نذر محمد سے یونس خان تک

تصویر کے کاپی رائٹ Allsport HultonArchive
Image caption لٹل ماسٹر کے نام سے کرکٹ کی دنیا میں مشہور حنیف محمد نے جب اپنے ٹیسٹ کریئر کا اختتام کیا تو ان کی ٹیسٹ سنچریوں کی تعداد 12 تھی

ٹیسٹ کرکٹ میں پاکستان کی اولین سنچری نذر محمد نے 1952 میں بھارت کے خلاف لکھنؤ ٹیسٹ میں سکور کی تھی۔ وہ پاکستان کا دوسرا ٹیسٹ میچ تھا۔ نذر محمد اس کے بعد مزید کوئی سنچری سکور نہ کر سکے لیکن اسی ٹیم میں شامل حنیف محمد آنے والے برسوں میں ایک کے بعد ایک سنچری سکور کرتے چلے گئے۔

لٹل ماسٹر کے نام سے کرکٹ کی دنیا میں مشہور حنیف محمد نے جب اپنے ٹیسٹ کریئر کا اختتام کیا تو ان کی ٹیسٹ سنچریوں کی تعداد 12 تھی۔

یہ 12 سنچریاں ایک طویل عرصے تک آنے والے پاکستانی بیٹسمینوں کے لیے چیلنج بنی رہیں۔

ظہیرعباس، مشتاق محمد اور آصف اقبال ان کے اس ریکارڈ کے بہت قریب آئے لیکن اسے اپنے نام نہ کر سکے۔ ان میں ظہیرعباس نے بھی اپنا کریئر 12 سنچریوں پر ختم کیا لیکن اس وقت سب کو یہ معلوم تھا کہ حنیف محمد کا ریکارڈ زیادہ دیر نہیں رہ سکے گا۔

اس کا سبب جاوید میانداد تھے۔

پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان 1984 میں کھیلے گئے حیدرآباد ٹیسٹ میں، جو تاریخ کا ایک ہزار واں ٹیسٹ میچ بھی تھا، جاوید میانداد نے دونوں اننگز میں سنچریاں سکور کیں اور حنیف محمد سے آگے نکل گئے۔

جاوید میانداد نے اپنے ٹیسٹ کریئر میں کل 23 سنچریاں سکور کیں۔

میانداد کے بعد سنچریوں کی دوڑ انضمام الحق اور محمد یوسف کے درمیان تھی۔

انضمام الحق نے 2005 میں انگلینڈ کے خلاف فیصل آْباد ٹیسٹ کی دونوں اننگز میں سنچری سکور کی۔ دوسری اننگز میں بنائی گئی سنچری ان کی 24ویں سنچری تھی۔ اس طرح انھوں نے میانداد کو پیچھے چھوڑ دیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption جاوید میانداد نے ٹیسٹ کرکٹ میں 8832 رنز سکور کیے تھے اور یونس خان کو یہ ریکارڈ توڑنے کے لیے 1117 رنز درکار ہیں

انضمام الحق کی ریٹائرمنٹ کے بعد محمد یوسف کے پاس سب سے زیادہ سنچریوں کا ریکارڈ اپنے نام کرنے کا اچھا موقع تھا لیکن ان کا کریئر 24 سنچریوں پر ختم ہو گیا۔

یونس خان نے انضمام الحق کی برابری کر لی ہے اور اگر وہ ایک اور سنچری سکور کرنے میں کامیاب ہو گئے تو سب سے زیادہ سنچریوں کے ریکارڈ کے بلاشرکت غیرے مالک بن جائیں گے۔

یونس کو انضمام پر ایک لحاظ سے برتری حاصل ہے: انضمام نے 198 اننگز کھیل کر 24 سنچریاں بنائی تھیں جب کہ یونس نے اب تک 163 اننگز کھیلی ہیں۔

ساتھ ہی وہ جاوید میانداد کے سب سے زیادہ رنز کے پاکستانی ریکارڈ کے قریب بھی پہنچتے جارہے ہیں۔

جاوید میانداد نے ٹیسٹ کرکٹ میں 8832 رنز سکور کیے تھے اور یونس خان کو یہ ریکارڈ توڑنے کے لیے مزید 1117 رنز درکار ہیں۔

اسی بارے میں