برازیلیا میں بھی فتح برازیل سے روٹھی ہی رہی

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption ڈیلی بلنڈ نے ہالینڈ کی جانب سے دوسرا اور اپنا پہلا انٹرنیشنل گول کیا

فٹبال ورلڈ کپ 2014 میں ہالینڈ نے میزبان برازیل کو صفر کے مقابلے میں تین گول سے شکست دے کر ٹورنامنٹ میں تیسری پوزیشن حاصل کر لی ہے۔

جرمنی کے ہاتھوں سیمی فائنل میں ذلت آمیز شکست کے بعد ہزاروں برازیلی شائقین اس امید کے ساتھ سٹیڈیم پہنچے تھے کہ ان کی ٹیم اپنی بری کارکردگی کا ازالہ کرے گی تاہم ان کی یہ خواہش پوری نہ ہو سکی۔

برازیلیا میں سنیچر کی شام کھیلے جانے والے میچ میں برازیلی کے دفاعی کھلاڑیوں کی خامیاں ایک مرتبہ پھر کھل کر سامنے آئیں۔

میچ کے آغاز میں ہی ہالینڈ نے اس وقت برتری حاصل کر لی جب وین پرسی نے پنلٹی پر گول کیا۔

یہ پنلٹی برازیلی کپتان تھیاگو سلوا کی جانب سے ہالینڈ کے فارورڈ آئن رابن کو دی گئی تھی۔

اس فاؤل پر سلوا کو پیلا کارڈ دکھایا گیا تاہم مبصرین نے انھیں خوش قسمت قرار دیا کہ وہ ریڈ کارڈ نہ ملنے کی وجہ سے میدان بدر ہونے سے بچ گئے۔

تیسرے ہی منٹ میں ایک گول کے خسارے میں جانے کے بعد برازیلی دفاع بہتر کھیل پیش کرنے میں ناکام رہا۔

ہالینڈ نے برازیلی دفاعی کھلاڑی ڈیوڈ لوئیز کی غلطی کی وجہ سے 17ویں منٹ میں اپنی برتری دوگنی کر لی۔گول کرنے والے ڈیلی بلنڈ تھے اور یہ ان کا پہلا انٹرنیشنل گول تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption وین پرسی نے پنلٹی پر گول کرنے میں کوئی غلطی نہیں کی

دو گول کے خسارے میں جانے کے بعد برازیلی فارورڈ لائن میں کچھ ہلچل دکھائی دی اور آسکر نے کچھ اچھی مووز بنائیں لیکن وہ بھی ہالینڈ کے کیپر کو زیادہ پریشان نہ کر سکے۔

36ویں منٹ میں برازیل کو گول کرنے کا ایک اچھا موقع ملا مگر آسکر کے کراس پر ڈیوڈ لوئیز اور پالینہو دونوں گیند گول میں نہیں ڈال سکے۔

دوسرے ہاف میں برازیلی ٹیم نے نسبتاً بہتر کھیل کا مظاہرہ کیا تاہم برازیلی فاورڈز مخالف دفاعی لائن میں نقب لگانے میں ناکام رہے۔

اس ہاف میں گیند زیادہ تر برازیلی کھلاڑیوں کے پاس ہی رہی لیکن کھیل کے اختتامی لمحات میں ہالینڈ کے وائن آلڈم کا گول برازیل کے زخموں پر نمک چھڑکنے کے مترادف تھا۔

ہالینڈ کے ہاتھوں شکست کے بعد اس ٹورنامنٹ کو جیتنے کے لیے فیورٹ ٹیموں میں سے ایک برازیل کا اس ورلڈ کپ میں سفر لگاتار دو شکستوں کے ساتھ ختم ہوگیا۔

برازیلی فٹبال ٹیم کی 100 سالہ تاریخ میں یہ دوسرا موقع ہے کہ اسے اپنے ہوم گراؤنڈ پر لگاتار دو میچوں میں شکست ہوئی ہے۔

ادھر گذشتہ ورلڈ کپ میں فائنل ہار کر نقرئی تمغہ جیتنے والی ہالینڈ کی ٹیم کو اس مرتبہ تیسری پوزیشن اور کانسی کے تمغے پر اکتفا کرنا پڑا ہے۔

اسی بارے میں