جنوبی افریقہ کی ورلڈ کپ میں ایک اور بڑی فتح

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption ڈیل سٹین نے اننگز کے آغاز میں دو وکٹیں لیں

آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ میں جاری کرکٹ کے11ویں ورلڈ کپ میں منگل کو پول بی میں جنوبی افریقہ نے آئرلینڈ کو 201 رنز سے شکست دے دی ہے۔

آسٹریلوی دارالحکومت کینبرا میں کھیلے جانے والے میچ میں آئرلینڈ کی ٹیم 412 رنز کے بڑے ہدف کے تعاقب میں 45 اوورز میں 210 رنز بنا کر آؤٹ ہوگئی۔

میچ کا تفصیلی سکور کارڈ

جنوبی افریقہ بمقابلہ آئرلینڈ: تصاویر میں

آئرلینڈ کی جانب سے اینڈی بلبرین اور کیون او برائن کے علاوہ کوئی بھی وکٹ پر نہ جم سکا۔

اینڈی بلبرین نے نصف سنچری بنائی جبکہ کیون او برائن 48 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔

ان دونوں نے چھٹی وکٹ کے لیے 81 رنز کی شراکت قائم کی جسے مورکل نے بلبرین کو 58 کے سکور پر آؤٹ کر کے ختم کیا۔

جنوبی افریقہ کے لیے کائل ایبٹ سب سے کامیاب بولر رہے جنھوں نے چار وکٹیں لیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ہاشم آملہ اور فاف ڈوپلیسی نے دوسری وکٹ کے لیے 247 رنز بنائے۔

ان کے علاوہ مورنی مورکل نے تین اور ڈیل سٹین نے دو کھلاریوں کو آؤٹ کیا۔

اس میچ میں امپائرنگ کا معیار خاصا ناقص رہا ہے اور تین مرتبہ تھرڈ امپائر نے گراؤنڈ امپائر کی جانب سے دیے گیے فیصلے کو تبدیل کیا۔

ایک بار پھر 400 رنز

اس سے قبل جنوبی افریقہ نے پہلے کھیلتے ہوئے مقررہ 50 اوورز میں چار وکٹوں کے نقصان پر 411 رنز بنائے جن میں سے 131 رنز آخری دس اوورز میں بنے۔

جنوبی افریقہ وہ واحد ٹیم ہے جس نے لگاتار دو ون ڈے میچوں میں چار سو سے زیادہ رنز بنائے ہیں۔ اس سے قبل ویسٹ انڈیز کے خلاف میچ میں ڈی ویلیئرز کی شاندار اننگز کی بدولت جنوبی افریقہ نے 408 رنز بنائے تھے۔

منگل کو جنوبی افریقہ کے ٹاس جیتنے کے بعد ہاشم آملہ اور کوئنٹن ڈی کاک نے اننگز شروع کی تو مونی نے اپنے دوسرے ہی اوور میں ڈی کاک کو آؤٹ کر دیا، وہ ایک رن ہی بنا پائے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption آملہ ایک روزہ کرکٹ میں سب سے کم میچوں میں 20 سنچریاں بنانے والے بلے باز بن گئے ہیں۔

چھٹے اوور میں ایڈ جوائس نے آملہ کا کیچ چھوڑ کر اپنی ٹیم کو آغاز میں ہی دوسری وکٹ سے محروم کیا۔

تاہم اس کے بعد آملہ اور ڈوپلیسی نے پراعتماد انداز میں بلے بازی کرتے ہوئے سنچریاں بنائیں اور ان دونوں کی شراکت میں 247 رنز بنے۔

جنوبی افریقہ کو تیسرا نقصان 39ویں اوور میں ہوا جب کیون اوبرائن نے ڈوپلیسی کو 109 کے انفرادی سکور پر بولڈ کر دیا۔

ہاشم آملہ نے ایک روزہ کرکٹ میں اپنی 20ویں سنچری بنانے کے بعد 159 رنز کی اننگز کھیل کر آؤٹ ہوئے جو ایک روزہ کرکٹ میں ان کا سب سے بڑا انفرادی سکور بھی ہے۔

وہ ایک روزہ کرکٹ میں سب سے کم میچوں میں 20 سنچریاں بنانے والے بلے باز بھی بن گئے۔ انھوں نے اپنے 111ویں ایک روزہ میچ میں یہ کارنامہ سرانجام دے کر بھارت کے ویراٹ کوہلی کو پیچھے چھوڑ دیا۔

آملہ کی وکٹ میک برائن نے لی جنھوں نے اسی اوور میں ابراہم ڈی ویلیئرز کو آؤٹ کر کے اپنی ٹیم کو چوتھی کامیاب بھی دلوائی۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption روسو نے ایک مرتبہ پھر جارحانہ بلے بازی کی اور دو چھکوں اور چار چوکوں کی مدد سے نصف سنچری بنائی

اس کے بعد ملر اور روسو نے جارحانہ انداز اپنایا اور نو اوورز میں 110 رنز کی شراکت قائم کر کے ٹیم کا سکور 411 تک پہنچا دیا۔

روسو نے 30 گیندوں میں 61 رنز کی جارحانہ اننگز کھیلی جبکہ ملر 46 رنز بنا کر ناٹ آؤٹ رہے۔

اس میچ کے لیے جنوبی افریقہ کی وہی ٹیم میدان میں اتری جس نے گذشتہ میچ میں ویسٹ انڈیز کو 257 رنز کے بڑے فرق سے شکست دی تھی۔

اس وقت پول بی میں جنوبی افریقہ تین میچوں میں چار پوائنٹس کے ساتھ دوسرے اور آئرلینڈ دو میچوں میں چار پوائنٹس کے ساتھ تیسرے نمبر پر ہے۔

آئرلینڈ ان تین ٹیموں میں سے ایک ہے جو ابھی تک عالمی کپ 2015 میں ناقابلِ شکست ہیں۔

اسی بارے میں