سعید اجمل کے ایکشن کا ’غیر سرکاری‘ تجزیہ پیر کو

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ۔۔۔۔۔پاکستان کرکٹ بورڈ کے اہلکار کہتے رہے ہیں کہ سعید اجمل کے بولنگ ایکشن میں واضح بہتری آئی ہے

پاکستان کرکٹ بورڈ نے سپنر سعید اجمل کا برطانیہ میں آئی سی سی کےمنظور شدہ لیبارٹری سے بولنگ ایکشن کا ’غیر سرکاری‘ تجزیہ کروانے کا فیصلہ کیا ہے۔

سعید اجمل کے باؤلنگ کا تجزیہ لوبرو یونیورسٹی کے نیشنل کرکٹ پرفارمنس سینٹر میں ہوگا۔

پاکستان کرکٹ بورڈ نے کہا ہے کہ سعید اجمل سنیچر کے روز برطانیہ کے لیے روانہ ہوں گے اور پیر کے روز ان کے بولنگ ایکشن کا تجزیہ کیا جائے گا۔

آئی آئی سی کی طرف سے پابندی کے بعد سیعد اجمل ماضی کے مشہور سپنر ثقلین مشتاق کی نگرانی میں لاہور میں نیشنل کرکٹ اکیڈیمی میں اپنے بولنگ ایکشن کو درست کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے اہلکار کہتے رہے ہیں کہ سعید اجمل کے بولنگ ایکشن میں واضح بہتری آئی ہے۔

آئی سی سی نے سعید اجمل کے ایکشن کا بائیو مکینک جائزے کے بعد ان پر پابندی عائد کر دی تھی۔آئی سی سی کے مطابق سعید اجمل کی تمام گیندیں 15 ڈگری سے تجاوز کرتی ہیں جو کسی بھی بولر کے بولنگ ایکشن کی قانونی حد ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption پاکستان کے ماضی کےسپنر ثقلین مشتاق سعید اجمل کو اپنا بولنگ ایکشن ٹھیک کرنے میں مدد دے رہے ہیں

36 سالہ سعید اجمل دوسری مرتبہ مشکوک بولنگ ایکشن کی زد میں آئے ہیں۔ اس سے قبل 2009 میں بھی ان کے بولنگ ایکشن پر اعتراض ہوا تھا تاہم بعد میں وہ کلیئر ہوگئے تھے۔

ماضی میں سعید اجمل یہ موقف اختیار کرتے آئے ہیں کہ ایک ٹریفک حادثے کی وجہ سے ان کا بازو متاثر ہوا تھا جس کی وجہ سے آئی سی سی نے انھیں 15 ڈگری سے زیادہ کی چھوٹ دے رکھی ہے۔

سعید اجمل ٹیسٹ کرکٹ میں 178، ون ڈے میچوں میں 183 اور ٹی ٹوئنٹی میں 85 وکٹیں حاصل کر چکے ہیں۔

وہ ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل میں دنیا میں سب سے زیادہ وکٹیں حاصل کرنے والے بولر ہیں۔

آئی سی سی نے حالیہ دنوں میں مشکوک بولنگ ایکشن کے معاملے میں انتہائی سخت موقف اختیار کر رکھا ہے اور سعید اجمل کے علاوہ ویسٹ انڈیز کے شلنگفرڈ، زمبابوے کے پراسپر اتسیا، نیوزی لینڈ کے ولیم سن اور بنگلہ دیش کے سہاگ غازی ، اور سری لنکا کے سنیا نائیکے کی بولنگ پر پابندی عائد کر رکھی ہے۔

اسی بارے میں