ناک آؤٹ راؤنڈ کے پانچ یادگار لمحات

تصویر کے کاپی رائٹ AP

فیفا ورلڈ کپ کے گروپ میچز کے بعد ناک آؤٹ راؤنڈ میں بھی کچھ لمحات ایسے دیکھنے کو ملے جو ماضی کے ورلڈ کپس کے یادگار لمحات کے مقابلے کے تھے۔

بی بی سی کے سٹیفن فوٹریل نے برازیل ورلڈ کپ 2014 کے کچھ یادگار لمحات پیش کیے ہیں۔

برازیل کی تذلیل

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

اس ٹورنامنٹ میں خوشی اور غم کے جو لمحات ہیں ان میں سب سے زیادہ یادگار لمحہ برازیل کی جرمنی کے ہاتھوں شکست تھی۔ برازیل کے کھلاڑی 1-7 سے شکست کے بعد ششدر اور آنکھوں میں آنسو لیے اپنے حیران اور غصے میں شائقین کےکھڑے ہوئے لمحے کو جس نے بھی دیکھا ہے وہ کبھی بھی اس کو بھول نہیں پائے گا۔

بہت سے شائقین مانتے تھے کہ ان کی ٹیم ماضی کی ٹیموں کے مقابلے میں سب سے کمزور ٹیم ہے لیکن ان کو امید تھی کہ جوش و جذبے کے ساتھ یہ ٹیم فائنل میں پہنچ جائے گی۔ لیکن جس شکست کا سامنا سکولاری کی ٹیم کو سامنا کرنا پڑا اس کے لیے کوئی بھی تیار نہیں تھا۔

کلوز کا نیا ریکارڈ

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

جرمنی کے سٹرائیکر مرسیلو کلوز نے برازیل کے خلاف گول کر کے ورلڈ کپس میں سب سے زیادہ گول کرنے والے کھلاڑی بن گئے۔ وہ علیحدہ بات ہے کہ ان کا یہ کارنامہ برازیل کو اس بری طرح شکست دینے کے سامنے ماند پڑ گیا۔ 36 سالہ سٹرائیکر نے برازیل کے سابق سٹرائیکر رونالڈو کا ریکارڈ توڑا۔

کلوز 36 میچوں میں 71 گول کر کے جرمنی کے سب سے زیادہ گول کرنے والے کھلاڑی ہیں اور وہ تیسرے کھلاڑی ہیں جنھوں نے چار ورلڈ کپس میں گول کیے۔ اس سے قبل برازیل کے پیلے اور مغربی جرمنی کے سیلر نے یہ اعزاز حاصل کیا ہوا ہے۔

نیمار کی چوٹ

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

ورلڈ کپ کے کوارٹر فائنل کے بعد ہی برازیل کے لیے خطرے کی گھنٹیاں اس وقت بجنے لگیں جب ان کے مایہ ناز کھلاڑی نیمار کولمبیا کے خلاف میچ میں ریڑھ کی ہڈی میں چوٹ لگنے کے باعث باقی میچ کھیلنے کے قابل نہ رہے۔ 22 سالہ نیمار کو اس وقت چوٹ لگی جب کولمبیا کے ڈیفنڈر نے ان کی کمر پر گھٹنا مارا۔

اس کے علاوہ برازیل کے کپتان تھیاگو سلوا پر بھی سیمی فائنل کھیلنے پر پابندی عائد ہو گئی۔ ان دو کھلاڑیوں کی کمی چار روز بعد جرمنی کے خلاف سیمی فائنل میں محسوس کی گئی۔

جیمز روڈریگیز کا شاندار گول

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

کولمبیا کے سٹرائیکر ورلڈ کپ میں سب سے زیادہ گول کرنے پر گولڈن بوٹ کے مضبوط امیدوار ہیں۔ انھوں نے اس ٹورنامنٹ میں اپنے آپ کو ایک اہم سٹرائیکر کے طور پر منوایا۔ ان کا وہ گول نہایت ہی شاندار تھا جس میں انھوں نے بال کو چھاتی سے کنٹرول کر کے باکس کے باہر سے کِک مار کر گیا۔ اس کے بعد انھوں نے شاندار موو بنائی اور اپنی ٹیم کو ناک آؤٹ مرحلے میں پہنچایا۔

ورلڈ کپ میں ان کا چھٹا گول برازیل کے خلاف تھا جس میں ان کی ٹیم 1-2 سے ہار گئی۔

کرول کوسٹا ریکا پر بھاری

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

نیدرلینڈز کی پنلٹی شوٹ آؤٹس میں ارجنٹینا سے شکست سے پہلے نیدرلینڈز نے کوارٹر فائنل میں پنلٹی شوٹ آؤٹس ہی میں کوسٹا ریکا کو شکست دی۔

اُس وقت نیدرلینڈز کے کوچ نے بہت بڑا رِسک لیا جب انھوں نے گول کیپر جیسپر کو ایکسّرا ٹائم میں یبدیل کیا اور ٹیم کرول کو لے کر آئے۔ کرول نے ان پنلٹی شوٹ آؤٹس سے قبل اس ورلّ کپ میں کوئی میچ نہیں کھیلا تھا۔ لیکن وہ دو پنلٹی کِکس بچانے میں کامیاب رہے اور کوسٹا ریکا کو شکست دی۔