بنگلہ دیش کی ون ڈے سیریز میں تاریخی کامیابی

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption تمیم اقبال نے لگاتار دوسری سنچری بنائی اور مین آف دی میچ کا ایوارڈ حاصل کیا

بنگلہ دیش نے ایک روزہ میچوں کی سیریز کے دوسرے میچ میں پاکستان کو سات وکٹوں سے شکست دے کر تین میچوں کی سیریز اپنے نام کر لی ہے۔

میرپور کے شیرِ بنگلہ سٹیڈیم میں اتوار کو کھیلے جانے والے میچ میں پاکستان کے240 رنز کا ہدف تین وکٹوں کے نقصان پر 38.1 اوورز میں پورا کر لیا۔

بنگلہ دیش بمقابلہ پاکستان: تصاویر میں

مین آف دی میچ کا ایوارڈ تمیم اقبال کو دیا گیا جنھوں نے بہترین بلے بازی کرتے ہوئے 116 گیندوں پر 17 چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے 116 رنز بنائے اور آؤٹ نہیں ہوئے۔ یہ ان کی لگاتار دوسری سنچری تھی۔

240 رنز کے ہدف کے تعاقب میں بنگلہ دیش کی جانب سے تمیم اقبال اور سومیا سرکار نے اننگز شروع کی اور جارحانہ انداز میں کھیلتے ہوئے ابتدائی تین اوورز میں 22 رنز بنائے جن میں پانچ چوکے شامل تھے۔

سومیا سرکار نے جنید خان کو لگاتار تین گیندوں پر چوکے لگائے لیکن اس کے بعد جنید نے انھیں وکٹوں کے پیچھے کیچ کروا کے پاکستان کو پہلی کامیابی دلوائی۔

اس نقصان کے بعد بھی بنگلہ دیشی بلے بازوں نے جارحانہ انداز اپنائے رکھا اور دوسری وکٹ کے لیے 11 اوورز میں 78 رنز کی شراکت قائم کی۔

اس شراکت کا خاتمہ سعید اجمل نے محمود اللہ کو بولڈ کر کے کیا۔

اس کے بعد تمیم اقبال اور مشفق الرحیم نے تیسری وکٹ کی شراکت میں 118 رنز بنائے۔

بنگلہ دیش کی تیسری وکٹ 218 کے سکور پر گری جب مشفق الرحیم 65 رنز بنا کر راحت علی کا شکار بنے، ان کا کیچ فواد عالم نے پکڑا۔

اس سے قبل پاکستانی کپتان اظہر علی نے ٹاس جیت کر پہلے کھیلنے کا فیصلہ کیا لیکن پاکستانی بیٹنگ پھر ناکام رہی۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption پاکستانی بولرز بنگلہ دیشی بلے بازوں کے سامنے بے بس دکھائی دیے

ایک موقع پر پاکستانی ٹیم کے پانچ کھلاڑی صرف 77 رنز پر پویلین میں واپس جا چکے تھے لیکن اس وقت سعد نسیم نے پہلے حارث سہیل اور پھر وہاب ریاض کے ساتھ مل کر ٹیم کو ایک قدرے بہتر سکور تک پہنچنے میں مدد دی۔

اپنا دوسرا ون ڈے میچ کھیلنے والے سعد نے ایک مشکل وقت میں 77 رنز کی ناقابلِ شکست اننگز کھیلی اور حارث کے ساتھ 77 اور وہاب کے ساتھ 85 رنز کی شراکت قائم کی۔

ان کے علاوہ وہاب ریاض نے 51 جبکہ حارث سہیل نے 44 رنز بنا کر پاکستان کو چھ وکٹوں کے نقصان پر 239 رنز کے مجموعے تک پہنچا دیا۔

بنگلہ دیش کے لیے شکیب الحسن نے دو جبکہ روبیل حسین، عرفات سنی، مشرفی مرتضیٰ اور ناصر حسین نے ایک ایک وکٹ لی۔

اس میچ کے لیے پاکستانی ٹیم میں کوئی تبدیلی نہیں کی گئی جبکہ بنگلہ دیشی ٹیم میں کپتان مشرفی مرتضیٰ کی واپسی ہوئی ہے۔

مشرفی مرتضیٰ معطلی کے سبب پہلا میچ نہیں کھیل سکے تھے جس میں ان کی ٹیم نے پاکستان کو 16 برس کے وقفے کے بعد تاریخی شکست دی تھی۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption بنگلہ دیش کے تمام بولروں نے دوسرے ون ڈے میں بھی عمدہ بولنگ کی

بنگلہ دیش کو تین میچوں کی اس سیریز میں دو صفر کی ناقابل شکست برتری حاصل ہے۔

سابق کپتان مصباح الحق اور شاہد آفریدی کی ایک روزہ بین الاقوامی کرکٹ سے ریٹائرمنٹ کے بعد پاکستانی ٹیم اپنے نئے کپتان اظہر علی کی قیادت میں پہلی ایک روزہ سیریز کھیل رہی ہے۔

دونوں ممالک کے درمیان سنہ 2011 کے بعد یہ ایک روزہ میچوں کی پہلی باہمی سیریز ہے۔

بنگلہ دیش اور پاکستان کے درمیان اب تک 34 ایک روزہ بین الاقوامی کرکٹ میچ کھیلے جا چکے ہیں جن میں سے پاکستان نے 31 میچ جیتے ہیں۔

اسی بارے میں