محمد حفیظ کے بولنگ ایکشن پر اعتراض

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption محمد حفیظ کا بولنگ ایکشن 2005 میں رپورٹ کیاگیا تھا جس کے بعد انھیں ایکشن کی درستگی کے عمل سے گزرنا پڑا تھا

ابوظہبی میں پاکستان اور نیوزی لینڈ کے مابین پہلے میچ کے اختتام پر امپائروں نے پاکستانی آل راؤنڈر محمد حفیظ کے بولنگ ایکشن کو مشکوک قرار دیتے ہوئے اسے آئی سی سی کو رپورٹ کر دیا ہے۔

انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کے اعلان کے مطابق میچ آفیشلز نے محمد حفیظ کے مشکوک بولنگ ایکشن کو رپورٹ کیا ہے۔ اعتراضات سے متعلق رپورٹ پاکستانی ٹیم کے مینجر معین خان کے حوالے کر دی گئی ہے۔

محمد حفیظ سے پہلے آف سپنر سعید اجمل کے بولنگ پر پابندی عائد کی جا چکی ہے۔

امپائروں کی طرف سے محمد حفیظ کے بولنگ ایکشن پر اعتراضات کے بعد محمد حفیظ کو تین ہفتوں کے اندر آئی سی سی کی منظور شدہ لیبارٹری سے اپنے ایکشن کا معائنہ کروانا ہو گا۔ وہ اس دوران اپنی بولنگ جاری رکھ سکتے ہیں۔

حال ہی میں ختم ہونے والے چیمپیئنز لیگ ٹی ٹوئنٹی میں بھی محمد حفیظ کے بولنگ ایکشن کے بارے میں امپائروں نے رپورٹ کرتے ہوئے کہا تھا کہ وہ کھیل کے قوانین کے مطابق نہیں ہے۔

جنوری2005 میں آسٹریلیا کھیلے جانے والی سہ فریقی ون ڈے سیریز میں ویسٹ انڈیز کے خلاف برزبین میں کھیلے گئے میچ میں امپائروں روڈی کرٹزن اور پیٹر پارکر نے محمد حفیظ کے بولنگ ایکشن کے مشکوک ہونے کے بارے میں آئی سی سی کو رپورٹ کی تھی جس کے بعد انھیں بولنگ ایکشن کی درستگی کے عمل سے گزرنا پڑا تھا۔

حالیہ دنوں میں آئی سی سی نے مشکوک بولنگ ایکشن کے معاملے میں انتہائی سخت موقف اختیار کر رکھا ہے اور متعدد آف اسپنر اس کی زد میں آ چکے ہیں جن میں پاکستان کے سعید اجمل قابل ذکر ہیں۔