انڈی کار ڈرائیور جسٹن ولسن ریس حادثے میں ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption حادثے کے بعد ولسن کو ہیلی کاپٹر کے ذریعے ہسپتال لے جایا گیا تاہم پیر کی شام انڈی کار حکام نے ان کی موت کی تصدیق کردی

برطانیہ کے انڈی کار ڈرائیور جسٹن ولسن سر میں شدید چوٹ لگنے کے باعث اتوار کو انتقال کرگئے۔

امریکی ریاست پنسلوینیا کے پوکونو ریس وے میں 200 لیپس پر مشتمل ریس کے 179ویں لیپ کے دوران ولسن کی گاڑی کی ایک دوسرے ڈرائیور کی گاڑی سے ٹکر تھی۔

ریس کے دوران سیج کرم کی گاڑی تیز رفتاری کے باعث الٹ گئی اور اس کے کچھ ٹکڑے جسٹن ولسن کی گاڑی سے ٹکرائے جس کے بعد ان کی گاڑی دیوار میں جا لگی۔

حادثے کے بعد ولسن کو ہیلی کاپٹر کے ذریعے ہسپتال لے جایا گیا تاہم پیر کی شام انڈی کار حکام نے ان کی موت کی تصدیق کردی۔

37 سالہ سابق فارمولا ون ڈرائور آندریتی آٹو سپورٹ کی نمائندگی کرتے تھے۔

جسٹن ولسن نے سنہ 2003 میں امریکہ کے گراں پری مقابلوں کے فارمولا ون سیزن میں مینارڈی اور جاگوار کے لیے 16 ریسوں میں حصہ لیا، جہاں انھوں نے اپنے کیریئر کا شاندار سکور کیا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption 37 سالہ سابق فارمولا ون ڈرائور آندریتی آٹو سپورٹ کی نمائندگی کرتے تھے

وہ سنہ 2004 سے امریکہ کی بڑی اوپن وہیل ریس کے مقابلوں کا حصہ رہے۔ اتوار کو انھوں نے اپنی 174 ویں انڈی کار ریس کا آغاز کیا تھا۔

سیج کرم حادثے کے وقت ریس میں سب سے آگے تھے، ان کو ایڑھی اور کلائی میں چوٹیں آئیں تاہم ان کو علاج کے بعد ہسپتال سے فارغ کردیا گیا ہے۔

جب جسٹن ولسن کوما میں تھے تو سیج کرم نے ان کے حق میں ایک پیغام ٹویٹ کیا جس میں انھوں کہا کہ وہ جسٹن ولسن اور ان کے خاندان کے لئے دعا گو ہیں ۔

انڈی کار مقابلوں کو منعقد کرانے والی کمپنی ہلمین اینڈ کو کے سی ای او مارک مائلس نے کہا کہ 'یہ انڈی کار اور موٹر سپورٹس کے لئے ایک انتہائی سوگوار دن ہے۔

انھوں نے یہ بھی کہا کہ ’جسٹن کی کار ریس میں اعلیٰ اہلیت ان کی رحم دلانہ اور انسان طبیعت سے مشابہہ تھی جس کی وجہ سے وہ کھیل کے ایک انتہائی باعزت رکن کے طور پر جانے جاتے تھے۔‘

’جیسا کہ ہم جانتے ہیں کہ ریسنگ کی صنعت ایک بڑے گھرانے کی طرح ہے، اس لیے ہماری پوری کوشش ہوگی کہ اس مشکل گھڑی میں جسٹن کے خاندان کی بھرپور مدد اور معاونت کو تقینی بنایا جائے۔‘

ولسن جن کا تعلق برطانیہ کی کاؤنٹی شیفلڈ سے ہے نے اپنے لواحقین میں ایک بیوہ اور دو بیٹیاں چھوڑی ہیں۔

اسی بارے میں