چٹاگانگ ٹیسٹ: نازیبا زبان کے استعمال پر تماشائی گرفتار

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption بی سی بی اہلکار کے مطابق تماشائیوں کی جانب سے استعمال کی گئی زبان کرکٹ کے کھیل میں سختی سے ممنوع ہے

بنگلہ دیش کے شہر چٹاگانگ میں بنگلہ دیش اور جنوبی افریقہ کے مابین کھیلے جا رہے ٹیسٹ میچ کے دوران پولیس نے ایک تماشائی کو جنوبی افریقہ کے کھلاڑیوں پر تعصب آمیز جملے کسنے کے الزام میں گرفتار کر لیا ہے۔

مبینہ طور پر نازیبا زبان استعمال کرنے کا واقعہ ظہور احمد چوہدری سٹیڈیم میں دونوں ٹیموں کے مابین کھیلے جارہے پہلے ٹیسٹ میچ کے دوسرے روز کھانے کی وقفے سے کچھ دیر قبل پہلے پیش آیا۔

بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ کے ایک اہلکار کا کہنا ہے کہ تماشائیوں کے ایک گروہ نے فیلڈنگ کرتے ہوئے جنوبی افریقی کھلاڑیوں کے لیے نازیبا زبان استعمال کی۔ جس کی شکایت کھلاڑیوں نے میچ ریفری کرس براڈ سے کی گئی۔

بی سی بی کے سکیورٹی کنسلٹنٹ امام حسین نے خبررساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس کو بتایا کہ ’میچ ریفری نے ہمیں بتایا کہ بڑی سکرین کے نیچے کچھ تماشائیوں نے جنوبی افریقی کھلاڑیوں پر نازیبا زبان میں جملے کسے ہیں۔‘

ان کے مطابق تماشائیوں کی جانب سے استعمال کی گئی زبان کرکٹ کے کھیل میں سختی سے ممنوع ہے۔

اس صورتحال کے بعد پولیس نے ایک تماشائی کو گرفتار کر لیا جبکہ باقی گروہ فرار ہونے میں کامیاب ہوگیا۔

خیال رہے کہ بنگلہ دیش اور جنوبی افریقہ کے درمیان کھیلے جارہے پہلے ٹیسٹ میچ میں جنوبی افریقہ کی پوری ٹیم پہلے بیٹنگ کرتے ہوئے 248 رنز بنا کر آؤٹ ہوگئی تھی۔ اس کے جواب میں دوسرے دن کے کھیل کے اختتام تک بنگلہ دیش نے چار وکٹوں کے نقصان پر 176 رنز بنا لیے تھے۔

اس سے قبل تین ایک روزہ میچوں کی سیریز میں بنگلہ دیش نے جنوبی افریقہ کو ایک، دو سے شکست دی تھی۔

اسی بارے میں