انٹرنیشنل الیون آئندہ برس پاکستان آئے گی: شہریار خان

Image caption ’ زمبابوے کے دورے کے بعد پاکستان کرکٹ بورڈ کی کوشش ہے کہ 2017 میں سری لنکا اور بنگلہ دیش کو بھی پاکستان کے دورے کے لیے آمادہ کر لیا جائے‘

پاکستان میں بین الاقوامی کرکٹ کی بحالی کی کوششوں کے سلسلے میں ایک انٹرنیشنل الیون کرکٹ ٹیم آئندہ سال پاکستان کا دورہ کرے گی جس میں موجودہ کرکٹرز شامل ہوں گے۔

یہ بات پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین شہریارخان نے لندن میں بی بی سی اردو سروس کو دیے گئے انٹرویو میں بتائی۔

شہریار خان آئی سی سی کے باربیڈوس میں ہونے والے اجلاس کے بعد ان دنوں برطانیہ میں مقیم ہیں اور انہوں نے پاکستان میں بین الاقوامی کرکٹ کی بحالی کے ضمن میں انگلینڈ آئرلینڈ اور سکاٹ لینڈ کرکٹ کے حکام سے اہم ملاقاتیں کی ہیں۔

شہریار خان کا کہنا ہے کہ آئی سی سی نے پاکستان کی کرکٹ سے متعلق ایک ٹاسک فورس قائم کی تھی جس کے سربراہ انگلینڈ اینڈ ویلز کرکٹ بورڈ کے جائلز کلارک ہیں۔

’وہ پچھلے دو ہفتوں کے دوران تین بار جائلز کلارک سے ملے ہیں اور ان پر یہ بات واضح کی ہے کہ اب تک پاکستان میں انٹرنیشنل کرکٹ کی بحالی کے لیے جتنی بھی کوششیں ہوئی ہیں وہ صرف پاکستان کرکٹ بورڈ کی طرف سے ہے اور ان میں ابھی تک آئی سی سی اور اس کی ٹاسک فورس نے کوئی کردار ادا نہیں کیا ہے چنانچہ اب جائلز کلارک نے یہ بات مان لی ہے کہ آئندہ سال ایک انٹرنیشنل الیون پاکستان کا دورہ کرے گی جس میں سابق نہیں بلکہ ہر ٹیسٹ ملک کے موجودہ کرکٹرز شامل ہوں گے۔‘

Image caption ’ آئی سی سی نے پاکستان کی کرکٹ سے متعلق ایک ٹاسک فورس قائم کی تھی جس کے سربراہ انگلینڈ اینڈ ویلز کرکٹ بورڈ کے جائلز کلارک ہیں‘

شہریار خان نے کہا کہ جائلز کلارک سے ملاقاتوں میں انٹرنیشنل الیون کے دورے کی تاریخیں، اخراجات اور دیگر معاملات طے پا چکے ہیں۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین نے کہا کہ انٹرنیشنل الیون لاہور کے علاوہ کراچی میں بھی میچز کھیلے گی اور ممکن ہوا تو ایک دو میچز فیصل آباد میں بھی ہوں گے۔

شہریار خان نے کہا کہ زمبابوے کے دورے کے بعد پاکستان کرکٹ بورڈ کی کوشش ہے کہ 2017 میں سری لنکا اور بنگلہ دیش کو بھی پاکستان کے دورے کے لیے آمادہ کر لیا جائے۔

انھوں نے کہا کہ ایسوسی ایٹ ممالک آئرلینڈ سکاٹ لینڈ اور ہالینڈ کی ٹیمیں پاکستان کے دورے کے لیے تیار ہیں۔

اسی بارے میں