آئی سی سی کے ضوابط میں ترمیم عامر کی واپسی کا امکان روشن

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption محمد عامر پر پانچ سال کی پابندی عائد کر دی گئی تھی

بین الاقوامی کرکٹ کونسل نے انسداد بدعنوانی کے قوانین میں ترمیم کر دی ہے اور بدعنوانی کے الزام میں پابندی کا سامنا کرنے والے کھلاڑیوں کی پابندی کی مدت ختم ہونے سے پہلے ڈومیسٹک کرکٹ میں ان کے حصہ لینے کا فیصلہ مقامی کرکٹ بورڈز پر چھوڑ دیا ہے۔

آئی سی سی کی جانب سے جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ پابندی کا سامنا کرنے والے کھلاڑی کی سزا کی مدت ختم ہونے سے پہلے مقامی کرکٹ میں واپس آنے کے فیصلے پر آئی سی سی کے اینٹی کرپشن بورڈ کے سربراہ سر رونی فلینگن اور متعلقہ نیشنل کرکٹ فیڈریشنز کا اتفاق کرنا ضروری ہو گا اور آئی سی سی کا بورڈ اس فیصلے کی توثیق کرے گا۔

اس ترمیم شدہ کوڈ سے پاکستان کے تیز رفتار بولر محمد عامر کی ڈومیسٹک کرکٹ میں واپسی کا امکان بڑھ گیا ہے۔

فرانسیسی خبررساں ادارے اے ایف پی کے مطابق محمد عامر آئندہ ماہ فروری تک ڈومیسٹک کرکٹ کھیلنے لگیں گے۔

گذشتہ برس پاکستان کرکٹ بورڈ نے آئی سی سی سے مطالبہ کیا تھا کہ وہ عامر پر پابندی کی شرائط میں نرمی کرے کیونکہ انھوں نے میچ فکسنگ کے الزامات کو تسلیم کرتے ہوئے اپنی بحالی کی مدت پوری کر لی ہے۔

2010 میں پاکستان ٹیم کے انگلینڈ کے دورے کے دوران عامر کو سلمان بٹ اور محمد آصف کے ساتھ سپاٹ فکسنگ میں ملوث پایا گیا تھا۔

عامر پر پانچ سال کی پابندی عائد کی گئی تھی، سلمان بٹ پر دس سال کی جس میں پانچ سال کی معطل سزا شامل تھی، اور محمد آصف پر سات سال کی، جس میں دو سال کی سزا معطل تھی۔

ان تینوں کھلاڑیوں کو برطانیہ میں قید کی سزا بھی بھگتنا پڑی تھی۔

آئی سی سی کے چیئرمین نارائن سوامی سری نواسن نے، جو خود بھی بھارت میں فکسنگ سکینڈل میں ملوث رہے ہیں، کہا ہے کہ آئی سی سی کوڈ میں ترامیم خاصی جامع ہیں اور گذشتہ پانچ برسوں میں پیش آنے والے تجربات اور مشاہدات کی روشنی میں کی گئی ہیں۔

کراچی سے نامہ نگار عبد الرشید شکور کے مطابق پاکستان کرکٹ بورڈ کافی عرصے سے فاسٹ بولر محمد عامر پر عائد پابندی کی مدت میں کمی کے لیے کوشاں رہا ہے، تاہم آئی سی سی نے اس سلسلے میں ہمیشہ یہی موقف اختیار کیا کہ یہ واپسی اسی وقت ممکن ہوسکتی ہے جب آئی سی سی کے اینٹی کرپشن کوڈ میں ترمیم ہو۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے ترجمان نے بی بی سی کو بتایا کہ اس ترمیم کے نتیجے میں پاکستان کرکٹ بورڈ باضابطہ طور پر آئی سی سی سے محمد عامر کی پابندی میں نرمی اور انھیں ڈومیسٹک کرکٹ کھیلنے کی اجازت حاصل کرنے کے لیے درخواست کرے گا۔

محمد عامر پر پابندی آئندہ سال اگست میں ختم ہو رہی ہے ۔ پاکستان کرکٹ بورڈ کی خواہش ہے کہ جب یہ پابندی ختم ہو تو محمد عامر بین الاقوامی کرکٹ کھیلنے کے لیے تیار ہوں۔

یاد رہے کہ 2010 میں اسپاٹ فکسنگ کی پاداش میں محمد عامر سلمان بٹ اور محمد آصف کو پابندی کا سامنا کرنا پڑا تھا، تاہم آئی سی سی کے اینٹی کرپشن ٹریبیونل کے سربراہ نے اس وقت بھی یہ کہا تھا کہ اس قانون میں نظرِ ثانی کی ضرورت ہے۔

اسی بارے میں