’مزید وکٹوں اور انگلینڈ کی جیت کے لیے کوشاں رہوں گا‘

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption یہ کام جب تک ممکن ہوا کرتا رہوں گا: اینڈرسن

انگلینڈ کی جانب سے سب سے زیادہ ٹیسٹ وکٹیں لینے کا ریکارڈ قائم کرنے والے جیمز اینڈرسن کا کہنا ہے کہ ان کا کام انگلینڈ کو جتوانے کی کوشش کرنا ہے اور جب تک ممکن ہوا وہ یہ کام کرتے رہیں گے۔

اینڈرسن نے جمعے کو ویسٹ انڈیز کے خلاف اپنا 100واں ٹیسٹ کھیلتے ہوئے سر ایئن بوتھم کا انگلینڈ کی جانب سے سب سے زیادہ ٹیسٹ وکٹوں کا ریکارڈ توڑا۔

اینٹیگا میں ویسٹ انڈیز کے خلاف پہلے ٹیسٹ کے آخری دن 32 سالہ اینڈرسن نے یہ اعزاز اس وقت حاصل کیا جب ان کی گیند پر دنیش رام دین پہلی سلپ میں کیچ دے بیٹھے اور ان کا 384واں شکار بنے۔

اپنی اس کامیابی پر جیمز اینڈرسن کا کہنا تھا: ’میں نے کوشش کی ہے کہ اپنے کھیل اور اس کام پر دھیان دوں جو مجھے ٹیم کے لیے کرنا ہے ـ میں شکر ادا کرتا ہوں کہ میں اس مقام پر پہنچا ہوں اور لوگ اس بارے میں بات کر رہے ہیں۔‘

انھوں نے یہ بھی کہا کہ ’میں اپنے لیے مستقبل میں کوئی ہدف طے نہیں کروں گا۔ میں انگلینڈ کے لیے کھیلنے پر دھیان دوں گا، میچ جیتنے اور وکٹیں لینے کی کوشش کروں گا، جو کہ میرا کام ہے اور میں یہ کام جب تک ممکن ہوا کرتا رہوں گا۔‘

لنکا شائر کاؤنٹی کی جانب سے کھیلنے والے جیمز اینڈرسن نے اپنے ٹیسٹ کیریئر کا آغاز سنہ 2003 میں کیا تھا اور آسٹریلیا کے خلاف تین ایشز میں کامیابی دلوانے والے جمی سنہ 2011 میں انگلینڈ کی ٹیسٹ رینکنگ میں سرفہرست آ گئے تھے۔

تصویر کے کاپی رائٹ GETTY
Image caption اینڈرسن آسانی سے 450 وکٹوں تک جا سکتے ہیں: ایئن بوتھم

اینڈرسن نے سنہ 1997 اور 1992 کے درمیابی عرصے میں 102 ٹیسٹ میچ کھیلے جن میں انھوں نے نہ صرف 383 وکٹیں حاصل کیں بلکہ 33.54 کی اوسط سے 5,200 رنز بھی بنائے۔

جب اینٹیگا کے سر ووین رچرڈز سٹیڈیم میں انھوں نے اپنی 384ویں ٹیسٹ وکٹ حاصل کی تو انھوں نے یہ اعزاز ایئن بوتھم سے دو کم میچوں میں حاصل کر لیا۔

اس موقعے پر ایئن بوتھم کا کہنا تھا کہ ’ میں بہت خوش ہوں۔ مجھے اینڈرسن کی باؤلنگ دیکھ کر لطف آیا۔ وہ اس اعزاز کے حقدار تھے۔‘

’اینڈرسن ایک شاندار کرکٹر ہیں۔ جب آپ بال کو سوِئنگ کرنے کی صلاحیت حاصل کر لیتے ہیں تو یہ بڑا اہم ہو جاتا ہے کہ آپ سوئنگ کرتے کیسے ہیں۔ جس گیند پر انھوں نے وکٹ لی وہ ایک زبردست گیند تھی۔‘

سکائی سپورٹس پر جب ان سے پوچھا گیا کہ ان کے خیال میں ریٹائرمنٹ سے پہلے اینڈرسن کتنی وکٹیں حاصل کر سکیں گے تو ایئن بوتھم کا کہنا تھا کہ ’وہ آسانی سے 450 تک جا سکتے ہیں۔‘

انگلینڈ کے سابق کپتان مائیکل وان کے بقول ’ جمی انیڈرسن کمال کے باؤلر ہیں۔ ان برسوں میں انہیں کھیلتے دیکھ کر مجھے بہت لطف آیا۔‘

اینڈرسن کے ریکارڈ توڑنے سے کچھ دیر قبل انگلینڈ کے سابق آل راؤنڈر اینڈریو فلنٹاف نے کہا کہ ’ اس وقت انگلینڈ کے سب سے عظیم کھلاڑی ہیں اور وہ اگر مزید تین سال کھیلتے رہے تو ان کا شمار دنیا کے عظیم ٹیسٹ کرکٹرز میں ہوگا۔‘

اسی بارے میں