت تھے۔

فیفا کے اس فیصلے کے بعد لوئس سواریز اب کھیلوں کی ثالثی عدالت میں اپیل دائر کر سکیں گے۔

فیفا نے سواریز پر ایک لاکھ سوئس فرانک جرمانہ بھی عائد کیا تھا جو تقریباً 65 ہزار برطانوی پاؤنڈ کے مساوی بنتا ہے۔

فیفا کے ڈسپلنری کوڈ کی شق نمبر 22 کے تحت لوئس سواریز چار ماہ تک فٹبال سے متعلق کسی بھی قسم کی انتظامی یا دوسری سرگرمی میں حصہ نہیں لے سکتے، جبکہ آرٹیکل 21 کے تحت سواریز اس عرصے کے دوران فٹبال کے کسی بھی میدان میں داخل نہیں ہو سکتے بمشول اس میدان کے جہاں یوراگوئے کی قومی ٹیم کوئی میچ کھیل رہی ہو گی۔

اگر لوئس سواریز اور یوراگوئے کی فٹبال ایسوسی ایشن نے کھیلوں کی ثالثی عدالت میں اپیل دائر کرنے کا فیصلہ کیا تو اس صورت میں عدالت سواریز کا مقدمہ دوبارہ سنے گی۔

لوئس سواریز دو بار پہلے بھی میچ کے دوران کھلاڑی کو کاٹنے کے الزام میں دس میچوں کی پابندی کا سامنا کر چکے ہیں۔

گذشتہ سال اپریل میں سواریز کو انگلش پریمیئر لیگ کے میچ میں چیلسی فٹبال کلب کے کھلاڑی ایوانوویچ کو کاٹنے پر دس میچوں کی پابندی کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

اس سے قبل سنہ 2010 میں بھی ان پر ہالینڈ کے ایندہووین کلب کے اتھمان بکال کو کاندھے پر کاٹنے پر سات میچوں کی پابندی عائد کی گئی تھی۔

سنہ 2010 کے کوارٹر فائنل میں انھوں نے گھانا کے خلاف کھیلےگئے میچ میں مخالف ٹیم کاگول ہاتھ سے روکا تھا جس پر ان کو ریڈ کارڈ دکھا کر میچ سے باہر کر دیا گیا تھا۔

اسی بارے میں