’یادگار کامیابی پر ون ڈے کا اختتام چاہتا ہوں‘

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption مصباح الحق نے کہا کہ یقیناً ان کی یہ خواہش ہے کہ وہ ون ڈے انٹرنیشنل میں اپنی پہلی سنچری اسکور کریں

پاکستانی کرکٹ ٹیم کے کپتان مصباح الحق کی سب سے بڑی خواہش یہی ہے کہ پاکستانی ٹیم عالمی کپ جیتے اور وہ اپنے آخری ٹورنامنٹ میں یادگار کارکردگی کے ساتھ ون ڈے کرکٹ سے رخصت ہوں۔

مصباح الحق نے پیر کے روز فٹنس ٹیسٹ دینے کے بعد بی بی سی اردو سروس کو دیے گئے انٹرویو میں کہا کہ ورلڈ کپ ان کا آخری ٹورنامنٹ ہے اور وہ پوری کوشش کریں گے کہ اپنی تمام ترصلاحیتوں کو بروئے کار لائیں اور ایک ایسی کارکردگی کے ساتھ ون ڈے سے رخصت ہوں جو انہیں ہمیشہ خوشی اور اطمینان کا احساس دلاتی رہے۔

مصباح الحق نے کہا کہ پاکستانی ٹیم کے کھلاڑیوں میں فاتح بننے کی بھرپور صلاحیت موجود ہے تاہم اس کے لیے انہیں منظم کرکٹ کھیلنی ہوگی۔

مصباح الحق نے واضح کردیا ہے کہ انہیں اپنی فٹنس کے بارے میں کسی بھی قسم کا شک وشبہ نہیں ہے وہ فٹ ہیں اور عالمی کپ میں پاکستانی ٹیم کی قیادت کے لیے پوری طرح تیار ہیں۔

انھوں نے کہا کہ فٹنس ٹیسٹ کی رپورٹ کے مطابق ان کی موجودہ فٹنس گذشتہ فٹنس ٹیسٹ کی رپورٹ سے بھی بہتر ہے۔ اگروہ میچ نہیں کھیلے ہیں تو اس کی وجہ صرف یہ ہے کہ انہیں زیادہ سے زیادہ آرام کا وقت مل جائے تاکہ خطرے کا کم سے کم امکان بھی باقی نہ رہے۔

یاد رہے کہ مصباح الحق نیوزی لینڈ کے خلاف شارجہ میں کھیلے گئے دوسرے ون ڈے میں ہمسٹرنگ کی تکلیف میں مبتلا ہوگئے تھے جس کے سبب وہ سیریز کے باقی تین ون ڈے میچز نہ کھیل پائے۔

مصباح الحق نے کہا کہ وہ ڈاکٹرز کی ہدایت کے مطابق آرام کرنے کے بعد وہ کسی تکلیف کے بغیر رننگ بیٹنگ اور دیگر ٹریننگ کررہے ہیں ۔

ورلڈ کپ کے بعد ون ڈے انٹرنیشنل سے ریٹائرمنٹ کے بارے میں سوال پر مصباح الحق نے کہا کہ ’میں پوری توانائی کے ساتھ ورلڈ کپ کھیل کر محدود اوورز کی کرکٹ سے رخصت ہونا چاہتا ہوں اور یہ فیصلہ میں نے کافی پہلے سوچ کر کرلیا تھا۔‘

وہ پہلے مرحلے میں ون ڈے اور پھر ٹیسٹ کرکٹ کو خیرباد کہیں گے اور یہ بھی انہیں معلوم ہے کہ یہ کب ہوگا۔ وہ سمجھتے ہیں کہ ریٹائرمنٹ درست وقت پر ہونی چاہیے۔

انھوں نے کہا کہ ون ڈے سے ان کی ریٹائرمنٹ کے بعد پاکستان کرکٹ بورڈ کے پاس کافی وقت ہوگا کہ وہ مستقبل کو ذہن میں رکھتے ہوئے ٹیم اور کپتان تیار کرسکے۔

مصباح الحق سے جب پوچھا گیا کہ ون ڈے انٹرنیشنل میں آپ کے کریئر کا سب سے اہم واقعہ کونسا رہا تو انھوں نے 2013 میں جنوبی افریقہ میں پاکستانی ٹیم کی ون ڈے سیریز کی جیت کو سب سے قابل ذکر کارکردگی قرار دیا کہ یہ پہلی ایشیائی ٹیم تھی جس نے جنوبی افریقی سرزمین پر ون ڈے سیریز جیتی۔

مصباح الحق نے کہا کہ یقیناً ان کی یہ خواہش ہے کہ وہ ون ڈے انٹرنیشنل میں اپنی پہلی سنچری اسکور کریں لیکن انھوں نے کبھی بھی سنچری کے بارے میں اس طرح نہیں سوچا کہ بس یہ ہوجائے اور ٹیم کے کام نہ آئے۔ وہ اس بات پر یقین رکھتے ہیں کہ آپ کی کوئی بھی ایسی اننگز جو ٹیم کے کام آئے وہ سنچری سے زیادہ اہم ہوتی ہے۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ مصباح الحق نے ون ڈے انٹرنیشنل میں 37 نصف سنچریوں کی مدد سے 4669 رنز بنائے ہیں جو دنیا کے کسی بھی بیٹسمین کے بغیر سنچری کے سب سے زیادہ ون ڈے رنز ہیں۔

اسی بارے میں