الیسٹر کُک کو کپتانی سے ہٹا دینا چاہیے: ناصر حسین

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption انگلینڈ سری لنکا کے خلاف حال ہی میں کھیلی جانے والی ایک روزہ میچوں کی سیریز ہارا ہے

انگلینڈ کے سابق کپتان ناصر حسین نے کہا ہے کہ ایلسٹر کُک کو عالمی کپ سے قبل کپتانی سے ہٹانے کے لیے اب بھی کافی وقت ہے۔

ناصر حسین نے روزنامہ ’ڈیلی مرر‘ میں لکھا ’ ایلسٹر کُک کو کپتانی سے ہٹانا اتنا بڑا جُوا نہیں ہو گا بلکہ ایسا چند ماہ قبل ہی ہو جانا چاہیے تھا۔‘

انگلینڈ کے سابق کپتان کے مطابق ’ٹیم میں متحرک کھلاڑیوں کو شامل کیے جانے کا وقت دیا جانا چاہیے۔‘

خیال رہے کہ انگلینڈ سری لنکا کے خلاف حال ہی میں کھیلی جانے والی ایک روزہ میچوں کی سیریز ہارا ہے۔

ایلسٹر کُک کی قیادت میں کھیلی جانے والی ایک روزہ میچوں کی سیریز میں یہ انگلینڈ کی مسلسل چوتھی ہار تھی جس میں انھوں نے چھ میچوں میں صرف 119 رنز بنائے۔

بائیں ہاتھ سے کھیلنے والے اوپنر ایلسٹر کُک 25 دسمبر کو 30 برس کے ہو جائیں گے۔

ایلسٹر کُک نے گذشتہ 22 ایک روزہ میچوں میں نصف سنچری نہیں بنائی ہے۔

خیال رہے کہ انگلینڈ 14 فروری سنہ 2015 کو آسٹریلیا کے خلاف عالمی کپ کا پہلا میچ کھیلے گا۔

عالمی کپ کے اس میچ سے پہلے انگلینڈ نے زیادہ سے زیادہ پانچ ایک روزہ میچ کھیلنے ہیں۔

ایلسٹر کُک کو رواں ماہ کے آغاز میں انگلینڈ کے عالمی کپ کے لیے 30 ممکنہ کھلاڑیوں میں شامل کرتے ہوئے انھیں کپتان مقرر کیا گیا تھا۔

خیال رہے کہ سات جنوری سنہ 2015 تک یہ سکواڈ 15 کھلاڑی تک محدود کرنا لازمی ہے۔

دوسری جانب انگلینڈ کے ہیڈ کوچ پیٹر مورز نے کہا ہے اس بات کی کوئی ضمانت نہیں دی جا سکتی کہ ایلسٹر کک ہی عالمی کپ میں انگلینڈ کی کرکٹ ٹیم کے کپتان ہوں گے۔

دوسری جانب انگلینڈ اور ویلز کرکٹ بورڈ کے مینیجنگ ڈائریکٹر پال ڈاؤن ٹن نے کہا ہے اگر ایلسٹر کک کو ٹیم کی قیادت سے ہٹایا گیا تو یہ ان کے لیے حیران کن ہو گا۔

اسی بارے میں