مچل سٹارک ون ڈے رینکنگ میں سرفہرست

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption یہ سٹارک کے کریئر میں پہلا موقع ہے کہ وہ آئی سی سی کی عالمی درجہ بندی میں سرفہرست ہیں

ورلڈکپ 2015 میں سب سے زیادہ وکٹیں لینے والے آسٹریلوی بولر مچل سٹارک آئی سی سی کی عالمی درجہ بندی میں پہلے نمبر پر پہنچ گئے ہیں۔

مچل سٹارک نے حال ہی میں ختم ہونے والے ورلڈ کپ میں 22 وکٹیں لے کر اپنی ٹیم کو پانچویں مرتبہ یہ ٹرافی دلوانے میں اہم کردار ادا کیا تھا۔

سٹارک نے ایک روزہ کرکٹ میں بہترین بولروں کی فہرست میں پاکستان کے آف سپنر سعید اجمل کی جگہ لی ہے جو متنازع بولنگ ایکشن کی وجہ سے تقریباً چھ ماہ سے عالمی کرکٹ سے دور ہیں۔

آئی سی سی کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ 25 سالہ سٹارک کی عالمی کپ میں شاندار کارکردگی نے انھیں سب سے اوپر پہنچا دیا۔

ورلڈ کپ کے آغاز کے موقع پر سٹارک ون ڈے درجہ بندی میں ساتویں نمبر پر تھے لیکن ٹورنامنٹ کے دوران ان کی بہترین کارکردگی نے انھیں 147 پوائنٹس دلوائے اور اب ان کے پوائنٹس کی تعداد 783 تک جا پہنچی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption بلے بازوں میں درجہ بندی کے لحاظ سے یہ ورلڈ کپ جنوبی افریقہ کے کپتان ابراہم ڈی ویلیئرز کے لیے سب سے مبارک ثابت ہوا

یہ سٹارک کے کریئر میں پہلا موقع ہے کہ وہ آئی سی سی کی عالمی درجہ بندی میں سرفہرست ہیں۔

بولرز کی فہرست میں دوسرا درجہ جنوبی افریقہ کے آف سپنر عمران طاہر نے حاصل کیا ہے جن کی درجہ بندی میں نو درجے کی بہتری آئی ہے اور وہ 11ویں بہترین بولر سے 734 پوائنٹس کے ساتھ دنیا کے دوسرے بہترین بولر بن گئے ہیں

پاکستان کے سعید اجمل اب دو درجے تنزلی کے بعد 718 پوائنٹس کے ساتھ تیسرے نمبر پر آ گئے ہیں جبکہ ان سے ایک پوائنٹ پیچھے چوتھے نمبر پر جنوبی افریقہ کے ہی ڈیل سٹین ہیں۔

ورلڈ کپ میں سٹین کی کارکردگی کچھ خاص نہیں رہی اور انھیں بھی دو درجے کی تنزلی کا سامنا کرنا پڑا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption بولرز کی فہرست میں دوسرا درجہ جنوبی افریقہ کے آف سپنر عمران طاہر نے حاصل کیا ہے

عالمی کپ میں سٹارک کے ہمراہ 22 وکٹوں کے ساتھ کامیاب ترین بولر بننے والے نیوزی لینڈ کے ٹرینٹ بولٹ بھی دس بہترین بولروں میں جگہ بنانے میں کامیاب رہے ہیں اور انھیں چھٹے مقام پر رکھا گیا ہے۔

بلے بازوں میں درجہ بندی کے لحاظ سے یہ ورلڈ کپ جنوبی افریقہ کے کپتان ابراہم ڈی ویلیئرز کے لیے سب سے مبارک ثابت ہوا ہے۔

ٹورنامنٹ میں 482 رنز کے ساتھ تیسرے بڑے سکورر ڈی ویلیئرز 900 پوائنٹس کی حد عبور کرنے میں کامیاب رہے ہیں۔

وہ یہ اعزاز حاصل کرنے والے دنیا کے 11ویں اور ہاشم آملہ کے بعد جنوبی افریقہ کے دوسرے بلے باز ہیں۔

اسی بارے میں