توفیق عمر، عمران خان کی ٹیم میں شمولیت

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption صوابی میں پیدا ہونے والے اٹھائیس سالہ یاسر شاہ فرسٹ کلاس کرکٹ میں دو سو ستر وکٹیں حاصل کرچکے ہیں

پاکستان نے آسٹریلیا کے خلاف دو ٹیسٹ میچوں کی سیریز کے لیے انیس رکنی ٹیم کا اعلان منگل کے روز کر دیا ہے جس میں فاسٹ بولر عمران خان اور لیگ سپنرر یاسر شاہ بھی شامل ہیں۔

دائیں ہاتھ کے لیگ سپنر یاسرشاہ آسٹریلیا کے خلاف ٹیسٹ سیریز میں ایک بڑی امید کے طور پر پاکستانی ٹیم میں شامل کیےگئے ہیں۔

پاکستانی کرکٹ ٹیم کو سعید اجمل کی معطلی کے سبب شدید مشکلات کا سامنا ہے اور سپن بولنگ کے ذریعے آسٹریلوی بیٹسمینوں کو قابوکرنے کی کوشش کے طور پر یاسرشاہ کو ٹیم میں لیا گیا ہے جو دوسال قبل زمبابوے کے دورے میں ایک ون ڈے انٹرنیشنل اور دو ٹی ٹوئنٹی میچز کھیلے تھے۔

صوابی میں پیدا ہونے والے اٹھائیس سالہ یاسر شاہ فرسٹ کلاس کرکٹ میں دو سو ستر وکٹیں حاصل کرچکے ہیں۔

انیس رکنی اسکواڈ میں سپنرز کی حیثیت سے یاسرشاہ کے علاوہ ذوالفقار بابر اور رضا حسن کو بھی رکھاگیا ہے۔

لیفٹ آرم اسپنر عبدالرحمن ڈراپ کردیے گئے ہیں اسی طرح سری لنکا کے دورے میں ٹیسٹ ٹیم میں موجود عمراکمل کی بھی چھٹی کردی گئی ہے۔

اوپنر توفیق عمر کی دو سال بعد واپسی ہوئی ہے۔

انڈرنائنٹین ٹیم کے کپتان سمیع اسلم بھی سلیکٹرز کا اعتماد حاصل کرنے میں کامیاب ہوئے ہیں۔

محمد حفیظ کی تسلی بخش میڈیکل رپورٹ کے بعد انہیں بھی ممکنہ کھلاڑیوں میں شامل کرلیا گیا ہے۔

پشاور کے فاسٹ بولر عمران خان اور بہاولپور کے فاسٹ بولر عطاءاللہ پہلی بار پاکستانی اسکواڈ میں شامل ہوئے ہیں۔

عطاء اللہ کا بولنگ ایکشن حالیہ قومی ٹی ٹوئنٹی ٹورنامنٹ کے دوران رپورٹ ہوا تھا تاہم کہا جا رہا ہے کہ ان کا بولنگ ایکشن اب کلیئر قرار دیا جا چکا ہے۔

ممکنہ انیس کھلاڑیوں کا سکواڈ یہ ہے۔ احمد شہزاد۔ محمد حفیظ، توفیق عمر، شان مسعود، سمیع اسلم، مصباح الحق ( کپتان )، یونس خان، اسد شفیق، اظہرعلی، حارث سہیل، محمد طلحہ، راحت علی، عمران خان، احسان عادل، عطاء اللہ، سرفراز احمد وکٹ کیپر، ذوالفقاربابر، رضا حسن اور یاسرشاہ۔

پاکستان اور آسٹریلیا کے درمیان پہلا ٹیسٹ بائیس اکتوبر سے دبئی میں کھیلا جائے گا۔ دوسرا ٹیسٹ تیس نومبر سے ابوظہبی میں ہوگا۔

اسی بارے میں