ورلڈ کپ فائنل ٹائی ہونے کی صورت میں فیصلہ سپر اوور کے ذریعے

تصویر کے کاپی رائٹ THINKSTOCK
Image caption آئی سی سی سست اوور کرانے کے حوالے سے بھی بے حد سنجیدہ ہے

انٹرنیشنل کرکٹ کونسل نے فیصلہ کیا ہے کہ آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ میں ہونے والے کرکٹ ورلڈ کپ کا فائنل اگر ٹائی پر ختم ہوتا ہے تو فاتح کا فیصلہ ’سپر اوور‘ سے ہوگا۔

دبئی میں جمعرات کو آئی سی سی کے اجلاس میں یہ فیصلہ ہوا۔

آئی سی سی نے گزشتہ ورلڈ کپ میں سپر اوور کی تجویز ہٹا دی تھی۔

ورلڈ کپ کرکٹ کی میزبانی آسٹریلیا اور نیوزی مشترکہ طور پر کر رہے ہیں جو 14 فروری سے 29 مارچ تک چلے گا۔

کیا ہے سپر اوور؟

اگر ورلڈ کپ فائنل ٹائی ہو جاتا ہے تو فاتح کا فیصلہ سپر اوور کے ذریعے ہو گا۔

سپر اوور کے لیے ہر ٹیم اپنے تین بلے بازوں کو نامزد کرے گی۔ اور مخالف ٹیم چھ گیندوں کے ’سپر اوور‘ کے لیے اپنے ایک بولر کو منتخب کرے گی۔

اگر اوور مکمل ہونے سے پہلے ٹیم دو وکٹ گنوا دیتی ہے تو وہ میچ ہار جائے گی۔

لیکن اگر ایسا نہیں ہوتا ہے تو اس ایک اوور میں سب سے زیادہ رن بنانے والی ٹیم فاتح ہوگی۔

اگر اس کے بعد بھی مقابلہ براب ہی رہتا ہے تو پوری اننگز یا اس سپر اوور میں سب سے زیادہ چھکے مارنے والی ٹیم کو فاتح قرار دے دیا جائے گا۔

اگر پھر بھی مقابلہ ٹائی رہتا ہے تو دونوں اننگز میں سب سے زیادہ چوکے مارنے والی ٹیم کو فاتح قرار دے دیا جائے گا۔

سست اوور

آئی سی سی سست اوور کرانے کے حوالے سے بھی بے حد سنجیدہ ہے۔

آئی سی سی نے بیان میں کہا ہے ’اگر ٹورنامنٹ میں کوئی ٹیم سست رفتاری سے اوور کراتی ہے تو اس ٹیم کے کپتان پر ایک میچ کی پابندی عائد کر دی جائے گی۔‘

اسی بارے میں