دلچسپ مقابلے میں پاکستان کی دو وکٹوں سے جیت

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption اوپنر احمد شہزاد اور مختار احمد نے جارحانہ بیٹنگ کا آغاز کیا

پاکستان کے شہر لاہور کے قذافی سٹیڈیم میں پاکستان اور زمبابوے کے درمیان کھیلے جانے والے دوسرے ٹی 20 کرکٹ میچ میں پاکستان نے زمبابوے کو دو وکٹوں سے شکست دے کر سیریز دو صفر سے جیت لی

زمبابوے نے پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے پاکستان کو جیت کے لیے 176 رنز کا ہدف دیا ہے۔

پاکستان نے مطلوبہ ہدف19.4 اوورز میں پورا کر کے دوسرے ٹی 20 میچ میں بھی کامیابی حاصل کر لی۔ پاکستان کی جانب سے اوپنر مختار احمد نےسب سے زیادہ 62 رنز بنائے اور مین آف دی میچ قرار پائے۔

زمبابوے نے اپنی اننگز کے آغاز میں عمدہ بیٹنگ کرتے ہوئے 20 اوورز میں تین وکٹوں کے نقصان پر 175 رنز بنائے۔ زمبابوے کی جانب سے اننگز کا آغاز سیبانڈا اور مازاکادسا نے کیا اور 68 کے مجموعی سکور پر زمبابوے کی پہلی وکٹ گری۔

پاکستانی بولر شعیب ملک نے زمبابوے کے اوپنر مازاکادسا کو 34 رنز پر آوٹ کیا جبکہ سیبانڈا کو 49 رنز پر شاہد آفریدی نے آوٹ کیا۔

زمبابوے کے 176 رنز کے ہدف جواب میں اوپنر احمد شہزاد اور مختار احمد نے جارحانہ بیٹنگ کا آغاز کیا لیکن 4.5 اورز میں 44 کے مجموعی سکور پر اوپنر احمد شہزاد کو زمبابوے کے بولر ووٹری نے آوٹ کر دیا۔ انھوں نے 18 رنز بنائے تھے۔ پاکستان کی دوسری وکٹ 81 کے مجموعی سکور پر گری۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption قذافی سٹیڈیم میں 27 ہزار تماشائیوں کی گنجائش ہے اور پہلے ٹی ٹوئنٹی میچ کی طرح دوسرے ٹی ٹوئنٹی میچ میں بھی سٹیڈیم شائقین کرکٹ سے بھرا ہوا تھا

نعمان انور کے آوٹ ہونے کے بعد شعیب ملک بیٹنگ کے لیے آئے لیکن وہ بھی سات رنز بنا کر رن آوٹ ہو گئے۔ 117 کے مجموعی سکور پر پاکستان کی چوتھی وکٹ اُس وقت گری جب اوپنر مختار احمد 62 رنز بنا کر آوٹ ہوئے۔ عمر اکمل نے 30 رنز بنائے جب کپتان شاہد آفریدی 7 رنز بنا کر آوٹ ہوئے ہیں۔

میچ کے آخری اورز میں پاکستان کی پے در پے وکٹیں گرتی گئی اور لیکن آخری اوور میں بلاول بھٹی نے چھکا مار کر ٹیم کو فتح سے قریب کر دیا۔

پاکستان میں چھ سال کے طویل وقفے کے بعد بین الاقوامی کرکٹ کا 22 مئی کو کھیلے جانے والے میچ سے آغاز ہوا تھا۔

پاکستان کی جانب سے شعیب ملک، شاہد آفریدی اور محمد سمیع نے ایک ایک وکٹ لی۔

پاکستان ٹیم میں تین تبدیلیاں کی گئی تھیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption دو میچوں کی سیریز کا پہلا میچ پاکستان پانچ وکٹوں سے جیت گیا تھا

ٹیم میں پہللا ٹی ٹوئنٹی میچ کھیلنے والے سرفرار احمد، محمد حفیظ اور وہاب ریاض کی جگہ محمد رمضان، عماد نسیم اور نعمان انور کو شامل کیا گیا۔

دو میچوں کی سیریز کا پہلا میچ پاکستان پانچ وکٹوں سے جیت گیا تھا۔

زمبابوے ٹیسٹ رکنیت رکھنے والی پہلی ٹیم ہے جو تین مارچ سنہ 2009 کو لاہور میں سری لنکن کرکٹ ٹیم پر ہونے والے دہشت گرد حملے کے بعد پاکستان کے دورے پر آئی ہے۔

اس سیریز کے لیے انتہائی سخت حفاظتی انتظامات کیے گئے ہیں لیکن اس کے باوجود شائقین کا جوش وخروش بھی غیرمعمولی ہے جنھیں چھ سال کے صبر آزما انتظار کے بعد بین الاقوامی کرکٹ دیکھنے کو مل رہی ہے۔ قذافی سٹیڈیم میں 27 ہزار تماشائیوں کی گنجائش ہے اور پہلے ٹی ٹوئنٹی میچ کی طرح دوسرے ٹی ٹوئنٹی میچ میں بھی سٹیڈیم شائقین کرکٹ سے بھرا ہوا تھا۔

اسی بارے میں