فِل نیول کی 37 سال میں پہلی کافی

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption چند روز قبل تک نیول نے کبھی کافی خود نہیں بنائی تھی۔

فٹ بالروں کو ملنے والی بھاری تنخواہوں اور ان کی شاہانہ زندگی کے بارے میں تو آپ نے سنا ہی ہو گا۔

ان کے بارے میں اکثر کہا جاتا ہے کہ وہ پانی کا گلاس بھی خود اٹھا کر نہیں پیتے۔

انگلینڈ اور مانچسٹر یونائیٹڈ کے سابق فٹ بالر فل نیول شاید پانی کا گلاس تو خود ہی بھر لیتے ہوں گے مگر ایک حالیہ انٹرویو میں نیول نے اس بات کا اعتراف کیا کہ چند روز قبل تک انھوں نے کبھی کافی خود نہیں بنائی تھی اور نہ ہی انہیں کافی بنانی آتی تھی۔

بی بی سی کے ایک پروگرام میں بات کرتے ہوے 37 سالہ فٹ بالر کا کہنا تھا کہ کچھ دن قبل ان کے گھر آئے ہوئے ایک اخبار کے رپورٹر نے جب ان سے کافی مانگی تو ان کو اپنی بیوی کو فون کر کے کافی بنانے کا طریقہ پوچھنا پڑا۔

تصویر کے کاپی رائٹ a

فل نیول سے جب اس بارے میں مزید سوال کرنے کی کوشش کی گئی تو انھوں نے مذاق کرتے ہوے کہا کہ ’میں نے ایک غیر معمولی زندگی گزاری ہے، بہتر ہوگا اگر ہم فٹ بال کے بارے میں بات کریں۔‘

یاد رہے کہ ایک حالیہ سروے کے مطابق پریمیئر لیگ میں کھیلنے وال فٹبالروں کا تنخواہیں یورپ کی دوسری لیگز سے زیادہ ہیں۔ کھلاڑیوں کی ایک ہفتے کی اوسط تنخوا تقریباً 50 لاکھ روپے ہے۔

ناقدین کی جانب سے فٹ بالروں کی تنخواہوں کو اکثر تنقید کا نشانہ بنایا جاتا ہے کیونکہ ان کے خیال میں فٹ بالر حقیقی دنیا سے بالکل ناواقف ہیں۔

اسی بارے میں