محمد حفیظ بولنگ ٹیسٹ سے خوفزدہ نہیں ہیں

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption محمد حفیظ کی کہنی میں 24 ڈگری کا خم ریکارڈ کیا گیا تھا

پاکستان کرکٹ ٹیم کے تجربہ کار آل راؤنڈر محمد حفیظ کا کہنا ہے کہ وہ جمعرات کو بھارتی شہر چنئی میں ہونے والے اپنے بولنگ ایکشن کے ٹیسٹ کے لیے کافی پر اعتماد ہیں۔

آف سپنر محمد حفیظ کا بولنگ ایکشن گذشتہ سال نومبر میں نیوزی لینڈ کے خلاف ٹیسٹ میچ کے دوران رپورٹ ہوا تھا جس کے بعد انگلینڈ میں بائیومیکینک تجزیہ کروانے کے بعد اسے غیر قانونی قرار دیا گیا تھا۔

جمعرات کو بھارت کے شہر چنئی میں ان کے بولنگ ایکشن کا آفشل ٹیسٹ ہونے جا رہا ہے جس کا کلئیر ہونا حفیظ کے لیے انتہائی ضروری ہے۔

تاہم حفیظ کا کہنا ہے کہ وہ اس ٹیسٹ سے خوفزدہ نہیں ہیں۔

ان کا کہنا ہے کہ ’ میں نے اپنے بولنگ ایکشن پر گذشتہ پانچ ماہ میں بہت کام کیا ہے اور مجھے یقین ہے کہ میں اسے کلئیر کر سکتا ہوں۔‘

انٹر نیشنل کرکٹ کونسل کے قوانین کے مطابق بولرز کو اپنی کہنی کو پندرہ ڈگری سے زیادہ خم دینے کی اجازت نہیں ہے جبکہ محمد حفیظ کی کہنی میں 24 ڈگری کا خم ریکارڈ کیا گیا تھا۔

محمد حفیظ کا مزید کہنا تھا کہ ’ بدقسمتی سے میں کرکٹ ورلڈ سے پہلے زخمی ہو گیا اور ٹیسٹ نہ دے سکا لیکن اب مجھے امید ہے کہ میں یہ ٹیسٹ کلیئر کر کے اپنا کریئر دوبارہ سے شروع کرپاؤں گا۔‘

محمد حفیظ کے علاوہ پاکستان کے سٹار آف سپنر سعید اجمل کا بولنگ ایکشن میں غیر قانونی قرار دیا گیا تھا۔ تاہم ان کا بولنگ ایکشن رواں برس فروری میں کلیئر کر دیا گیا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption محمد حفیظ کا کہنا ہے کہ کپتانی کے لیے اظہر علی ہی بہترین انتخاب ہیں۔

آل راؤنڈر محمد حفیظ کا مزید کہنا تھا کہ ’ ہر کھلاڑی کو اس طرح کے مراحل سے گزرنا پڑتا ہے۔یہ میرے لیے مشکل تھا لیکن میں پر عزم ہوں کہ میں دورہ بنگلا دیش میں اپنی بولنگ کے ساتھ واپسی کروں گا۔‘

سعید اجمل اور محمد حفیظ کو دورہ بنگلا دیش کے دوران تینوں فارمیٹ کے لیے سکواڈ میں شامل کیا گیا ہے۔

پاکستان کرکٹ ٹیم بنگلادیش کے خلاف دورے کا آغاز 17 اپریل کو تین ایک روزہ میچوں کے پہلے میچ سے کرے گی۔ اس کے علاوہ پاکستان ٹیم بنگلا دیش کے خلاف ایک ٹی ٹونٹی اور دو ٹیسٹ میچ بھی کھیلے گی۔

محمد حفیظ نے پاکستان کی ایک روزہ ٹیم کے نئے منتخب ہونے والے کپتان اظہر علی کا بھر پور ساتھ دینے کا اظہار بھی کیا ہے۔

اظہر علی تقریباً دو سال سے پاکستان کی ون ڈے ٹیم کا حصہ نہیں تھے لیکن اس کے باوجود محمد حفیظ کا کہنا تھا کہ کپتانی کے لیے وہ ہی بہترین انتخاب ہیں۔

دورہ بنگلا دیش کے لیے ٹیم میں شامل کیے گئے نوجوان کھلاڑیوں کے بارے میں حفیظ کا کہنا ہے کہ ان کے خیال میں نوجوان کھلاڑی اس دورے کے لیے تیار ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ’ پاکستان ٹیم میں موجود ٹیلنٹ کو نظر انداز نہیں کیا جا سکتا۔ یہ ایک نیا دور ہے اور میرے خیال میں اگر ہم متحد ہو کر کھیلے تو نتائج بہت بہتر ہونگے۔ ہم اس سیریز کے لیے تیار ہیں۔‘

اسی بارے میں