’ٹریور بیلِس نے دو بار انگلینڈ کا کوچ بننے سے انکار کیا‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ٹریور بیلِس سنہ 2007 سے 2011 تک سری لنکن ٹیم، سنہ 2014 میں آسٹریلوی ٹیم کی عارضی طور پر ٹی20 سیریز اور انڈین پریمیئر لیگ میں کولکتہ نائٹ رائڈرز کی بھی کوچنگ کر چکے ہیں

آسٹریلیا کے سابق بولر جیف لاسن کا کہنا ہے کہ انگلینڈ کرکٹ ٹیم کے نئے منتخب ہونے والے کوچ ٹریور بیلِس نے اس سے پہلے دو مرتبہ یہ عہدہ قبول کرنے سے انکار کیا تھا۔

خیال رہے کہ 52 سالہ ٹریور بیلِس کو منگل کو انگلینڈ کرکٹ ٹیم کا نیا کوچ منتخب کیا گیا تھا۔

نیو ساؤتھ ویلز کے بولنگ کوچ جیف لاسن کا کہنا ہے کہ ٹریور بیلِس نے سنہ 2014 میں یہ عہدہ قبول کرنے سے انکار کیا تھا جس کے بعد پیٹر مورز نے انگلینڈ کرکٹ ٹیم کے کوچ کا عہدہ سنھبالا تھا۔

سابق آسٹریلوی بولر کے مطابق ٹریور بیلِس نے سنہ 2014 میں یہ عہدہ قبول نہیں کیا تھا بلکہ انھوں نے گذشتہ ہفتے بھی یہ عہدہ لینے سے انکار کیا۔

جیف لاسن نے کہا کہ ٹریور بیلِس کی جانب سے انگلینڈ کے اسسٹنٹ کوچ پال فیبرس کے ساتھ کام کرنے کا فیصلے میں پال فیبرس کا عمل دخل شامل تھا۔

انھوں نے بی بی سی ریڈیو فور کو بتایا کہ ٹریور بیلِس اور پال فیبرس اس سے قبل ایک ساتھ سری لنکا میں کام کر چکے ہیں۔

چیف لاسن نے مذید بتایا کہ ٹریور بیلِس اور پال فیبرس کے درمیان اچھی ورکنگ ریلیشن شپ ہے۔

سابق آسٹریلوی بولر کے مطابق ٹریور بیلِس کو اپنے گرد ایسے لوگ پسند ہیں جنھیں وہ جانتے اور اعتبار کر سکتے ہوں۔

انھوں نے کہا کہ انگلینڈ اور ویلز کرکٹ بورڈ نے ٹریور بیلِس کو بہت اچھی آفر دی۔

خیال رہے کہ ٹریور بیلِس سنہ 2007 سے 2011 تک سری لنکن ٹیم، سنہ 2014 میں آسٹریلوی ٹیم کی عارضی طور پر ٹی20 سیریز اور انڈین پریمیئر لیگ میں کولکتہ نائٹ رائڈرز کی بھی کوچنگ کر چکے ہیں۔

ٹریور بیلِس جون سے انگلینڈ کرکٹ ٹیم کے نئے کوچ کا عہدہ سنبھالیں گے جبکہ جولائی سے آسٹریلیا اور انگلینڈ کے درمیان ایشز سریز کا آغاز ہو گا۔

پال فیبرس جن کی کوچنگ میں انگلینڈ نے لارڈز کے میدان میں نیوزی لینڈ کو ٹیسٹ میچ میں شکست دی جمعے سے ہینڈنگلے میں شروع ہونے والے ٹیسٹ میچ میں بھی کوچنگ کے فرائض سر انجام دیں گے۔

اسی بارے میں