شارجہ میں نیوزی لینڈ کی اننگز سے فتح، سیریز برابر

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption اسد شفیق نے مشکل حالات میں عمدہ بلے بازی کرتے ہوئے نہ صرف سنچری بلکہ ٹیسٹ کرکٹ میں اپنا بہترین سکور بھی بنایا

شارجہ میں کھیلے جانے والے تیسرے ٹیسٹ میچ میں نیوزی لینڈ نے پاکستان کو ایک اننگز اور 80 رنز سے شکست دے دی ہے۔

نیوزی لینڈ کی اس فتح کے نتیجے میں تین ٹیسٹ میچوں کی سیریز ایک ایک سے برابر رہی ہے۔

میچ کا تفصیلی سکور کارڈ

میچ کے چوتھے دن پاکستان کو نیوزی لینڈ کی پہلی اننگز کی برتری ختم کرنے کے لیے 339 رنز درکار تھے لیکن اس کی پوری ٹیم 259 رنز بنا کر آؤٹ ہوگئی۔

دوسری اننگز میں اسد شفیق کے علاوہ کوئی بھی پاکستانی بلے باز جم کر نہ کھیل سکا۔ اسد نے مشکل حالات میں عمدہ بلے بازی کرتے ہوئے ٹیسٹ کرکٹ میں اپنی پانچویں سنچری بنائی۔

وہ اپنے کریئر کا بہترین ٹیسٹ سکور بنانے کے بعد 137 رنز کی اننگز کھیل کر بولٹ کی چوتھی وکٹ بنے۔ انھوں نے راحت علی کے ساتھ مل کر نویں وکٹ کے لیے 78 رنز کی شراکت قائم کی۔

دوسری اننگز میں پاکستان کو آغاز سے ہی مشکلات کا سامنا رہا اور 30 کے مجموعی سکور پر اس کے تین کھلاڑی آؤٹ ہوگئے۔

ان فارم بلے باز یونس خان اس اننگز میں بھی ناکام رہے اور بغیر کوئی رن بنائے ایل بی ڈبلیو ہوئے۔ یونس نے اس اننگز میں بھی امپائر کے فیصلے کے خلاف ریویو لیا لیکن فیلڈ امپائر کا فیصلہ برقرار رہا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption کپتان مصباح الحق 12 رنز بنا سکے

کھانے کے وقفے کے بعد بھی پاکستانی وکٹیں گرنے کا سلسلہ جاری رہا اور کوئی بھی قابلِ ذکر شراکت قائم نہ ہو سکی۔

پاکستان کی اننگز میں اسد شفیق کے علاوہ سرفراز احمد 37 رنز بنا کر نمایاں بلے باز رہے۔

نیوزی لینڈ کی جانب سے دوسری اننگز میں ٹرینٹ بولٹ چار وکٹوں کے ساتھ سب سے کامیاب بولر رہے جبکہ پہلی اننگز میں سات وکٹیں لینے والے مارک کریگ نے تین وکٹیں لیں۔

اس سے قبل دن کے ابتدائی سیشن میں نیوزی لینڈ کی ٹیم پہلی اننگز میں 690 رنز بنا کر آؤٹ ہوئی اور یوں اسے پاکستان پر پہلی اننگز میں 331 رنز کی برتری ملی تھی۔

اتوار کو گرنے والی وکٹوں میں سے دو محمد حفیظ اور دو یاسر شاہ نے حاصل کیں۔ اس اننگز میں یاسر شاہ کی وکٹوں کی تعداد چار رہی جبکہ فاسٹ بولر راحت علی نے بھی اتنی ہی وکٹیں لیں۔

شارجہ میں کھیلنے جانے والے اس میچ میں پاکستانی کپتان مصباح الحق نے ٹاس جیت کر پہلے کھیلنے کا فیصلہ کیا تھا۔

ابوظہبی میں سیریز کا پہلا ٹیسٹ میچ پاکستان نے 248 رنز سے جیتا تھا جبکہ دبئی میں کھیلا گیا دوسرا میچ دلچسپ اور سنسنی خیز مقابلے کے بعد بےنتیجہ رہا تھا۔

اسی بارے میں