لندن میراتھن 2015 میں ہزاروں مرد اور خواتین شریک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption منتظیمن کے مطابق اس مرتبہ لوگوں کی ایک ریکارڈ تعداد اس دوڑ میں حصہ لے رہی ہے۔

سالانہ دوڑ ’لندن میراتھن‘ کے سلسلے کی 35 ویں دوڑ میں مردوں کا مقابلہ کینیا کے آلیوڈ کپچوج اور خواتین کی دوڑ ایتھوپیا کی ٹیگسٹ ٹوفا نے جیت لی ہے۔

آلیوڈ کپچوج نے 26.2 میل کا فاصلہ دو گھنٹے چار منٹ اور 47 سیکنڈ میں مکمل کیا جبکہ ان کی ہم وطن ایتھلیٹ یہ فاصلہ دو گھنٹے 23 منٹ اور 22 سیکنڈ میں طے کر کے دوڑ جیتنے میں کامیاب ہوئیں۔

منتظمین کا کہنا تھا کہ اس برس 37,800 سے زیادہ لوگ اس دوڑ میں شامل ہو ئے ہیں جو جنوبی لندن کے سرسبز علاقے ’بلیک ہیتھ‘ سے شروع ہو کر 26.2 میل دور مرکزی لندن کی شاہراہ ’دی مال‘ پر ختم ہو ئی۔ منتظیمن کے مطابق اس مرتبہ لوگوں کی ایک ریکارڈ تعداد نے اس دوڑ میں حصہ لیا ہے۔

Image caption گذشتہ برسوں میں لندن میراتھان جیتنے والی پولا ریڈکلف اب 41 برس کی ہو گئی ہیں۔

مقابلے میں شریک کئی ایک مرد اور خواتین مختلف خیراتی اداروں کے لیے امداد جمع کرنے کے لیے اس دوڑ میں شرکت کر رہے ہیں اور انھیں امید ہے کہ وہ سنہ 2014 کا پانچ کروڑ 32 لاکھ پاؤنڈ کا ریکارڈ توڑ دیں گے۔

میراتھن کی عالمی چیمپئن اور گذشتہ برسوں میں لندن میراتھن جیتنے والی پولا ریڈکلف اب 41 برس کی ہو گئی ہیں اور لندن میراتھن میں اُن کی یہ آخری شرکت ہے۔

اتوار کی صبح پولا ریڈکلف نے اپنی آخری میراتھن کا آغاز معروف لوگوں کے ساتھ نہیں کیا بلکہ وہ ہزاروں عام لوگوں میں شامل تھیں۔

یاد رہے کہ اپریل سنہ 2003 میں پولا ریڈکلف نے لندن کے انھیں راستوں پر یہ فاصلہ دو گھنٹے 15 منٹ اور 25 سیکنڈ میں طے کر کے نیا عالمی ریکارڈ قائم کیا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption ایک مرتبہ میراتھن مکمل نہ کر سکنے پر پولا ریڈکلف بہت مایوس ہوئیں اور اپنے جذبات پر قابو نہ رکھ سکیں۔

بی بی سی کے کھیلوں کے نامہ نگار سے بات کرتے ہوئے پولا ریڈکلف کا کہنا تھا: ’ صاف ظاہر ہے اس مرتبہ میں خود پر مہربانی کروں گی اور میں اپنے ریکارڈ ٹائم کے قریب نہیں جاؤں گی۔‘

تین مرتبہ لندن میراتھن جیتنے والی پولا ریڈکلف نے صرف اس مرتبہ لندن میراتھن میں شرکت کے لیے اپنی ایڑھی کا علاج بھی کروایا تھا۔

اس دوڑ کے اختتام پر میراتھن کے میدان میں ان کی شاندار خدمات کے اعتراف میں انھیں ’جان ڈِزلی لائف ٹائم اچیومنٹ‘ ایوارڈ سے بھی نوازا جائے گا۔

میراتھن کے شرکاء 26 میل سے زیادہ طویل اس دوڑ میں لندن کے کئی تاریخ مقامات اور عمارتوں کے پاس سے گزرے جن میں درائے ٹیمز کے کنارے ’کٹّی سارک‘ کا علاقہ بھی شامل ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption جو دیگر مشہور شخصیات اس برس دوڑ میں حصہ لے رہی ہیں ان میں کاروں کی ریس ’فارمولا ون‘ کے مشہور سٹار جینسن بٹن اور برطانوی ریڈیو ڈی جے گریگ جیمز بھی شامل ہیں۔

اس برس وھیل چیئرز پر میراتھن میں شرکت کرنے والے مردوں میں ڈیوڈ ویئر اوّل رہے۔ ان کی خواہش تھی کہ وہ امریکی وھیل چیئر رنر جوشوا کِپسینگ کا ریکارڈ توڑ سکیں لیکن وہ اس میں ناکام رہے اور محض ایک سیکنڈ سے یہ ریکارڈ نہ توڑ سکے۔

ان کے علاوہ جو دیگر مشہور شخصیات اس برس دوڑ میں حصہ لے رہی ہیں ان میں کاروں کی ریس ’فارمولا ون‘ کے مشہور سٹار جینسن بٹن اور برطانوی ریڈیو ڈی جے گریگ جیمز بھی شامل ہوئے۔

اسی بارے میں