پاکستان کو دوسرے میچ میں بھی شکست، سیریز نیوزی لینڈ کے نام

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption پاکستانی اوپنروں نے ٹیم کو 111 رنز کا عمدہ آغاز فراہم کیا

نیوزی لینڈ نے دو میچوں کی سیریز کے آخری ایک روزہ کرکٹ میچ میں پاکستان کو 119 رنز سے شکست دے کر سیریز دو صفر سے جیت لی ہے۔

نیپیئر میں کھیلے جانے والے میچ میں میزبان ٹیم نے پاکستان کو 370 رنز کا بڑا ہدف دیا تھا۔

اوپنروں کی جانب سے 111 رنز کے عمدہ آغاز کے باوجود پاکستانی ٹیم یہ ہدف حاصل نہ کر سکی اور 44ویں اوور میں 250 رنز بنا کر آؤٹ ہوگئی۔

اگر ایسا ورلڈ کپ میں بھی ہوا تو۔۔۔

پاکستان کے لیے محمد حفیظ اور احمد شہزاد نے اننگز کا آغاز کیا اور ذمہ دارانہ انداز میں بلے بازی کرتے ہوئے نصف سنچریاں بنائیں۔

ان دونوں بلے بازوں نے پہلی وکٹ کے لیے 111 رنز کی شراکت قائم کی جس کا خاتمہ نیتھن میک کلم نے احمد شہزاد کو کیچ کروا کر کیا۔ انھوں نے 55 رنز بنائے۔

حفیظ پانچ چوکوں اور تین چھکوں کی مدد سے 86 رنز کی اننگز کھیلنے کے بعد گرانٹ ایلیئٹ کی وکٹ بنے۔

یونس خان، شاہد آفریدی اور عمر اکمل اس میچ میں بڑی اننگز کھیلنے میں ناکام رہے اور سکور میں کسی قابلِ ذکر مجموعے کا اضافہ کیے بغیر پویلین لوٹ گئے۔

لوئر مڈل آرڈر میں حارث سہیل اور سرفراز احمد بھی ٹیم کو مشکلات سے نہ نکال سکے اور صرف 6 اور 13 رنز بنا سکے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption ٹیلر کی سنچری ایک روزہ کرکٹ میں نیوزی لینڈ کی جانب سے بنائی جانے والی سوویں سنچری تھی

نیوزی لینڈ کے لیے ملنے، گرانٹ ایلیئٹ اور نیتھن میک کلم نے دو، دو وکٹیں لی ہیں۔

اس سے قبل منگل کی صبح نیوزی لینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے کھیلنے کا فیصلہ کیا اور مقررہ 50 اوورز میں کین ولیمسن اور راس ٹیلر کی جارحانہ بلے بازی کی بدولت پانچ وکٹوں کے نقصان پر 369 رنز بنا ڈالے۔

پاکستانی بولر اس میچ میں بھی نیوزی لینڈ کے بلے بازوں کو پریشان کرنے میں ناکام رہے ہیں اور کیوی بلے بازوں نے جارحانہ انداز میں وکٹ کے چاروں جانب دلکش سٹروک کھیلے۔

میزبان ٹیم کی جانب سے پہلے گپٹل اور ولیمسن کریز پر جم گئے اور 128 رنز کی شراکت قائم کی۔

پاکستانی کپتان نے اپنے ریگولر بولروں کی ناکامی کے بعد احمد شہزاد کو گیند دی تو انھوں نے گپٹل کو آؤٹ کر کے ٹیم کو بریک تھرو دلوایا۔

گپتل کے جانے کے بعد بھی ولیمسن نے جارحانہ بلے بازی جاری رکھی اور 80 گیندوں پر 13 چوکوں کی مدد سے سنچری مکمل کی۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption کین ولیمسن نے گپٹل کے ساتھ مل کر سنچری شراکت قائم کی

محمد عرفان نے 39ویں اوور میں انھیں 112 کے انفرادی سکور پر آؤٹ کر کے پاکستان کو تیسری کامیابی دلوائی۔

تاہم راس ٹیلر نے دوسرے اینڈ سے دھواں دھار اننگز جاری رکھی اور 13 چوکوں اور دو چھکوں کی مدد سے 70 گیندوں پر 102 رنز بنا ڈالے۔

ان کی اس اننگز کی بدولت نیوزی لینڈ نے اننگز کے آخری دس اوور میں 127 رنز بنائے۔

بلاول بھٹی سب سے مہنگے پاکستانی بولر رہے جنھوں نے دس اوورز میں 93 رنز دیے۔

پاکستان کے ریگولر بولروں میں سے بلاول کے علاوہ احسان عادل نے بھی ساڑھے آٹھ رنز کی فی اوور سے کی اوسط سے رنز دیے۔

دو میچوں کی یہ سیریز ورلڈ کپ 2015 کے آغاز سے قبل دونوں ٹیموں کی آخری سیریز ہے جس کا پہلا میچ نیوزی لینڈ سات وکٹوں سے جیت چکا ہے۔

اسی بارے میں