انگلینڈ کی عمدہ بیٹنگ، کک فارم میں واپس

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption بیلنس نے بھارتی بولرز کا ڈٹ کر مقابلہ کیا اور انھے سنبھلنے نہ دیا

بھارت اور انگلینڈ کے مابین کھیلے جانے والے تیسرے ٹیسٹ کے پہلے روز انگلینڈ نے کھیل کے اختتام پر دو وکٹوں کے نقصان پر 247 رنز بنائے ہیں۔

انگلینڈ کی اننگز کی خاص بات کپتان الیسٹر کک کی 95 رنز اورگیری بیلنس کی سنچری تھی۔ ساؤتھہمپٹن میں کھیلے جانے والے اس اہم مییچ کے پہلے روز انگلینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کرنے کا فیصلہ کیا۔

تفصیلی سکور کارڈ

انگلینڈ کے اوپنروں نے پہلی وکٹ کی شراکت میں 55 رنز بنائے۔انگلینڈ کے پہلے آوٹ ہونے والے کھلاری روبنسن 26 رن بنا کر محمد شامی کی گیند پر جدیجہ کے ہاتھوں کیچ آوٹ ہوگئے۔

پہلی وکٹ گرنے کے بعد کپتان کک نے بیلنس کے ساتھ مل کر دوسری وکٹ کی شراکت میں 158 رنز کا اضافہ کیا۔ دونوں کھلاڑیوں نے بھارتی بولرز کا ڈٹ کر مقابلہ کیا۔

تاہم الیسٹر کک سنچری بنانے سے پانچ رن قبل ہی جدیجہ کی گیند پر کپتان دھونی کے ہاتھوں کیچ آوٹ ہوگئے۔

بیلنس کی اننگز خوبصورت اور جارحانہ شاٹس کا بہترین نمونہ تھی جبکہ کپتان کک پہلے سے زیادہ پر اعتماد نظر آئے۔

تیسرے نمبر پر آنے والے این بیل نے محتاط انداز میں بیلنس کا ساتھ دیا اور کھیل کے اختتام تک وکٹ پر موجود تھے۔ این بیل 16 جبکے بیلنس 104 رن بنا کر ناٹ آوٹ رہے۔

بھارت کی جانب سے پچھلے میچ میں مین آف دی میچ کا اعزاز حاصل کرنے والے ایشانت شرما اس میچ میں زخمی ہونے کے باعث شرکت نہیں کرسکے جبکہ انگلینڈ نے وکٹ کیپر میٹ پریر کی جگہ جوس بٹلر کو میدان میں اتارا۔

انگلینڈ کے کپتان الیسٹر کک کی پہلے دونوں میچوں میں کارکردگی دیکھنے کے بعد ماہرین نے ان کو کپتانی سے ہٹ جانے کا مشورہ دیا ہے۔ پانچ ٹیسٹ میچوں کی سیریز میں پہلا میچ ہار جیت کے فیصلے کے بغیر ختم ہوا جبکہ لارڈز میں ہونے والے دوسرے میچ بھارت نے جیت لیا۔

اسی بارے میں