برازیل نے ڈنگا کو نیا فٹبال کوچ مقرر کر دیا

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption برازیل فٹبال کنفیڈریشن نے ریو ڈی جنیرو میں ایک پریس کانفرنس میں ڈنگا کی بطور کوچ تعیناتی کی تصدیق کی تاہم انھیں دی جانے والی تنخواہ کے بارے میں کوئی تفصیل نہیں بتائی

برازیل فٹبال کنفیڈریشن (سی بی ایف) نے سابق کپتان ڈنگا کو فلپ سکولاری کی جگہ ٹیم کا نیا کوچ مقرر کردیا ہے۔

ورلڈ کپ کے سیمی فائنل میں برازیل کو عالمی چیمپیئن جرمنی کے ہاتھوں 1-7 کی عبرت ناک شکست اور ٹورنامنٹ سے باہر ہونے کے بعد برازیلین فٹبال حکام نے فلپ سکولاری کے معاہدے میں توسیع نہ کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔

خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق 50 سالہ ڈنگا سنہ 1994 میں ورلڈ کپ جیتنے والی برازیلین ٹیم کے کپتان تھے اور انھیں دوسری مرتبہ ٹیم کی کوچنگ کی ذمے داریاں سونپی گئی ہیں۔

ریو ڈی جنیرو میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے ڈنگا کا کہنا تھا ’میں بہت زیادہ خوش ہوں، میرے پاس برازیل کی ٹیم کے لیے ابتدائی خاکہ ہے اور میں یہاں کوئی خواب دکھانے نہیں آیا، ہمیں ہر حال میں سخت محنت کرنی ہو گی۔‘

ان کا کہنا تھا کہ برازیل کے فٹبال شائقین اس وقت بہت زیادہ مایوس ہیں تاہم وہ ٹیم کے ساتھ کھڑے ہیں۔

خیال رہے کہ ڈنگا کو سنہ 2006 کے ورلڈ کپ کے بعد برازیل کوچ مقرر کیا گیا تھا اور چار سال قبل کوارٹر فائنل میں جنوبی افریقہ کے ہاتھوں شکست کے بعد انھیں ان کے عہدے سے برطرف کردیا گیا تھا۔

خبر رساں ادارے اے پی کے مطابق برازیل فٹبال کنفیڈریشن نے ریو ڈی جنیرو میں ایک پریس کانفرنس میں ڈنگا کی بطور کوچ تعیناتی کی تصدیق کی تاہم انھیں دی جانے والی تنخواہ کے بارے میں کوئی تفصیل نہیں بتائی۔

سی بی ایف کے صدر جوز ماریا میرن نے اس بات کا اشارہ دیا کہ وہ چاہتے ہیں کہ ڈنگا سنہ 2018 میں روس میں ہونے والے فٹبال کے عالمی کپ تک ٹیم کے کوچ کی حیثیت سے کام کریں۔

ماریا کا کہنا تھا کہ ڈنگا کے پاس برازیل کی ٹیم کو بلندیوں تک پہنچانے کی تمام صلاحیتیں موجود ہیں اور اعدادوشمار ظاہر کرتے ہیں کہ ان کے پاس ایسا کر دکھانے کی صلاحیت موجود ہے۔

ڈنگا کو سنہ 2006 میں پہلی بار برازیل کا کوچ مقرر کیا گیا تھا۔ اس عرصے کے دوران برازیل کی قومی ٹیم نے 60 میچ کھیلے جن میں سے 42 جیتے، 12 برابر رہے جبکہ چھ میں اسے شکست کا سامنا کرنا پڑا۔

اسی بارے میں