’جدید کرکٹ میں فالو آن کا رواج کم ہوتا جا رہا ہے‘

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption پاکستان نے تیسرے دن کھیل کا اختتام 15 رنز پر کیا۔ اس طرح پہلی اننگز میں حاصل ہونے والی 304 رنز کی برتری بڑھ کر 319 رنز ہو چکی ہے

نیوزی لینڈ کی ٹیم ابوظہبی ٹیسٹ کی پہلی اننگز میں 262 رنز بناکر آؤٹ ہوگئی، تاہم مصباح الحق نے مسلسل دوسرے ٹیسٹ میں مخالف ٹیم کو فالوآن کروانے کی بجائے خود دوسری بار بیٹنگ کرنے کو ترجیح دی۔

گذشتہ ہفتے اسی میدان پر آسٹریلوی ٹیم کو فالو آن کروایا جا سکتا تھا لیکن مصباح نے خود بیٹنگ کر کے آسٹریلیا کو ایک بڑی شکست سے دوچار کر دیا۔

جدید کرکٹ میں فالو آن کا رواج گھٹتا جا رہا ہے اور اب ٹیمیں اپنے بولروں کو آرام دینے کی غرض سے دوسری بار بیٹنگ کرنا زیادہ پسند کرتی ہیں۔

پاکستان نے تیسرے دن کھیل کا اختتام 15 رنز پر کیا۔ اس طرح پہلی اننگز میں حاصل ہونے والی 304 رنز کی برتری بڑھ کر 319 رنز ہو چکی ہے۔

احمد شہزاد کی جگہ اننگز کا آغاز کرنے والے اظہرعلی نو اور محمد حفیظ پانچ رنز بنا کر کریز پر موجود تھے۔

آج نیوزی لینڈ کی اننگز کی خاص بات افتتاحی بلے باز ٹام لیتھم کی پہلی ٹیسٹ سنچری تھی۔ نیوزی لینڈ کی جانب سے ٹیسٹ میچوں میں باپ بیٹے کی سنچری کی یہ تیسری مثال ہے۔

ٹام لیتھم کے والد راڈ لیتھم نے چار ٹیسٹ میچ کھیل کر ایک سنچری سکور کی تھی۔

ان سے قبل والٹر ہیڈلی، ان کے بیٹے سر رچرڈ ہیڈلی اور کین ردرفرڈ اور ان کے بیٹے ہمیش ردرفرڈ ایسا کر چکے ہیں۔

پاکستانی بولنگ میں قابل ذکر کارکردگی راحت علی کی رہی جنھوں نے چار وکٹیں حاصل کیں جبکہ ذوالفقاربابر نے تین کھلاڑی آؤٹ کیے۔ ایک موقعے پر راحت علی نے آٹھ اووروں میں صرف ایک رن دیا تھا اور وہ بھی نو بال کا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption نیوزی لینڈ کی اننگز کی خاص بات ٹام لیتھم کی پہلی ٹیسٹ سنچری تھی

نیوزی لینڈ کے بولروں کو پاکستان کی تین وکٹیں حاصل کرنے کے لیے طویل صبرآزما انتظار کرنا پڑا تھا لیکن پاکستانی بولروں کو نیوزی لینڈ کی ابتدائی تین وکٹیں جلد مل گئیں۔

کپتان برینڈن میک کلم 18 رنز بناکر ذوالفقار بابر کی گیند پر سلپ میں یونس خان کے ہاتھوں کیچ ہوئے۔

کین ولیم سن اس اعتبار سے بدقسمت رہے کہ تین کے سکور پر راحت علی کی گیند ان کے بلے سے لگی اور آہستگی سے وکٹوں میں جا لگی۔

راس ٹیلر کا آؤٹ ہونا نیوزی لینڈ کے لیے دھچکہ تھا جو کھانے کے وقفے سے قبل بغیر کوئی سکور بنائے ذوالفقاربابر کی گیند پر اسد شفیق کے عمدہ کیچ پر آؤٹ ہوئے۔

ون ڈے انٹرنیشنل کی تیز ترین سنچری بنانے والے کورے اینڈرسن اور ٹام لیتھم نے سکور میں 83 رنز کا اضافہ کیا۔

ٹام لیتھم کی قسمت نے بھی ان کا ساتھ دیا۔ پانچ کےسکور پر ذوالفقار بابر کی گیند پر شارٹ لیگ پر اظہر علی ان کا کیچ لینے میں ناکام رہے۔

32 کے سکور پر محمد حفیظ کی گیند پر وکٹ کیپر سرفراز احمد کیچ نہ لے سکے۔گیند ان کے گلوز سے لگ کر اسد شفیق کی طرف گئی اور وہ بھی کیچ نہ لے سکے۔

پاکستان نے ان دو کیچوں کے علاوہ دونوں ریویو بھی ضائع کردیے۔ دوسرے سیشن میں پاکستان کو دو وکٹیں ملیں۔

کورے اینڈرسن آٹھ چوکوں کی مدد سے 48 رنز بناکر راحت علی کی گیند پر بولڈ ہوگئے۔گیند بلے کا کنارہ لے کر وکٹوں پر لگی۔

جیمز نیشم 11 رنز کے سکور پر محمد حفیظ کی گیند پر سرفراز احمد کے ہاتھوں سٹمپ ہوئے تو نیوزی لینڈ کا سکور پانچ وکٹوں پر 150 رنز تھا۔

لیتھم نے اپنی سنچری 212 گیندوں کا سامنا کرتے ہوئے ذوالفقاربابر کو چوکا لگاکر مکمل کی۔

وہ 103 رنز بناکر راحت علی کی گیند پر ایل بی ڈبلیو ہوئے جنھوں نے چوتھی کامیابی ساؤدی کو سرفراز احمد کے ہاتھوں کیچ کرا کر حاصل کی۔ ایک گیند پہلے ہی سرفراز احمد نے ساؤدی کا کیچ ڈراپ کیا تھا۔

بی جے واٹلنگ اور ساؤدی آسانی سے پاکستانی بولروں کے ہاتھ آنے کے لیے تیار نہ تھے تاہم 43 رنز کی یہ شراکت ٹوٹی اور دونوں بیٹسمین چار گیندوں کے فرق سے اوپر تلے آؤٹ ہو گئے۔

اسی بارے میں