سلمان بٹ اور محمد آصف پر پابندی ختم

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption واضح رہے کہ سلمان بٹ محمد آصف اور محمد عامر سنہ 2010 میں انگلینڈ کے دورے میں سپاٹ فکسنگ میں ملوث پائے گئے تھے اور ان تینوں کرکٹروں پر آئی سی سی کے انسدادِ بدعنوانی ٹریبیونل نے پابندی اور معطلی کی سزائیں سنائی تھیں جبکہ لندن کی عدالت نے بھی انھیں قید کی سزا سنائی تھی

آئی سی سی نے سپاٹ فکسنگ میں سزا یافتہ پاکستانی کرکٹروں سلمان بٹ اور محمد آصف پر عائد پابندی اٹھا لی ہے اور وہ بھی فاسٹ بولر محمد عامر کے ساتھ دو ستمبر سے کسی بھی سطح کی کرکٹ کھیلنے کے اہل ہوں گے۔

آئی سی سی میڈیا کی جانب سے کیے گئے ٹوئٹ میں کہا گیا ہے کہ سلمان بٹ اور محمد آصف پر عائد پابندی یکم ستمبر کو ختم ہو رہی ہے۔

واضح رہے کہ سلمان بٹ محمد آصف اور محمد عامر سنہ 2010 میں انگلینڈ کے دورے میں سپاٹ فکسنگ میں ملوث پائے گئے تھے اور ان تینوں پر آئی سی سی کے انسدادِ بدعنوانی ٹریبیونل نے پابندی اور معطلی کی سزائیں سنائی تھیں جبکہ لندن کی عدالت نے بھی انھیں قید کی سزا سنائی تھی۔

آئی سی سی کے ٹریبونل نے سلمان بٹ کو پانچ سالہ پابندی اور پانچ سالہ معطلی کی سزا سنائی تھی۔

محمد آصف کو پانچ سالہ پابندی اور دو سالہ معطلی کا سامنا کرنا پڑا تھا جبکہ محمد عامر پر پانچ سال کی پابندی عائد کی گئی تھی۔

محمد عامر نے اپنے جرم کا پہلے ہی اعتراف کر لیا تھا اور آئی سی سی کے انسدادِ بدعنوانی قواعد میں تبدیلی کے بعد پاکستان کرکٹ بورڈ انھیں پابندی کی مدت ختم ہونے سے پہلے ہی غیر فرسٹ کلاس کرکٹ میں واپس لانے کی کوششوں میں کامیاب ہوگیا تھا۔

سلمان بٹ نے تاخیر سے اپنے جرم کا اعتراف کیا اور گذشتہ دنوں انھوں نے دبئی میں آئی سی سی کے انسدادِ بدعنوانی یونٹ کے حکام سے ملاقات کی تھی۔

اگرچہ محمد آصف اگرچہ اس تمام عرصے میں خاموش دکھائی دیے لیکن اس سال اپریل میں وہ بھی آئی سی سی کے انٹی کرپشن یونٹ کے سامنے پیش ہوئے تھے۔

اسی بارے میں