’پہلی اننگز کے بعد سنبھل نہ سکے‘

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption انھوں نے کہا کہ بیٹسمینوں کو بڑی اننگز کھیلنی ہونگی اور اپنی غلطیوں کو دور کرتے ہوئے مثبت انداز میں میدان میں اترنا ہوگا

پاکستانی کرکٹ ٹیم کے کپتان مصباح الحق کا کہنا ہے کہ کولمبو ٹیسٹ کے پہلے ہی دن 138 رنز پر آؤٹ ہوجانے کے بعد پاکستانی ٹیم سنبھل نہ سکی اور پورے میچ میں وہ دباؤ کا شکار رہی۔

کولمبو ٹیسٹ میں پاکستانی ٹیم کی سات وکٹوں کی شکست کے بعد مصباح الحق کا کہنا ہے کہ ایک مرحلے پر پاکستان کی دو وکٹیں 70 رنز پرگری تھیں لیکن دوسرے سیشن میں پوری ٹیم 138 رنز پر آؤٹ ہوگئی۔

مصباح الحق کا کہنا ہے کہ 153 رنز کے ہدف کےحصول کے لیے سری لنکن ٹیم نے جارحانہ حکمت عملی اختیار کی کیونکہ میزبان ہونے کے ناطے اسے موسم کا بخوبی اندازہ تھا اسی لیے وہ میچ کو جلد سے جلد ختم کرنا چاہتے تھے۔

پاکستانی کپتان نے فاسٹ بولر وہاب ریاض کی غیرموجودگی کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ اس سے پاکستانی ٹیم کو بہت فرق پڑا کیونکہ کولمبو کی وکٹ گال سے زیادہ باؤنسی تھی اور وہاب کے نہ ہونے سے پاکستانی ٹیم کو اپنی منصوبہ بندی پرعمل کرنے میں بہت زیادہ مشکل ہوئی۔

مصباح الحق کا کہنا تھا کہ اگر پاکستانی ٹیم 250 رنز تک سبقت حاصل کرنے میں کامیاب ہوجاتی تو اچھا تھا لیکن ایک بار پھر دن کے دوسرے سیشن میں وکٹیں گرگئیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption سری لنکن ٹیم نے جارحانہ حکمت عملی اختیار کی کیونکہ میزبان ہونے کے ناتے اسے موسم کا بخوبی اندازہ تھا

اپنی کارکردگی کے بارے میں مصباح الحق نے کہا کہ آپ فارم میں ہوتے ہیں گیند کو اچھی طرح ہٹ بھی کررہے ہوتے ہیں لیکن آپ سے سکور نہیں ہوپارہا ہوتا۔آپ کو اچھی قسمت بھی درکار ہوتی ہے لیکن اس صورتحال سے گھبرانے کی ضرورت نہیں بلکہ بیٹنگ کی بنیادی باتوں پر توجہ مرکوز رکھنے کی ضرورت ہے۔ اس وقت ان کو فارم کا نہیں بلکہ رنز نہ کرنے کا مسئلہ درپیش ہے۔

امپائرنگ کے بارے میں ان کا کہنا تھا کہ بسا اوقات اس طرح کی صورتحال پریشان کن ہوتی ہے لیکن ہر کوئی غلطی کرتا ہے، بعض اوقات یہ آپ کے خلاف جاتی ہے اور بعض اوقات آپ کے حق میں، یہ کھیل کا حصہ ہے۔

انھیں یقین ہے کہ پاکستانی ٹیم تیسرا ٹیسٹ سری لنکا کی مثال ذہن میں رکھتے ہوئے کھیلےگی جس نے پہلا ٹیسٹ ہارنے کے بعد دوسرا ٹیسٹ جیتا۔

انھوں نے کہا کہ بیٹسمینوں کو بڑی اننگز کھیلنی ہونگی اور اپنی غلطیوں کو دور کرتے ہوئے مثبت انداز میں میدان میں اترنا ہوگا۔

اسی بارے میں