سعید اجمل بائیومکینک تجزیے کے لیے تیار

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption سعید اجمل کو مشکوک بولنگ ایکشن کی وجہ سے آئی سی سی کی جانب سے معطلی کا سامنا ہے

پاکستان کے آف اسپنر سعید اجمل نے پاکستان کرکٹ بورڈ کو مطلع کردیا ہے کہ وہ آئی سی سی کے باضابطہ بائیومکینک تجزیے کے لیے تیار ہیں جس کے بعد پاکستان کرکٹ بورڈ نے اس ضمن میں آئی سی سی سے رابطہ کیا ہے۔

یاد رہے کہ سعید اجمل کو مشکوک بولنگ ایکشن کی وجہ سے آئی سی سی کی جانب سے معطلی کا سامنا ہے اور پاکستانی کرکٹ ٹیم ورلڈ کپ میں ان کی خدمات سے محروم رہے گی۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیرمین شہریارخان نے بی بی سی اردو سروس کو دیے گئے انٹرویو میں کہا کہ سعید اجمل نے چند روز قبل ان سے ملاقات میں اس خواہش کا اظہار کیا کہ وہ آئی سی سی کے تحت ہونے والے بائیو مکنیک تجزیے کے لیے تیار ہیں جس پر کرکٹ بورڈ نے آئی سی سی سے رابطہ کیا ہے اب یہ آئی سی سی کا اختیار ہے کہ وہ سعید اجمل کے بولنگ ایکشن کا بائیومکینک تجزیہ کس لیبارٹری میں کراتی ہے۔

اطلاعات یہ ہیں کہ سعید اجمل بھارتی شہر چنئی کی لیبارٹری میں بائیومکینک تجزیہ کرانے کے لیے تیار نہیں۔

شہریارخان نے کہا کہ اس سے قبل سعید اجمل نے خود یہ کہا تھا کہ وہ ابھی بائیو مکینک تجزیے کے لیے خود کو تیار نہیں سمجھتے لہذا وہ ورلڈ کپ سے دستبردار ہوگئے تھے اور یہ فیصلہ سعید اجمل کا اپنا تھا۔

شہریارخان نے کہا کہ سعید اجمل نے اُس وقت بائیومکینک تجزیہ نہ کرانے کا فیصلہ ثقلین مشتاق محمد اکرم پی سی بی کے چیف ایگزیکٹیو سبحان احمد اور نجم سیٹھی کی موجودگی میں کیا تھا اور اسوقت یہ طے پایا تھا کہ اس بارے میں سعید اجمل کا بیان پہلے میڈیا میں آئے گا تاہم اس سے پہلے پی سی بی چیرمین کا بیان میڈیا میں آگیا جس پر سعید اجمل کچھ مایوس ہوگئے تھےلیکن اب کوئی ناراضی نہیں ہے۔

شہریارخان نے کہا کہ محمد حفیظ کا معاملہ سیدھا سادہ ہے۔ان کے بولنگ ایکشن کا بائیو مکینک تجزیہ اس ماہ کے آخر میں برسبین میں ہوگا اور امید ہے کہ وہ کلیئر ہوجائیں گے کیونکہ اسوقت ان کی کہنی کا خم سولہ ڈگری ہے جو آئی سی سی کی مقررہ حد سے صرف ایک ڈگری زیادہ ہے۔

اسی بارے میں