ورلڈ کپ: ’پاک بھارت میچ میں جذبات پر قابو رکھنا اہم ہوگا‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption گزرے میچوں کو بھلا کر نئے میچ کے بارے میں سوچنا ہی بہتر ہے: مہندر دھونی

کرکٹ کے 11ویں ورلڈ کپ میں پاکستان اور بھارت کے اہم میچ سے قبل دونوں ٹیموں کے کپتانوں نے کہا ہے کہ اس مقابلے میں اہم چیز جذبات پر قابو رکھنا ہوگی۔

پاکستان اور بھارت اس ورلڈ کپ میں اپنے سفر کا آغاز اتوار کو ایڈیلیڈ میں میچ سے کر رہے ہیں۔

جہاں بھارتی ٹیم کے کپتان اس ٹورنامنٹ میں پاکستان پر فتح کی روایت جاری رکھنے کے لیے پرعزم ہیں وہیں پاکستانی کپتان کا کہنا ہے کہ وہ جیت کر ایک نئی تاریخ رقم کرنا چاہتے ہیں۔

پاکستان آج تک ورلڈ کپ کے کسی میچ میں بھارت کو شکست نہیں دے سکا اور سنیچر کو پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مہندر سنگھ دھونی نے کہا ہے کہ پاکستان اور بھارت کے میچ میں اہم چیز جذبات پر قابو رکھنا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ’ہم کتنا ہی کہہ لیں کہ پاک بھارت دوسرے میچوں کی طرح ایک عام میچ ہے لیکن سچ یہ ہے کہ یہ تھوڑا سا مختلف ضرور ہوتا ہے جسے نارمل رکھنے کی کوشش کرنی پڑتی ہے۔‘

پریس کانفرنس میں اپنی مخصوص بذلہ سنجی کے ساتھ صحافیوں سے بات کرتے ہوئے دھونی نے کہا کہ ’یہ کھیل ہے جس میں ایک ٹیم جیتے گی اور ایک ہارے گی۔ سب سے اہم بات یہ ہوتی ہے کہ آپ کس طرح منصوبہ بندی پر عمل کرتے ہیں۔‘

دھونی نے کہا کہ وہ پاکستان کے خلاف میچ سے ورلڈ کپ کی ابتدا کو ایک بہترین موقع سمجھتے ہیں۔

اس سوال پر کہ کیا بھارتی ٹیم ورلڈ کپ میں پاکستان سے نہ ہارنے کی روایت برقرار رکھے گی، دھونی نے کہا کہ وہ اعداد و شمار پر یقین نہیں رکھتے لیکن ٹیم کی تیاری مکمل ہے اور وہ یہ میچ جیتنے کی بھرپور کوشش کرے گی۔

بھارتی ٹیم کی دورۂ آسٹریلیا میں مایوس کن کارکردگی کے بارے میں سوال پر دھونی نے کہا کہ گزرے میچوں کو بھلا کر نئے میچ کے بارے میں سوچنا ہی بہتر ہے کیونکہ اگر وہ گذشتہ میچوں کا دباؤ خود پر محسوس کرتے تو شاید ڈریسنگ ٹیبل کے نیچے ہوتے۔

مہندر سنگھ دھونی کا کہنا ہے کہ بھارتی ٹیم کو ایک بڑے مجمعے کا دباؤ جھیلنا آتا ہے کیونکہ تمام کھلاڑیوں کو ون ڈے میچوں اور آئی پی ایل کا خاصا تجربہ ہے۔

ادھر پاکستانی کپتان مصباح الحق کا کہنا ہے کہ وہ بھارت کو شکست دے کر ایک نئی تاریخ رقم کرنا چاہتے ہیں۔

انھوں نے کہا کہ پاکستانی ٹیم پر ماضی میں ورلڈ کپ مقابلوں میں بھارت کے ہاتھوں ہونے والی شکستوں کا دباؤ نہیں اور دونوں ٹیمیں ایک دوسرے کو ہرانے کی اہل ہیں۔

مصباح کے مطابق پاکستانی کھلاڑیوں کو اچھی طرح سمجھا دیا گیا ہے کہ اس دباؤ والے میچ میں انھیں جذباتی ہو کر نہیں کھیلنا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ’یقیناً پاکستان اور بھارت کا میچ میں اصل چیز دباؤ ہی ہے۔ بہتر یہی ہے کہ ہم میچ سے لطف اندوز ہوں، ماحول کا مزا لیں، وہاں جائیں اور مثبت انداز میں کھیلیں۔‘

اسی بارے میں