محمد آصف اور سلمان بٹ واپڈا کی ٹیم میں شامل

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption محمد آصف اور سلمان بٹ اس وقت پاکستان کرکٹ بورڈ کے بحالی پروگرام کا حصہ ہیں

پاکستان کے بجلی کے محکمے واپڈا نے حال ہی میں سپاٹ فکسنگ کے جرم میں سزا کاٹنے والے دو کھلاڑیوں سلمان بٹ اور محمد آصف کو اپنی ٹیم میں شامل کر لیا ہے۔

سابق چیمپین واٹر اینڈ پاور ڈیویلپمنٹ یعنی ’واپڈا‘ کے چیئرمین ظفر محمود نے سلمان بٹ اور محمد آصف کی ٹیم میں شمولیت کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ دونوں کھلاڑی 26 اکتوبر سے پاکستان کے مختلف شہروں میں شروع ہونے والے فرسٹ کلاس ٹورنامنٹ میں واپڈا کی ٹیم میں نظر آئیں گے۔

’سلمان بٹ نے محمد عامر کو مجبور کیا‘

’سـزا یافتہ کرکٹرز کی فوری واپسی نہیں ہوگی‘

خبر رساں ادارے ایف ایف پی کے مطابق ظفر محمود کا کہنا ہے کہ ’مجھے آصف اور سلمان کی دستیابی کے بارے میں بتایاگیا تو میں نے سپورٹس ڈپارٹمنٹ کو انھیں شامل کرنے کی منظوری دی اور انھیں نے ان کے ساتھ معاہدہ کر لیا۔‘

محمد آصف اور سلمان بٹ اس وقت سپاٹ فکسنگ کے جرم میں پانچ سالہ پابندی کے بعد پاکستان کرکٹ بورڈ کے بحالی پروگرام کا حصہ ہیں۔

سنہ 2010 میں دورہ انگلینڈ کے دوران محمد آصف، سلمان بٹ اور محمد عامر پر سپاٹ فکسنگ سکینڈل سامنے کے بعد تینوں کھلاڑیوں کو جیل اور پابندی کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption چئیرمین ظفر محمود نے سلمان بٹ اور محمد آصف کی ٹیم میں شامل کیے جانے کی تصدیق کر دی ہے

ان تینوں کھلاڑیوں پر اگست 2010 میں انگلینڈ کے خلاف لارڈز ٹیسٹ میں پیسوں کی خاطر جان بوجھ کر نو بال کروانے کا الزام تھا۔

جنوری میں اپنی پابندی مکمل کرنے والے فاسٹ بولر محمد عامر پہلے ہی سے ڈومیٹسک کرکٹ کھیل رہے ہیں۔

ظفرمحمود کا کہنا ہے کہ وہ ان دونوں کھلاڑیوں کو دوسرا موقع دینے کے حامی ہیں۔

’ان دونوں کھلاڑیوں کو دوسرا موقع ملنا چاہیے۔ میرے خیال میں جنھوں نے جرم کی سزا کاٹ لی ہے وہ ان سے بہتر ہیں جنھیں ان کے غلط کاموں کی سزا نہیں ملی ہے۔‘

دوسری جانب خبر رساں ادارے ایف ایف پی سے بات کرتے ہوئے سلمان بٹ کا کہنا تھا کہ ’میں کافی عرصے سے ٹریننگ کر رہا ہوں اور فرسٹ کلاس کرکٹ میں اپنی واپسی کے لیے بے چین ہوں۔‘

واضح رہے کہ پی سی بی گذشتہ ماہ کہہ چکا ہے کہ سلمان بٹ اور محمد آصف کو فرسٹ کلاس کرکٹ سے قبل کلب کرکٹ کھیلنی چاہیے۔

اسی بارے میں