سنگاکارا کے بین الاقوامی کریئر پر ایک نظر

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption سنگاکارا ٹیسٹ کرکٹ میں سب سے زیادہ رنز بنانے والے بیٹسمینوں میں پانچویں نمبر پر ہیں

سری لنکن بیٹسمین کمار سنگاکارا کا بین الاقوامی کریئر 15 سال پر محیط رہا ہے جس میں انھوں نے تینوں فارمیٹوں میں مجموعی طور پر تقریباً 28 ہزار سکور کیے۔

کمار سنگاکارا نے اپنے بین الاقوامی کریئر کاآغاز جولائی سنہ 2000 میں پاکستان کے خلاف گال میں ایک روزہ بین الاقوامی میچ سے کیا تھا۔

اسی سال انھوں نے گال میں ہی جنوبی افریقہ کےخلاف اپنے ٹیسٹ کریئر کا آغاز کیا۔

اپنے الوداعی ٹیسٹ میچ سے قبل سنگاکارا نے 133 ٹیسٹ میچوں میں 57.71 کی اوسط سے12,350 رنز سکور کیے جن میں 38 سنچریاں اور 52 نصف سنچریاں شامل ہیں۔

سنگاکارا نے 404 ون ڈے انٹرنیشنل میچوں میں سری لنکا کی نمائندگی کی اور 25 سنچریوں اور93 نصف سنچریوں کی مدد سے14,234 رنز بنائے۔

وہ 56 ٹی 20 انٹرنیشنل میچوں میں آٹھ نصف سنچریوں کی مدد سے1,382 رنز بنانے میں کامیاب رہے جبکہ سب سے زیادہ سنچریوں کی تعداد میں ان کا نمبر چوتھا ہے۔

وہ ون ڈے انٹرنیشنل میں سچن تیندولکر کے بعد سب سے زیادہ رنز بنانے والے بیٹسمین ہیں جبکہ سب سے زیادہ سنچریوں میں وہ چوتھے نمبر پر ہیں۔

سنگاکارا انگلینڈ کے گریم گوچ کے بعد دوسرے بیٹسمین ہیں جنھوں نے ایک ہی ٹیسٹ میچ کی ایک اننگز میں ٹرپل سنچری اور دوسری میں سنچری سکور کی ہے۔

وہ سر ڈان بریڈ مین کی 12 ڈبل سنچریوں کے بعد ٹیسٹ کرکٹ میں سب سے زیادہ ڈبل سنچریاں بنانے والے بیٹسمین ہیں جن کی تعداد 11 ہے۔

سنگاکارا اپنے دیرینہ دوست مہیلا جے وردھنے کے ساتھ ٹیسٹ کرکٹ کی تاریخ کی سب سے بڑی شراکت میں بھی شریک ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption سنگاکارا سری لنکاکی اس ٹیم میں شامل تھے جس نے گذشتہ سال ڈھاکہ میں آئی سی سی ورلڈ ٹی ٹوئنٹی جیتا

ان دونوں نے سنہ 2006 میں ان دونوں نے جنوبی افریقہ کے خلاف کولمبو ٹیسٹ میں تیسری وکٹ کے لیے 624 رنز بنائے جس میں سنگاکارا نے 287 رنز سکور کیے تھے۔ یہ فرسٹ کلاس کرکٹ میں بھی کسی بھی وکٹ کی سب سے بڑی شراکت ہے۔

سنگاکارا سری لنکاکی اس ٹیم میں شامل تھے جس نے گذشتہ سال ڈھاکہ میں آئی سی سی ورلڈ ٹی 20 جیتا۔ درحقیقت یہ ان ہی کی ناقابل شکست نصف سنچری تھی جس نے سری لنکا کو چھ وکٹوں سے کامیابی دلائی۔

سنہ 2009 کے آئی سی سی ورلڈ ٹی 20 کے فائنل میں بھی سنگاکارا نے ناقابل شکست نصف سنچری بنائی تھی لیکن جواب میں شاہد آفریدی کی ناقابل شکست نصف سنچری نے سنگاکارا کی کپتان کی حیثیت سے ٹرافی جیتنے کی خواہش پوری نہیں ہونے دی۔

وہ سنہ 2012 کا آئی سی سی ورلڈ ٹی 20 کا فائنل کھیلنے والی سری لنکن ٹیم کے بھی کپتان تھے جس میں اسے ویسٹ انڈیز نےشکست دی تھی۔

سنگاکارا سنہ 2007 اور 2011 کے عالمی کپ کے فائنلز کھیلنے والی سری لنکن ٹیموں کا بھی حصہ تھے۔

سنگاکارا نے سنہ 2012 میں آئی سی سی کے کرکٹر آف دی ایئر اور بہترین ٹیسٹ کرکٹر کے ایوارڈز حاصل کیے۔

وہ سنہ 2011 اور 2013 میں آئی سی سی کے بہترین ون ڈے کرکٹر کا ایوارڈ بھی حاصل کرنے میں کامیاب رہے۔

وزڈن نے انھیں پانچ بہترین کرکٹرز میں بھی شامل کیا۔

اسی بارے میں