ٹیسٹ ٹیم کو اب بھی مصباح کی ضرورت ہے، شہریارخان

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption مصباح الحق کی کپتانی میں پاکستان سب سے زیادہ ٹسیٹ جیتا ہے

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیرمین شہریارخان کا کہنا ہے کہ پاکستان کو ٹیسٹ کرکٹ میں اب بھی مصباح الحق کی ضرورت ہے اور خوشی کی بات یہ ہے کہ وہ عالمی کپ کے بعد ون ڈے سے ریٹائر ہونے کے باوجود ٹیسٹ کرکٹ کے لیے دستیاب ہوں گے۔

ورلڈ کپ کے بعد پاکستانی کرکٹ ٹیم کو بنگلہ دیش اور سری لنکا کا دورہ کرنا ہے جبکہ سال کے آخر میں اسے انگلینڈ اور بھارت کی میزبانی بھی کرنی ہے۔

شہریاخان نے مصباح الحق کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس میں کہا کہ انگلینڈ اور بھارت جیسی مضبوط ٹیموں کے خلاف پاکستانی ٹیم کو اپنے استحکام کے نقطہ نظر سے مصباح الحق کی ضرورت ہوگی۔

واضح رہے کہ مصباح الحق ٹیسٹ کرکٹ میں پاکستان کے سب سے کامیاب کپتان ہیں جن کی قیادت میں پندرہ ٹیسٹ میچز جیتے گئے ہیں۔

شہر یار خان نے کہا کہ مصباح الحق کا ون ڈے سے ریٹائرمنٹ کا فیصلہ ان کا اپنا ہے جس کی پاکستان کرکٹ بورڈ قدر کرتا ہے ۔

بورڈ کسی بھی کھلاڑی پر ریٹائرمنٹ کے لیے دباؤ نہیں ڈال رہا۔ مصباح الحق نے مشکل حالات میں ٹیم کی قیادت سنبھالی اور اس حقیقت کے باوجود کہ پاکستانی ٹیم ہوم سیریز نہیں کھیل رہی مصباح الحق کی وجہ سے ٹیم نے ملک سے باہر بھی غیر معمولی کارکردگی کا مظاہرہ کیا اور کئی اہم کامیابیاں حاصل کیں جن میں آسٹریلیا کے خلاف حالیہ کامیابیاں قابل ذکر ہیں۔

شہر یار خان نے کہا کہ مستقبل کے ون ڈے کپتان کی تقرری میں مصباح الحق کے مشورے کو بھی اہمیت حاصل ہوگی۔

اس موقع پر مصباح الحق نے اس تاثر کو غلط قرار دیا کہ انہیں ورلڈ کپ کے بعد ٹیم سے ہٹائے جانے کا خدشہ تھا اسی لیے انھوں نے ریٹائرمنٹ کا اعلان کردیا۔

مصباح الحق نے کہا کہ انھوں نے ہمسٹرنگ کی تکلیف کے پیش نظر ورلڈ کپ کے بعد ون ڈے کو خیرباد کہنے کا فیصلہ نہیں کیا ہے۔ وہ مثبت سوچ کے ساتھ ورلڈ کپ میں جائیں گے۔

انھوں نے کہا کہ ٹیم میں اس وقت متعدد کھلاڑی ایسے موجود ہیں جو ان کی ریٹائرمنٹ کے بعد ٹیم کو آگے لے جاسکتے ہیں۔ انھوں نے مستقبل کے کپتان کے بارے میں اپنی رائے کھل کر کرکٹ بورڈ کو بتادی ہے لیکن فی الحال نام لینا مناسب نہیں ہے۔

اسی بارے میں