رونالڈو کا میچ رونالڈو سے

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption تن تنہا مخالف ٹیموں کے دفاع کی دھجیاں اڑانے والے رونالڈو کو فٹبال کے کھیل کو بدلنے کا اعزاز حاصل ہے

نوے کی دہائی میں کھیلے جانے والے فٹبال کو عموماً کھیل کا بہترین دور سمجھا جاتا ہے۔

اور جب بھی اس وقت کے فٹبال کا ذکر ہوتا ہے تو دو چیزیں ذہن میں آتی ہیں۔ پہلی، فرانس کی 1999 کے ورلڈ کپ فائنل میں جیت اور دوسری نمبر نو کی شرٹ میں اوندھے پڑا ہوا وہ بے بس کھلاڑی۔

یہ وہ کھلاڑی تھا جسے مارک کرنے کے لیے مخالف ٹیمیں تین سے چار کھلاڑی مختص کرتی تھیں۔ایسا فٹبال میں پہلے کبھی نہیں دیکھا گیا تھا، اور ماہرین کا خیال تھا کہ ایسا پھر کبھی نھیں دیکھا جائے گا۔

لیکن اگر اگر فاسٹ فارورڈ کا بٹن دبائیں اور 10 سال آگے آجائیں تو وہی نام آپ کو ایک مختلف رنگ کی شرٹ اور چہرے کے ساتھ ملے گا۔ اس بار لال رنگ کی پرتگالی جرسی میں، نمبر سات کی شرٹ پہنے اس رونالڈو کو بھی تین یا چار کھلاڑیوں سے مارک کیا جاتا ہے۔

اور اگر دونوں ایک ساتھ کھیلیں تو شاید ان کو صرف گول کیپر کے علاوہ اور کسی کھلاڑی کی ضرورت نہ ہو۔ایسوسی ایٹڈ پریس میں چھپنے والی خبر کے مطابق برازیل کے عظیم فٹبالر رونالڈو نے سپر سٹار کرسچیانو رونالڈو کے ساتھ میچ کھیلنے کی خواہش کا اظہار کیا ہے۔

فٹبال کی دنیا کے ایک اور عظیم کھلاڑی پیلے کے بعد برازیل کے لیے سب سے زیادہ گول کرنے والے رونالڈو سے جب یہ پوچھا گیا کہ اگر انھیں دوبارہ کھیلنے کا موقع دیا گیا تو وہ کس کے ساتھ کھیلیں گے۔ اس کے جواب میں انھوں نے کہا کہ ’اگر ایسا ہوا تو میں اپنے ہم نام رونالڈو کے ساتھ کھیلوں گا‘۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption کرسچیانو رونالڈو اس وقت پرتگال کی ٹیم کے کپتان ہیں۔

کرسچیانو رونالڈو، جنھوں نے حال ہی میں لگاتار پانچ چیمپیئن شپ سیزن میں 50 گول کر کے ورلڈ ریکاڈ قائم کیا ہے، اس وقت ہسپانوی کلب ریال میڈرڈ کی طرف سے کھیل رہے ہیں۔

برازیلی رونالڈو نے، جنھیں ماہرین تاریخ کا بہترین فٹبالر بھی کہتے ہیں، 2011 میں ریٹائرمنٹ کا اعلان کیا تھا۔ ان کی عمر اس وقت 38 سال ہے اور وہ امریکی کلب فورٹ لوریڈیل سٹرائیکرز کے شریک مالک ہیں۔ رونالڈو نے حالیہ بیان میں کہا ہے کہ اگر ان کی ٹیم دوسرے مرحلے میں پہنچی تو وہ اپنی ٹیم کی طرف سے میدان میں ضرور اتریں گے۔

انھوں نے کہا ’مجھے معلوم ہے کہ یہ آسان نہیں ہوگا، مجھے اس کے لیے شدید محنت کرنی پڑے گی۔ میں نے جب فٹبال کھیلنا چھوڑا تو میرا جسم بالکل جواب دے چکا تھا۔ مجھے وزن بہت کم کرنا پڑے گا اور بہت سخت ٹریننگ کرنی پڑے گی۔‘

تن تنہا مخالف ٹیموں کے دفاع کی دھجیاں اڑانے والے رونالڈو کو فٹبال کے کھیل کو بدلنے کا اعزاز حاصل ہے۔

رونالڈو کے دور سے پہلے بلخصوص سینٹر فارورڈ پوزیشن کی اتنی اہمیت نہیں ہوتی تھی جو ان کے کھیل کے انداز کے بعد اسے حاصل ہوئی۔

اسی بارے میں