یونس کی چھ سال میں پہلی سنچری لیکن سیریز برابر

تصویر کے کاپی رائٹ AFP

کہنے کو یہ پاکستان کی ہوم سیریز ہے لیکن حقیقت یہ ہے کہ وہ مکمل طور پر براڈ کاسٹرز کے رحم وکرم پر۔

اگر ایسا نہ ہوتا تو سانحۂ پشاور کے اگلے ہی دن جب سرکاری سطح پر سوگ منایا جارہا تھا پاکستان کرکٹ بورڈ چوتھا ون ڈے کبھی نہ کھیلتا۔

آخر فلپ ہیوز کی موت پر بھی تو شارجہ ٹیسٹ کے دوسرے دن کا کھیل معطل کیا گیا تھا۔

نیوزی لینڈ کو اس دورے میں حساب بے باق کرنا خوب راس آیا ہے۔

پہلے اس نے ٹیسٹ سیریز ایک ایک سے برابر کی پھر ٹی ٹوئنٹی سیریز میں پاکستان کی برتری ختم کی اور اب دوسری مرتبہ اس نے ون ڈے سیریز میں پاکستانی برتری کا خاتمہ کرکے سیریز کا فیصلہ پانچویں ون ڈے پر چھوڑدیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption پاکستانی ٹیم نے میچ سے قبل دو منٹ کی خاموشی اختیار کی

ابوظہبی کے اس چوتھے ون ڈے میں کپتان ولیم سن کی شاندار سنچری نے نیوزی لینڈ کو اس سیریز کا سب سے بڑا اسکور دو سو ننانوے رنز بنانے کا موقع فراہم کیا۔

وہ کسی بھی بولر کو خاطر میں نہ لائے لیکن سہیل تنویر کی غیرموثر بولنگ تختہ مشق بنی جنہوں نے دس اوورز میں 75 رنز دے ڈالے۔ نہ جانے ان کے پاس ایسی کیا گیدڑ سنگھی ہے کہ خراب سے خراب بولنگ بھی انہیں ٹیم سے باہر نہیں ہونے دیتی۔

پاکستانی اننگز میں یونس خان نے سنچری بنائی جو چھ سال کے طویل اور صبرآزما انتظار کے بعد ان کی پہلی سنچری تھی لیکن ان کی یہ اننگز میچ وننگ نہ بن سکی۔

احمد شہزاد نے اننگز کے پہلے ہی اوور میں وکٹ گنوائی ۔ آؤٹ آف فارم اسد شفیق کی جگہ لینے والے ناصرجمشید نے ایک بار پھر بڑی اننگز سے قبل ہی وکٹ کھوئی اور پھر ویٹوری کی اسپن نے محمد حفیظ اور حارث سہیل کو پویلین کی راہ دکھائی تو پاکستان کا اسکور صرف نواسی رنز تھا۔

یونس خان اور عمرا کمل نے چھ رنز فی اوور کی اوسط سے نوے رنز کی شراکت قائم کی تاہم درکار رن ریٹ نو رنز تک جا پہنچا تھا۔

عمراکمل کے رن آؤٹ ہونے کے بعد کپتان شاہد آفریدی نے ایک بار پھر جوش کے ساتھ ساتھ ہوش کا مظاہرہ کرتے ہوئے49 رنز کی ذمہ دارانہ اننگز کھیلی جس میں پانچ چوکے اور دو چھکے شامل تھے۔

وہ جب تک کریز پر رہے جیت کی آس برقرار تھی۔

یونس خان کے ساتھ ان کی 66 رنز کی اہم شراکت ختم ہوئی تو میچ کا توازن ایک بار پھر نیوزی لینڈ کی طرف ہوتا محسوس ہوا اور جب یونس خان اور سرفراز احمد کی وکٹیں صرف آٹھ گیندوں پر گریں تو نتیجہ اپنا رخ متعین کر چکا تھا۔

اسی بارے میں