پاکستان کو پانچ ریگولر بولرز کےساتھ کھیلنا چاہیے: وسیم اکرم

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ’ٹیم کو ان لوگوں کے جذبات کے بارے میں سوچنا چاہیے جو میدان میں آتے ہیں اور ملک میں ٹی وی پر اسے دیکھ رہے ہیں‘

پاکستانی کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان وسیم اکرم ورلڈ کپ میں پاکستانی ٹیم کی کارکردگی پر سخت مایوس دکھائی دیتے ہیں اور ان کا کہنا ہے کہ پاکستانی ٹیم کو اگلا میچ ہر حالت میں جیتنا ہوگا ورنہ وہ واپسی کی فلائٹ کے لیے تیار رہے۔

وسیم اکرم ورلڈ کپ کے میچوں کی کمنٹری کے لیے آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ میں موجود ہیں۔

وسیم اکرم کا کہنا ہے کہ زمبابوے کے خلاف میچ اب یا کبھی نہیں والا معاملہ ہے۔

انھوں نے کہا کہ ٹیم کو ان لوگوں کے جذبات کے بارے میں سوچنا چاہیے جو میدان میں آتے ہیں اور ملک میں ٹی وی پر اسے دیکھ رہے ہیں۔

وسیم اکرم نے ٹیم مینیجمنٹ اور کپتان مصباح الحق پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ پانچ ریگولر بولرز کے ساتھ نہ کھیلنا حیران کن ہے۔

انھوں نے کہا کہ وہ کافی دنوں سے یہ بات کہہ رہے ہیں کہ ٹیم کو پانچ ریگولر بولرز کے ساتھ کھیلنا چاہیے کیونکہ ایک بولر کم کرکے آپ اپنی بولنگ کی قوت کو کمزور کر رہے ہیں۔

وسیم اکرم نے کہا کہ ایک فاضل بیٹسمین کھلا کر بھی پاکستانی ٹیم ہدف عبور کرنے میں کامیاب نہیں ہوسکی ہے۔ ’یہ انتہائی خطرناک صورت حال ہے لہٰذا اس حکمت عملی کو فوراً تبدیل کرنے کی ضرورت ہے۔‘

وسیم اکرم نے ناصر جمشید کی سلیکشن پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ محمد حفیظ کے باہر ہوجانے کے بعد ناصرجمشید کو ٹیم میں شامل کیا جانا سمجھ سے باہر تھا۔

انھوں نے کہا ڈومیسٹک کرکٹ میں دوسرے بیٹسمینوں نے ان سے زیادہ اچھی پرفارمنس دی تھی۔ ناصرجمشید انگلینڈ کے خلاف وارم اپ میچ میں کچھ بھی نہ کرسکے اس کے باوجود انھیں ویسٹ انڈیز کے خلاف کھلایا گیا۔

اسی بارے میں