پاکستان کی عمدہ بولنگ، بنگلہ دیش کی نصف ٹیم پویلین میں

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption پاکستان کی جانب سے جنید خان اور یاسر شاہ نے دو دو جبکہ وہاب ریاض نے ایک کھلاڑی کو آؤٹ کیا

میر پور ٹیسٹ کے دوسرے دن کھیل کے اختتام پر بنگلہ دیش نے پاکستان کے خلاف پہلی اننگز میں پانچ وکٹوں کے نقصان پر 107 رنز بنا لیے ہیں۔

بنگلہ دیش کو پاکستان کی برتری ختم کرنے کے لیے مزید 450 رنز کی ضرورت ہے اور پہلی اننگز میں اس کی پانچ وکٹیں باقی ہیں۔

میچ کا تفصیلی سکور کارڈ

بنگلہ دیشی بولر دوسرے دن بھی بےبس: تصاویر

بنگلہ دیش کی جانب سے تمیم اقبال اور امرو القیس نے اننگز کا آغاز کیا۔

بنگلہ دیش کے آؤٹ ہونے والے پہلے بلے باز ان فارم تمیم اقبال تھے جو صرف چار رنز بنا سکے، انھیں جنید خان نے ایل بی ڈبلیو کیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption اظہر علی نے ڈبل سنچری کے ساتھ ساتھ اپنے ٹیسٹ کریئر کا بہترین سکور بھی بنایا

کھلنا ٹیسٹ میں ڈبل سنچری بنانے والے تمیم نے امپائر کے فیصلے کے خلاف ریویو لیا لیکن فیصلہ ان کے حق میں نہیں آیا۔

پاکستان کو دوسری کامیابی بھی جنید خان نے ہی مومن الحق کو آؤٹ کر کے دلوائی، وہ 13 رنز بنا پائے۔ بنگہ دیش کے تیسرے آؤٹ ہونے والے کھلاڑی امرو القیس تھے جنھیں یاسر شاہ نے بولڈ کیا۔

بنگلہ دیش کو 85 رنز کے مجموعی سکور میں چوتھا نقصان محمود اللہ کی صورت میں ہوا جو 28 رنز بنا کر آؤٹ ہو گئے۔

107 رنز کے مجموعی سکور پر بنگلہ دیش کی پانچویں وکٹ اس وقت گری جب مشفق الرحیم صرف 12 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔

پاکستان کی جانب سے جنید خان اور یاسر شاہ نے دو دو جبکہ وہاب ریاض نے ایک کھلاڑی کو آؤٹ کیا۔

اس سے قبل اظہر علی کی ڈبل سنچری اور یونس خان اور اسد شفیق کی سنچریوں کی بدولت پاکستان ٹیم مستحکم پوزیشن میں آ گئی۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption اسد شفیق نے نہ صرف سنچری بنائی بلکہ اظہر کے ساتھ مل کر 207 رنز کی شراکت بھی قائم کی

جمعے کو جب کھیل شروع ہوا تو آغاز میں ہی پاکستان کو اس وقت نقصان اٹھانا پڑا جب شکیب الحسن نے پاکستانی کپتان مصباح الحق کو بولڈ کر دیا۔ وہ صرف نو رنز ہی بنا سکے۔

دن کے آغاز میں ہی کپتان کی وکٹ سے محروم ہونے کے بعد اظہر اور اسد شفیق نے محتاط مگر پراعتماد انداز میں بلے بازی کی اور 207 رنز کی شراکت قائم کی۔

نائب کپتان اظہر علی نے ٹیسٹ کرکٹ میں اپنی پہلی ڈبل سنچری 20 چوکوں اور دو چھکوں کی مدد سے مکمل کی۔ وہ 226 رنز بنانے کے بعد شواگتا ہوم کی پہلی وکٹ بنے۔

اسد شفیق نے اپنی چھٹی ٹیسٹ سنچری نو چوکے اور ایک چھکا لگا کر بنائی۔ انھیں بھی 107 کے سکور پر شواگتا نے ہی آؤٹ کیا۔

بعدازاں پاکستان کے لوئر آرڈر بلے باز سکور میں قابلِ ذکر اضافہ کرنے میں ناکام رہے اور یکے بعد دیگرے آؤٹ ہوتے رہے اور پاکستان نے چائے کے وقفے پر آٹھ وکٹوں کے نقصان پر 557 رنز بنا کر اننگز ڈیکلیئر کر دی۔

بنگلہ دیش کی جانب سے تیج الاسلام نے تین، شاہد علی اور شواگتا ہوم نے دو، دو جبکہ شکیب الحسن نے ایک وکٹ لی۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption یونس خان ٹیسٹ کرکٹ میں 29 سنچریاں بنا کر اس سلسلے میں آسٹریلیا کے عظیم بلے باز آنجہانی سر ڈان بریڈ مین کے ہم پلہ ہوگئے ہیں

یونس خان نے میچ کے پہلے دن ٹیسٹ کرکٹ میں نہ صرف اپنی 29 ویں سنچری مکمل کی بلکہ وہ اس طرز کی کرکٹ میں پاکستان کے لیے سب سے زیادہ چھکے لگانے والے بلے باز بھی بن گئے۔

انھوں نے اظہر علی کے ساتھ مل کر تیسری وکٹ کے لیے ٹیم کے سکور میں 250 رنز کا اضافہ بھی کیا تھا۔

پاکستان اس دورۂ بنگلہ دیش میں تاحال فتح کی تلاش میں ہے۔ بنگلہ دیش نے پہلے پاکستان کو تینوں ون ڈے میچوں اور پھر دورے کے واحد ٹی 20 انٹرنیشنل میچ میں بھی ہرایا تھا۔

دونوں ٹیموں کے درمیان کھلنا میں کھیلا گیا پہلا ٹیسٹ بھی بےنتیجہ رہا تھا اور یہ پہلا موقع تھا کہ بنگلہ دیشی ٹیم نو ٹیسٹ میچوں میں پاکستان سے نہیں ہاری۔

اسی بارے میں