نواک جاکووچ نے تیسری مرتبہ ومبلڈن ٹورنامنٹ جیت لیا

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption 40 باہمی مقابلوں میں فیڈرر اور جاکووچ کو 20، 20 میچوں میں فتح حاصل ہوئی ہے

سربیا کے نواک جاکووچ نے سوئٹزرلینڈ کے راجر فیڈرر کو شکست دے کر ومبلڈن ٹینس گرینڈ سلام ٹورنامنٹ جیت لیا ہے۔

اتوار کو کھیلے جانے والے میچ میں جاکووچ نے ایک کے مقابلے میں تین سیٹس سے فتح حاصل کی اور فیڈرر کی سب سے زیادہ مرتبہ ٹورنامنٹ جیتنے والا کھلاڑی بننے کی خواہش پوری نہ ہونے دی۔

دنیائے ٹینس کے نمبر ایک کھلاڑی جاکووچ اس مرتبہ ٹورنامنٹ میں اپنے اعزاز کا دفاع کر رہے تھے اور مجموعی طور پر یہ تیسرا موقع ہے کہ جاکووچ ومبلڈن جیتنے میں کامیاب ہوئے ہیں۔

یہ ان کے کریئر کا نواں گرینڈ سلام اعزاز ہے۔

انھوں نے پہلے سیٹ میں فیڈرر کو ٹائی بریکر پر سات چھ سے ہرایا تو دوسرے سیٹ میں فیڈرر نے اسی سکور سے فتح حاصل کی۔

فیڈرر نے پہلے سیٹ کے چھٹے گیم میں جاکووچ کی سروس بریک کر کے برتری حاصل کی لیکن اگلی ہی گیم میں جاکووچ نے ان کی سروس بریک کر کے مقابلہ برابر کر دیا۔

چھ، چھ گیمز سے مقابلہ برابر ہونے کے بعد ٹائی بریکر میں جاکووچ نے بہتر شاٹس لگائیں اور پہلا سیٹ جیت لیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption اس سال نووک جوکووچ دو مرتبہ راجر فیڈرر کو شکست دے چکے ہیں

دوسرے سیٹ میں بھی کم و بیش یہی صورتحال دیکھنے کو ملی اور سیٹ کا فیصلہ ٹائی بریکر پر ہی ہوا لیکن اس مرتبہ فتح فیڈرر کے حصے میں آئی۔

تیسرے اور چوتھے سیٹس میں جاکووچ نے فیڈرر کی سروس بریک کی اور یہ تیسرا سیٹ چھ چار اور چوتھا چھ تین کے سکور سے جیت کر ٹورنامنٹ جیت لیا۔

33 سالہ راجر فیڈرر کی نظریں آٹھویں بار ومبلڈن ٹائٹل اپنے نام کرنے کے نیا ریکارڈ بنانے پر لگی ہوئی تھیں لیکن ان کا یہ خواب پورا نہ ہو سکا۔

وہ امریکہ کے پیٹ سمپراس کا یہ ٹورنامنٹ سب سے زیادہ سات مرتبہ جیتنے کا ریکارڈ برابر کر چکے ہیں۔

یہ دونوں کھلاڑی ہی گذشتہ برس بھی ومبلڈن کے فائنل میں مدِمقابل تھے اور اس میچ میں بھی نواک جاکووچ نے فیڈرر کو شکست دی تھی۔

واضح رہے کہ اب تک فیڈرر اور جاکووچ کے 40 باہمی مقابلوں میں دونوں نے 20، 20 مقابلے جیتے ہیں لیکن اس سال جوکووچ فیڈرر کو تین مرتبہ شکست دینے میں کامیاب رہے ہیں۔

اسی بارے میں