اجمل پر کچھ نہیں کہہ سکتا، بہت سے اگر مگر ہیں: مصباح

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption مصباح الحق اپنی ٹیم کی صلاحیت پر پراعتماد ہیں

پاکستان کے کپتان مصباح الحق نے اتوار کو کہا ہے کہ وہ اس بارے میں وثوق سے کچھ نہیں کہہ سکتے کہ آیا سعید اجمل ورلڈ کپ میں کھیل سکیں گے یا نہیں۔

یاد رہے کہ سعید اجمل کے ایکشن کو پہلے مشتبہ قرار دیا گیا تھا پھر آئی سی سی نے ان کے ایکشن کو جائز قرار دیا ہے اور انھیں کھیلنے کی اجازت دے دی ہے۔

گذشتہ مہینے جب ٹیم کے لیے حتمی 15 رکنی ٹیم کا اعلان کیا گیا تھا تو انھیں ٹیم میں آئی سی سی کی پابندی کی وجہ سے شامل نہیں کیا گیا تھا۔

37 سالہ سپنر پر پابندی کی وجہ سے پاکستان کو مشکلات کا سامنا رہا ہے اور وہ نیوزی لینڈ میں اپنے چاروں ون ڈے میچ ہار گئی جن میں دو وارم اپ اور دو ون انٹرنیشنل میچ شامل تھے۔ اس سے قبل وہ تین ون ڈے سیریز میں بھی ناکام رہی تھی۔

اب جبکہ آئی سی سی نے اجمل کے ایکشن کو درست قرار دیا ہے تو ان کے ورلڈ کپ میں شامل ہونے کے بارے میں باتیں ہونے لگی ہیں۔

پریس کانفرنس میں اسی سلسلے میں پوچھے جانے والے ایک سوال کے جواب میں کپتان مصباح الحق نے کہا ’کچھ نہیں کہہ سکتے کیونکہ یہاں بہت سے اگر مگر ہیں۔ اصل مشکل یہ ہے کہ انھوں نے ابھی کسی قسم کی کرکٹ نہیں کھیلی ہے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption سعید اجمل کے ایکشن کو پہلے مشتبہ قرار دیا گیا تھا پھر آئی سی سی نے ان کے ایکشن کو جائز قرار دیا ہے

انھوں نے مزید کہا کہ ’ٹیم کا اعلان پہلے ہی ہو چکا ہے۔ دیکھتے ہیں اگلے ہفتے کیا ہوتا ہے۔ میں ابھی اس بارے میں کچھ نہیں کہہ سکتا۔‘

اس سے قبل دسمبر میں اجمل نے کینیا کے خلاف دو میچوں میں حصہ لیا تھا۔

مصباح نے کہا کہ اجمل خود ہی اس پس و پیش میں ہوں گے کیا آیا وہ کھیلنے کے لیے تیار بھی ہیں یا نہیں۔

مصباح نے کہا ’میں یہ کہہ سکتا ہوں کہ وہ بھی اپنے کھیلنے کے بارے میں پراعتماد نہیں ہوں گے کیونکہ اتنے بڑے موقعے کے لیے پہلے سے تیاری ضروری ہے۔‘

دوسری جانب محمد حفیظ کے ورلڈ کپ سے باہر ہوجانے سے پاکستانی بولنگ اور بیٹنگ دونوں کوصدمہ پہنچا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Other
Image caption گذشتہ دنوں پاکستان کو مشکلات کا سامنا رہا ہے اور وہ نیوزی لینڈ میں چار ونڈے میچ ہار گئی ہے

مصباح نے اعتراف کیا ہے کہ ٹیم کی خراب کارکردگی تشویش کا باعث ہے۔

تاہم انھوں نے کہا کہ ’ہر چند کہ ون ڈے میں ہماری ٹیم کا اچھا دور نہیں گزر رہا ہے لیکن میرے خیال میں یہ ٹیم اسے بدلنے کی صلاحیت رکھتی ہے۔‘

انھوں نے مزید کہا: ’میں اس ٹیم کے بارے میں پرجوش ہوں۔ یہ ایک نوجوان ٹیم ہے جس میں چند تجربہ کار کھلاڑی ہیں اور یہ کسی بھی مرحلے پر سب کر حیران کر سکتی ہے۔‘

یاد رہے کہ پاکستان کا پہلا میچ دفاعی چیمپیئن بھارت سے ایڈیلیڈ میں 15 فروری کو ہونے والا ہے۔

اسی بارے میں