سزا یافتہ پاکستانی کرکٹرز کی بحالی کے پروگرام کا اعلان

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption تینوں کرکٹرز کو دو ستمبر سے نیشنل کرکٹ اکیڈمی میں باقاعدگی سے پریکٹس کی اجازت ہوگی

پاکستان کرکٹ بورڈ نے سپاٹ فکسنگ میں سزا یافتہ کرکٹرز سلمان بٹ، محمد آصف اور محمد عامر کی کھیل کے میدان میں واپسی کے لیے درکار ضروری تقاضے پورے کرنے کے لیے پروگرام کا اعلان کردیا ہے۔

ان تینوں کرکٹرز پر آئی سی سی کی جانب سے عائد پابندی یکم ستمبر کو ختم ہو رہی ہے۔

محمد عامر پہلے ہی اجازت ملنے پر ڈومیسٹک کرکٹ میں گریڈ ٹو کرکٹ کھیل چکے ہیں البتہ سلمان بٹ اور محمد آصف کو پاکستان کرکٹ بورڈ نے فوری طور پر ڈومیسٹک کرکٹ کھیلنے سے روک دیا ہے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کا کہنا ہے کہ تینوں کرکٹرز کو کرکٹ میں واپسی سے قبل آئی سی سی اور پاکستان کرکٹ بورڈ کے ضابطۂ اخلاق پر عمل کرنا ہوگا۔

اس ضمن میں پاکستان کرکٹ بورڈ نے تینوں کھلاڑیوں کے لیے بحالی کا پروگرام ترتیب دے دیا ہے۔

اس پروگرام کے تحت تینوں کرکٹرز کو پاکستان کرکٹ بورڈ کے انٹی کرپشن ڈپارٹمنٹ کے ساتھ کام کرتے ہوئے کھلاڑیوں کو لیکچر دینے ہوں گے۔

یہ کھلاڑی اسی طرح کے لیکچرز سولہ ریجنز میں جا کر دیں گے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کا کہنا ہے کہ سلمان بٹ اور محمد آصف دو ستمبر کے بعد سے کلب اور ڈسٹرکٹ سطح پر کرکٹ شروع کر سکیں گے۔

تینوں کرکٹرز کو دو ستمبر سے نیشنل کرکٹ اکیڈمی میں باقاعدگی سے پریکٹس کی اجازت ہوگی لیکن جب پاکستانی کرکٹ ٹیم کے کرکٹرز وہاں پریکٹس کرینگے تو کسی بھی ناخوشگوار واقعے سے بچنے کے لیے ان تینوں کرکٹرز کو وہاں پریکٹس کی اجازت نہیں ہوگی۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کے مرتب کردہ پروگرام کے مطابق تینوں کرکٹرز کو سماجی ذمہ داری کے تحت ایدھی ہومز، یتیم خانوں اور آرمی سکول پشاور کا دورہ بھی کرنا ہوگا۔

تینوں کرکٹرز کو اس بات کو یقینی بنانے کے لیے کہ پاکستانی ٹیم انہیں کس طرح قبول کرتی ہے، ٹیم کے کھلاڑیوں اور بولنگ کوچ مشتاق احمد سے رابطہ کرنا ہوگا اور اپنے کیے پر پشیمانی کا اظہار کرنا ہوگا۔

پاکستان کرکٹ بورڈ نے سلمان بٹ اور محمد آصف کو ماہر نفسیات سے بھی رجوع کرنے کے لیے کہا ہے۔

اسی بارے میں